Live Results Assembly Elections 2018

اٹل بہاری واجپئی کی وہ اندیکھی تصویریں جو بدلتے ہندوستان کی گواہ ہیں

Aug 16, 2018 06:56 PM IST
1 of 8
  • پچیس دسمبر 1924کو مدھیہ پردیش کے گوالیار میں پیدا ہوئے اٹل بہاری واجپئی نے1942میں ہندوستان چھوڑو تحریک کے ذریعہ ہندوستانی سیاست میں قدم رکھا ۔ سال1951 میں واجپئی نے آر ایس ایس کی مدد سے بھارتیہ جن سنگھ پارٹی بنائی جس میں شیاما پرساد جیسے رہنما شامل ہوئے۔

    پچیس دسمبر 1924کو مدھیہ پردیش کے گوالیار میں پیدا ہوئے اٹل بہاری واجپئی نے1942میں ہندوستان چھوڑو تحریک کے ذریعہ ہندوستانی سیاست میں قدم رکھا ۔ سال1951 میں واجپئی نے آر ایس ایس کی مدد سے بھارتیہ جن سنگھ پارٹی بنائی جس میں شیاما پرساد جیسے رہنما شامل ہوئے۔

  • اٹل بہاری واجپئی 9 مرتبہ لوک سبھا کے لئے منتخب کئے گئے ۔سال1962 سے1967 اور 1986 میں راجیہ سبھا کے رکن بھی رہے ۔ 16 مئی 1996 کو اٹل بہاری واجپئی پہلی بار وزیر اعظم بنے لیکن لوک سبھا میں اکثریت ثابت نہ کرپانے کی وجہ سے 31 مئی1996 کو انہیں استعفی دینا پڑا۔

    اٹل بہاری واجپئی 9 مرتبہ لوک سبھا کے لئے منتخب کئے گئے ۔سال1962 سے1967 اور 1986 میں راجیہ سبھا کے رکن بھی رہے ۔ 16 مئی 1996 کو اٹل بہاری واجپئی پہلی بار وزیر اعظم بنے لیکن لوک سبھا میں اکثریت ثابت نہ کرپانے کی وجہ سے 31 مئی1996 کو انہیں استعفی دینا پڑا۔

  • واجپئی سب سے پہلے1996 میں13 دن کے لئے وزیر اعظم بنے۔ اکثریت ثابت نہیں کرنے کی وجہ سے انہیں استعفی دینا پڑا۔ دوسری مرتبہ 1998 میں وزیر اعظم بنے ، اتحادی جماعتوں کی طرف سےحمایت واپس لینے کی وجہ سے13 ماہ تک وہ اس عہدے پر رہے۔

    واجپئی سب سے پہلے1996 میں13 دن کے لئے وزیر اعظم بنے۔ اکثریت ثابت نہیں کرنے کی وجہ سے انہیں استعفی دینا پڑا۔ دوسری مرتبہ 1998 میں وزیر اعظم بنے ، اتحادی جماعتوں کی طرف سےحمایت واپس لینے کی وجہ سے13 ماہ تک وہ اس عہدے پر رہے۔

  • انیس سو ننانوے میں واجپئی تیسری مرتبہ وزیر اعظم بنے اور5 سال کی اپنی مدت پوری کی اور وہ پانچ سال کی مدت پوری کرنے والے پہلے غیر کانگریسی وزیر اعظم بنے۔

    انیس سو ننانوے میں واجپئی تیسری مرتبہ وزیر اعظم بنے اور5 سال کی اپنی مدت پوری کی اور وہ پانچ سال کی مدت پوری کرنے والے پہلے غیر کانگریسی وزیر اعظم بنے۔

  • سال 2004 میں لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی کی کراری شکست ہوئی۔ اس کے کچھ ماہ بعد سے ہی اٹل بہاری واجپئی سیاست سے لگ بھگ غائب ہو گئے ۔ بیماری اور ضعیفی کی وجہ سے وہ ڈاکٹروں کی نگرانی میں گھر پر ہی رہنے پر مجبور ہو گئے۔

    سال 2004 میں لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی کی کراری شکست ہوئی۔ اس کے کچھ ماہ بعد سے ہی اٹل بہاری واجپئی سیاست سے لگ بھگ غائب ہو گئے ۔ بیماری اور ضعیفی کی وجہ سے وہ ڈاکٹروں کی نگرانی میں گھر پر ہی رہنے پر مجبور ہو گئے۔

  • سال 2015 میں سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کو ان کی رہائش گاہ پر ہی سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی نے بھارت رتن کے اعزاز سے نوازا تھا۔

    سال 2015 میں سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کو ان کی رہائش گاہ پر ہی سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی نے بھارت رتن کے اعزاز سے نوازا تھا۔

  • اٹل بہاری واجپئی سابق وزیر اعظم چندر شیکھر اور سابق مرکزی وزیر جگ جیون رام کے ہمراہ۔

    اٹل بہاری واجپئی سابق وزیر اعظم چندر شیکھر اور سابق مرکزی وزیر جگ جیون رام کے ہمراہ۔

  • سابق صدر جمہوریہ ڈاکٹر شنکر دیال شرما واجپئی کو حلف دلاتے ہوئے۔

    سابق صدر جمہوریہ ڈاکٹر شنکر دیال شرما واجپئی کو حلف دلاتے ہوئے۔

  • اٹل بہاری واجپئی 9 مرتبہ لوک سبھا کے لئے منتخب کئے گئے ۔سال1962 سے1967 اور 1986 میں راجیہ سبھا کے رکن بھی رہے ۔ 16 مئی 1996 کو اٹل بہاری واجپئی پہلی بار وزیر اعظم بنے لیکن لوک سبھا میں اکثریت ثابت نہ کرپانے کی وجہ سے 31 مئی1996 کو انہیں استعفی دینا پڑا۔
  • واجپئی سب سے پہلے1996 میں13 دن کے لئے وزیر اعظم بنے۔ اکثریت ثابت نہیں کرنے کی وجہ سے انہیں استعفی دینا پڑا۔ دوسری مرتبہ 1998 میں وزیر اعظم بنے ، اتحادی جماعتوں کی طرف سےحمایت واپس لینے کی وجہ سے13 ماہ تک وہ اس عہدے پر رہے۔
  • انیس سو ننانوے میں واجپئی تیسری مرتبہ وزیر اعظم بنے اور5 سال کی اپنی مدت پوری کی اور وہ پانچ سال کی مدت پوری کرنے والے پہلے غیر کانگریسی وزیر اعظم بنے۔
  • سال 2004 میں لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی کی کراری شکست ہوئی۔ اس کے کچھ ماہ بعد سے ہی اٹل بہاری واجپئی سیاست سے لگ بھگ غائب ہو گئے ۔ بیماری اور ضعیفی کی وجہ سے وہ ڈاکٹروں کی نگرانی میں گھر پر ہی رہنے پر مجبور ہو گئے۔
  • سال 2015 میں سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کو ان کی رہائش گاہ پر ہی سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی نے بھارت رتن کے اعزاز سے نوازا تھا۔
  • اٹل بہاری واجپئی سابق وزیر اعظم چندر شیکھر اور سابق مرکزی وزیر جگ جیون رام کے ہمراہ۔
  • سابق صدر جمہوریہ ڈاکٹر شنکر دیال شرما واجپئی کو حلف دلاتے ہوئے۔

تازہ ترین تصاویر