جھارکھنڈ : حکومت کی عدم دلچسپی سے سنی وقف بورڈ مفلوج ، ممبران بھی سبکدوشی اختیار کرنے پرآمادہ

Jan 05, 2018 09:09 PM IST
1 of 8
  • جھارکھنڈ حکومت کی عدم دلچسپی کی وجہ سے ریاستی سنی وقف بورڈ پوری طرح مفلوج ہوگئی ہے ۔ حکومت کی بے توجہی سے نہ صرف وقف املاک کے تحفظ میں دشواریاں آرہی ہے بلکہ بورڈ کے ممبران بھی سبکدوشی اختیار کرنے پرآمادہ ہیں۔

    جھارکھنڈ حکومت کی عدم دلچسپی کی وجہ سے ریاستی سنی وقف بورڈ پوری طرح مفلوج ہوگئی ہے ۔ حکومت کی بے توجہی سے نہ صرف وقف املاک کے تحفظ میں دشواریاں آرہی ہے بلکہ بورڈ کے ممبران بھی سبکدوشی اختیار کرنے پرآمادہ ہیں۔

  • جھارکھنڈ سنی وقف بورڈ ریاستی حکومت کی بے توجہی کا شکار ہے ۔ بورڈ کی نئی کمیٹی کی تشکیل کے لئےنوٹیفیکیشن جاری کرنےکے تین سال سے زائد کا عرصہ گزرنے کے باوجود یہ بورڈ چیئرمین سے محروم ہے ۔

    جھارکھنڈ سنی وقف بورڈ ریاستی حکومت کی بے توجہی کا شکار ہے ۔ بورڈ کی نئی کمیٹی کی تشکیل کے لئےنوٹیفیکیشن جاری کرنےکے تین سال سے زائد کا عرصہ گزرنے کے باوجود یہ بورڈ چیئرمین سے محروم ہے ۔

  •  ایسے حالات میں بورڈ کے ممبران سبکدوشی اختیار کرنے پر آمادہ ہیں ۔

    ایسے حالات میں بورڈ کے ممبران سبکدوشی اختیار کرنے پر آمادہ ہیں ۔

  • واضح رہے کہ نومبر 2014 میں سابقہ حکومت کے ذریعہ وقف بورڈ کی نئی کمیٹی کی تشکیل کے لئے نوٹیفیکیشن جاری کیا گیا تھا ۔

    واضح رہے کہ نومبر 2014 میں سابقہ حکومت کے ذریعہ وقف بورڈ کی نئی کمیٹی کی تشکیل کے لئے نوٹیفیکیشن جاری کیا گیا تھا ۔

  • تاہم اس کے چند دنوں بعد ہی ریاست میں اسمبلی انتخابات کا اعلان ہوگیا جس وجہ سے بورڈ کے چیئرمین کا انتخاب نہیں کیا جا سکا ۔

    تاہم اس کے چند دنوں بعد ہی ریاست میں اسمبلی انتخابات کا اعلان ہوگیا جس وجہ سے بورڈ کے چیئرمین کا انتخاب نہیں کیا جا سکا ۔

  •  وہیں اسمبلی انتخابات میں نوٹیفیکیشن میں شامل دو سابقہ ارکان اسمبلی کی شکست ہوجانے پر کامیاب ہونے والے دو نئے مسلم کانگریس امیدوارعالم گیرعالم اورعرفان انصاری کو وقف بورڈ کا ممبر اب تک نہیں بنایا گیا ہے۔

    وہیں اسمبلی انتخابات میں نوٹیفیکیشن میں شامل دو سابقہ ارکان اسمبلی کی شکست ہوجانے پر کامیاب ہونے والے دو نئے مسلم کانگریس امیدوارعالم گیرعالم اورعرفان انصاری کو وقف بورڈ کا ممبر اب تک نہیں بنایا گیا ہے۔

  • ستم ظریفی تو یہ ہے کہ محض دو چھوٹے کمروں میں چل رہے بورڈ کے اس دفتر میں نہ تومعقول تعداد میں ملازمین ہیں اور نہ ہی فائل رکھنے کیلئے جگہ ہے ۔

    ستم ظریفی تو یہ ہے کہ محض دو چھوٹے کمروں میں چل رہے بورڈ کے اس دفتر میں نہ تومعقول تعداد میں ملازمین ہیں اور نہ ہی فائل رکھنے کیلئے جگہ ہے ۔

  • پانچ سال قبل دفترمیں ملازمین کی بحالی کے لئےعہدہ مختص کیا گیا ، لیکن اب تک ایک بھی مستقل ملازم کی تقرری نہیں کی گئی۔

    پانچ سال قبل دفترمیں ملازمین کی بحالی کے لئےعہدہ مختص کیا گیا ، لیکن اب تک ایک بھی مستقل ملازم کی تقرری نہیں کی گئی۔

  • جھارکھنڈ سنی وقف بورڈ ریاستی حکومت کی بے توجہی کا شکار ہے ۔ بورڈ کی نئی کمیٹی کی تشکیل کے لئےنوٹیفیکیشن جاری کرنےکے تین سال سے زائد کا عرصہ گزرنے کے باوجود یہ بورڈ چیئرمین سے محروم ہے ۔
  •  ایسے حالات میں بورڈ کے ممبران سبکدوشی اختیار کرنے پر آمادہ ہیں ۔
  • واضح رہے کہ نومبر 2014 میں سابقہ حکومت کے ذریعہ وقف بورڈ کی نئی کمیٹی کی تشکیل کے لئے نوٹیفیکیشن جاری کیا گیا تھا ۔
  • تاہم اس کے چند دنوں بعد ہی ریاست میں اسمبلی انتخابات کا اعلان ہوگیا جس وجہ سے بورڈ کے چیئرمین کا انتخاب نہیں کیا جا سکا ۔
  •  وہیں اسمبلی انتخابات میں نوٹیفیکیشن میں شامل دو سابقہ ارکان اسمبلی کی شکست ہوجانے پر کامیاب ہونے والے دو نئے مسلم کانگریس امیدوارعالم گیرعالم اورعرفان انصاری کو وقف بورڈ کا ممبر اب تک نہیں بنایا گیا ہے۔
  • ستم ظریفی تو یہ ہے کہ محض دو چھوٹے کمروں میں چل رہے بورڈ کے اس دفتر میں نہ تومعقول تعداد میں ملازمین ہیں اور نہ ہی فائل رکھنے کیلئے جگہ ہے ۔
  • پانچ سال قبل دفترمیں ملازمین کی بحالی کے لئےعہدہ مختص کیا گیا ، لیکن اب تک ایک بھی مستقل ملازم کی تقرری نہیں کی گئی۔

تازہ ترین تصاویر