جے این یو طالب علم نجیب کی والدہ کی قیادت میں ہزاروں افراد نکلے سڑکوں پر ، جلد بازیابی کا کیا مطالبہ

Jan 27, 2017 07:34 PM IST
1 of 15
  • جے این یو کے طالب علم نجیب احمد کی گمشدگی کو تین ماہ سے زائد کاعرصہ گزر چکا ہے ، مگر تین ماہ بعد بھی پولیس نجیب کا کوئی پتہ نہیں لگا سکی ہے ۔ نجیب کی بازیابی کو لے حکومت اور دہلی پولیس کی جانب سے لاکھ دعوے کئےجا رہےہیں، لیکن نجیب کی بازیابی کےلیے کی جا رہی کوششوں سے نجیب کی والدہ فاطمہ نفیس قطعی مطمئن نہیں ہیں ۔

    جے این یو کے طالب علم نجیب احمد کی گمشدگی کو تین ماہ سے زائد کاعرصہ گزر چکا ہے ، مگر تین ماہ بعد بھی پولیس نجیب کا کوئی پتہ نہیں لگا سکی ہے ۔ نجیب کی بازیابی کو لے حکومت اور دہلی پولیس کی جانب سے لاکھ دعوے کئےجا رہےہیں، لیکن نجیب کی بازیابی کےلیے کی جا رہی کوششوں سے نجیب کی والدہ فاطمہ نفیس قطعی مطمئن نہیں ہیں ۔

  •  نجیب کی والدہ کا کہنا ہے کہ پولیس پہلے دن سے ہی معاملہ کو دبانے کی کوشش کررہی ہے ۔

    نجیب کی والدہ کا کہنا ہے کہ پولیس پہلے دن سے ہی معاملہ کو دبانے کی کوشش کررہی ہے ۔

  • نجیب کی والدہ کے مطابق نجیب کی تلاش صحیح رخ پر کرنے کی بجائے غلط رخ پرکی جا رہی ہے ۔

    نجیب کی والدہ کے مطابق نجیب کی تلاش صحیح رخ پر کرنے کی بجائے غلط رخ پرکی جا رہی ہے ۔

  • فاطمہ نفیس کے مطابق نجیب پرحملہ کرنے والے اے بی وی پی کے کارکنان کوسزا دلانے کی بجائے انہیں بچانےکی کوشش کی جا رہی ہے۔

    فاطمہ نفیس کے مطابق نجیب پرحملہ کرنے والے اے بی وی پی کے کارکنان کوسزا دلانے کی بجائے انہیں بچانےکی کوشش کی جا رہی ہے۔

  • ادھر نجیب کی والدہ کو انصاف دلانے کے لیے ملک بھر میں احتجاجی تحریک شروع کی گئی ہے۔

    ادھر نجیب کی والدہ کو انصاف دلانے کے لیے ملک بھر میں احتجاجی تحریک شروع کی گئی ہے۔

  • اسی کے ایک کڑی کے تحت ہنگولی ضلع کے بسمت میں نجیب کی والدہ نفیس فاطمہ نے ایک مظاہرہ کی قیادت کی ۔

    اسی کے ایک کڑی کے تحت ہنگولی ضلع کے بسمت میں نجیب کی والدہ نفیس فاطمہ نے ایک مظاہرہ کی قیادت کی ۔

  • بسمت  میں دی گریڈ ٹیپو سلطان برگیڈ کی جانب سے احتجاجی ریلی کا انعقاد کیا گیا ۔

    بسمت میں دی گریڈ ٹیپو سلطان برگیڈ کی جانب سے احتجاجی ریلی کا انعقاد کیا گیا ۔

  • اس ریلی میں ہزاروں افراد نےشریک  ہوکر نجیب کی بازیابی کا مطالبہ کیا ۔

    اس ریلی میں ہزاروں افراد نےشریک ہوکر نجیب کی بازیابی کا مطالبہ کیا ۔

  • نجیب کی والدہ کی قیادت میں نکالی گئی ریلی میں مسلم رہنماؤں کے علاوہ متعدد غیر مسلم رہنماؤں نے بھی شرکت کی ۔

    نجیب کی والدہ کی قیادت میں نکالی گئی ریلی میں مسلم رہنماؤں کے علاوہ متعدد غیر مسلم رہنماؤں نے بھی شرکت کی ۔

  • لیڈروں نے نجیب کی گمشدگی کو لے مودی حکومت کی جم کر  تنقید کی ۔

    لیڈروں نے نجیب کی گمشدگی کو لے مودی حکومت کی جم کر تنقید کی ۔

  • ریلی کے اختتام پر ایک جلسہ عام کا انعقاد کیا گیا ، جس میں نجیب کی والدہ فاطمہ نفیس نے اپنے ساتھ ہونے والے ظلم کو لوگوں کو بتایا۔

    ریلی کے اختتام پر ایک جلسہ عام کا انعقاد کیا گیا ، جس میں نجیب کی والدہ فاطمہ نفیس نے اپنے ساتھ ہونے والے ظلم کو لوگوں کو بتایا۔

  • پروگرام میں آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت کے قومی جنر ل سیکریٹری مجتبیٰ فاروق ، سابق جسٹس بی جی کولسے پاٹل ، گنگا دھر مہاراج کرند ھ کر نے بطور خاص مدعو کیا گیا تھا ۔

    پروگرام میں آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت کے قومی جنر ل سیکریٹری مجتبیٰ فاروق ، سابق جسٹس بی جی کولسے پاٹل ، گنگا دھر مہاراج کرند ھ کر نے بطور خاص مدعو کیا گیا تھا ۔

  •  تمام دانشوروں نے ملک میں بڑھتی ہوئی شدت پسندی پر  تشویش کا اظہار کیا۔

    تمام دانشوروں نے ملک میں بڑھتی ہوئی شدت پسندی پر تشویش کا اظہار کیا۔

  • جلسہ کے دوران نجیب کی گمشدگی کے علاوہ معروف دانشورنریندر دابھول کر، گویند پانسرے، ایم ایس کلمرگی ، دادری کے اخلاق احمد اور پونے کےآئی ٹی انجینئر محسن شیخ قتل کے واقعات کی بھی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی اوران وارداتوں کو ایک نظریاتی جنگ قراردیا گیا ۔

    جلسہ کے دوران نجیب کی گمشدگی کے علاوہ معروف دانشورنریندر دابھول کر، گویند پانسرے، ایم ایس کلمرگی ، دادری کے اخلاق احمد اور پونے کےآئی ٹی انجینئر محسن شیخ قتل کے واقعات کی بھی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی اوران وارداتوں کو ایک نظریاتی جنگ قراردیا گیا ۔

  •  مظاہرے میں ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شریک ہوکر نجیب کی بازیابی کے لئے حکومت سے ٹھوس عملی اقدامات کا مطالبہ کیا گیا۔

    مظاہرے میں ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شریک ہوکر نجیب کی بازیابی کے لئے حکومت سے ٹھوس عملی اقدامات کا مطالبہ کیا گیا۔

  •  نجیب کی والدہ کا کہنا ہے کہ پولیس پہلے دن سے ہی معاملہ کو دبانے کی کوشش کررہی ہے ۔
  • نجیب کی والدہ کے مطابق نجیب کی تلاش صحیح رخ پر کرنے کی بجائے غلط رخ پرکی جا رہی ہے ۔
  • فاطمہ نفیس کے مطابق نجیب پرحملہ کرنے والے اے بی وی پی کے کارکنان کوسزا دلانے کی بجائے انہیں بچانےکی کوشش کی جا رہی ہے۔
  • ادھر نجیب کی والدہ کو انصاف دلانے کے لیے ملک بھر میں احتجاجی تحریک شروع کی گئی ہے۔
  • اسی کے ایک کڑی کے تحت ہنگولی ضلع کے بسمت میں نجیب کی والدہ نفیس فاطمہ نے ایک مظاہرہ کی قیادت کی ۔
  • بسمت  میں دی گریڈ ٹیپو سلطان برگیڈ کی جانب سے احتجاجی ریلی کا انعقاد کیا گیا ۔
  • اس ریلی میں ہزاروں افراد نےشریک  ہوکر نجیب کی بازیابی کا مطالبہ کیا ۔
  • نجیب کی والدہ کی قیادت میں نکالی گئی ریلی میں مسلم رہنماؤں کے علاوہ متعدد غیر مسلم رہنماؤں نے بھی شرکت کی ۔
  • لیڈروں نے نجیب کی گمشدگی کو لے مودی حکومت کی جم کر  تنقید کی ۔
  • ریلی کے اختتام پر ایک جلسہ عام کا انعقاد کیا گیا ، جس میں نجیب کی والدہ فاطمہ نفیس نے اپنے ساتھ ہونے والے ظلم کو لوگوں کو بتایا۔
  • پروگرام میں آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت کے قومی جنر ل سیکریٹری مجتبیٰ فاروق ، سابق جسٹس بی جی کولسے پاٹل ، گنگا دھر مہاراج کرند ھ کر نے بطور خاص مدعو کیا گیا تھا ۔
  •  تمام دانشوروں نے ملک میں بڑھتی ہوئی شدت پسندی پر  تشویش کا اظہار کیا۔
  • جلسہ کے دوران نجیب کی گمشدگی کے علاوہ معروف دانشورنریندر دابھول کر، گویند پانسرے، ایم ایس کلمرگی ، دادری کے اخلاق احمد اور پونے کےآئی ٹی انجینئر محسن شیخ قتل کے واقعات کی بھی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی اوران وارداتوں کو ایک نظریاتی جنگ قراردیا گیا ۔
  •  مظاہرے میں ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شریک ہوکر نجیب کی بازیابی کے لئے حکومت سے ٹھوس عملی اقدامات کا مطالبہ کیا گیا۔

تازہ ترین تصاویر