برف باری کی پیشن گوئی کا شاخسانہ، کشمیر یونیورسٹی امتحانات ملتوی

Jan 23, 2017 07:12 PM IST
1 of 10
  •  محکمہ موسمیات کی وادی کشمیر میں اگلے تین دنوں کے دوران درمیانہ سے بھاری درجے کی برف باری کے پیش نظر کشمیر یونیورسٹی نے 26 جنوری تک لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کردیے ہیں۔

    محکمہ موسمیات کی وادی کشمیر میں اگلے تین دنوں کے دوران درمیانہ سے بھاری درجے کی برف باری کے پیش نظر کشمیر یونیورسٹی نے 26 جنوری تک لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کردیے ہیں۔

  • یونیورسٹی نے پہلے ہی 29 جنوری تک کلاسیں معطل رکھنے کا اعلان کیا ہے۔

    یونیورسٹی نے پہلے ہی 29 جنوری تک کلاسیں معطل رکھنے کا اعلان کیا ہے۔

  • کشمیر یونیورسٹی کے ایک ترجمان نے بتایا کہ یونیورسٹی کو طلباء کی جانب سے برف باری کی پیشن گوئی کے پیش نظر امتحانات ملتوی کرنے سے متعلق نمائندگیاں موصول ہوئیں۔

    کشمیر یونیورسٹی کے ایک ترجمان نے بتایا کہ یونیورسٹی کو طلباء کی جانب سے برف باری کی پیشن گوئی کے پیش نظر امتحانات ملتوی کرنے سے متعلق نمائندگیاں موصول ہوئیں۔

  • انہوں نے بتایا کہ ان نمائندگیوں کو ملحوظ نظر رکھتے ہوئے یونیورسٹی انتظامیہ نے 26 جنوری تک لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کرنے کا فیصلہ لیا ہے‘۔

    انہوں نے بتایا کہ ان نمائندگیوں کو ملحوظ نظر رکھتے ہوئے یونیورسٹی انتظامیہ نے 26 جنوری تک لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کرنے کا فیصلہ لیا ہے‘۔

  • ترجمان نے مزید بتایا کہ ملتوی شدہ پرچوں کی نئی تاریخوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔

    ترجمان نے مزید بتایا کہ ملتوی شدہ پرچوں کی نئی تاریخوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔

  •  قابل ذکر ہے کہ یونیورسٹی نے رواں ماہ کے دوران برف باری کے پیش نظر متعدد مرتبہ امتحانات ملتوی کئے۔

    قابل ذکر ہے کہ یونیورسٹی نے رواں ماہ کے دوران برف باری کے پیش نظر متعدد مرتبہ امتحانات ملتوی کئے۔

  • ادھر وادی کشمیر کو بیرون دنیا سے جوڑنے والی تین سو کلو میٹر طویل سری نگر جموں قومی شاہراہ پر گذشتہ ایک ہفتے سے گاڑیوں کی آمدورفت متاثر رہنے کے باعث وادی بھر میں گذشتہ چند دنوں کے دوران اشیائے خوردونوش خاص طور پر سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں کو آسمان پر پہنچا دیا ہے۔

    ادھر وادی کشمیر کو بیرون دنیا سے جوڑنے والی تین سو کلو میٹر طویل سری نگر جموں قومی شاہراہ پر گذشتہ ایک ہفتے سے گاڑیوں کی آمدورفت متاثر رہنے کے باعث وادی بھر میں گذشتہ چند دنوں کے دوران اشیائے خوردونوش خاص طور پر سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں کو آسمان پر پہنچا دیا ہے۔

  • وادی میں جموں ، نزدیکی ریاست پنجاب اور شمالی ہند کی دوسری ریاستوں سے درآمد کی جانے والی سبزیوں کے علاوہ مقامی سبزیوں کی قیمتوں بھی آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں جبکہ گوشت بیشتر دکانوں سے غائب ہوگیا ہے۔

    وادی میں جموں ، نزدیکی ریاست پنجاب اور شمالی ہند کی دوسری ریاستوں سے درآمد کی جانے والی سبزیوں کے علاوہ مقامی سبزیوں کی قیمتوں بھی آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں جبکہ گوشت بیشتر دکانوں سے غائب ہوگیا ہے۔

  • سبزی منڈیوں سے وابستہ تاجروں اور دیگر کاروباری اشخاص کا کہنا ہے کہ سری نگر جموں قومی شاہراہ پر مال بردار گاڑیوں کی روانی متاثر رہنے کی وجہ سے وادی کشمیر کے بازاروں میں اشیائے خورد ونوش خاص طور پر تازہ سبزیوں اور پھلوں کی قلت پیدا ہوگئی ہے۔

    سبزی منڈیوں سے وابستہ تاجروں اور دیگر کاروباری اشخاص کا کہنا ہے کہ سری نگر جموں قومی شاہراہ پر مال بردار گاڑیوں کی روانی متاثر رہنے کی وجہ سے وادی کشمیر کے بازاروں میں اشیائے خورد ونوش خاص طور پر تازہ سبزیوں اور پھلوں کی قلت پیدا ہوگئی ہے۔

  •  تاہم جن سبزی فروشوں کے پاس سبزی کا اسٹاک موجود ہے، وہ انتظامیہ کی طرف سے مقرر کردہ قیمتوں کے برخلاف صارفین سے زیادہ سے زیادہ قیمت وصولنے کی تگ و دو میں لگا ہوئے ہیں۔

    تاہم جن سبزی فروشوں کے پاس سبزی کا اسٹاک موجود ہے، وہ انتظامیہ کی طرف سے مقرر کردہ قیمتوں کے برخلاف صارفین سے زیادہ سے زیادہ قیمت وصولنے کی تگ و دو میں لگا ہوئے ہیں۔

  • یونیورسٹی نے پہلے ہی 29 جنوری تک کلاسیں معطل رکھنے کا اعلان کیا ہے۔
  • کشمیر یونیورسٹی کے ایک ترجمان نے بتایا کہ یونیورسٹی کو طلباء کی جانب سے برف باری کی پیشن گوئی کے پیش نظر امتحانات ملتوی کرنے سے متعلق نمائندگیاں موصول ہوئیں۔
  • انہوں نے بتایا کہ ان نمائندگیوں کو ملحوظ نظر رکھتے ہوئے یونیورسٹی انتظامیہ نے 26 جنوری تک لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کرنے کا فیصلہ لیا ہے‘۔
  • ترجمان نے مزید بتایا کہ ملتوی شدہ پرچوں کی نئی تاریخوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔
  •  قابل ذکر ہے کہ یونیورسٹی نے رواں ماہ کے دوران برف باری کے پیش نظر متعدد مرتبہ امتحانات ملتوی کئے۔
  • ادھر وادی کشمیر کو بیرون دنیا سے جوڑنے والی تین سو کلو میٹر طویل سری نگر جموں قومی شاہراہ پر گذشتہ ایک ہفتے سے گاڑیوں کی آمدورفت متاثر رہنے کے باعث وادی بھر میں گذشتہ چند دنوں کے دوران اشیائے خوردونوش خاص طور پر سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں کو آسمان پر پہنچا دیا ہے۔
  • وادی میں جموں ، نزدیکی ریاست پنجاب اور شمالی ہند کی دوسری ریاستوں سے درآمد کی جانے والی سبزیوں کے علاوہ مقامی سبزیوں کی قیمتوں بھی آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں جبکہ گوشت بیشتر دکانوں سے غائب ہوگیا ہے۔
  • سبزی منڈیوں سے وابستہ تاجروں اور دیگر کاروباری اشخاص کا کہنا ہے کہ سری نگر جموں قومی شاہراہ پر مال بردار گاڑیوں کی روانی متاثر رہنے کی وجہ سے وادی کشمیر کے بازاروں میں اشیائے خورد ونوش خاص طور پر تازہ سبزیوں اور پھلوں کی قلت پیدا ہوگئی ہے۔
  •  تاہم جن سبزی فروشوں کے پاس سبزی کا اسٹاک موجود ہے، وہ انتظامیہ کی طرف سے مقرر کردہ قیمتوں کے برخلاف صارفین سے زیادہ سے زیادہ قیمت وصولنے کی تگ و دو میں لگا ہوئے ہیں۔

تازہ ترین تصاویر