یہ ہے ملک کی طویل ترین سرنگ ، ہر روز بچائے گی 27 لاکھ روپے کا ڈیزل اور پیٹرول ، افتتاح آج

Apr 02, 2017 11:49 AM IST
1 of 8
  • جموں و کشمیر میں اتوار کو وزیر اعظم مودی ملک کی سب سے طریل سرنگ قوم کے نام وقف کرنے والے ہیں ۔ اس کا نام 'چیناني-ناشري سرنگ ہے۔ یہ قومی شاہراہ نمبر 44 پر واقع ہے۔ جموں اور کشمیر ہائی وے پر بنی یہ سرنگ ایشیا کی سب سے لمبی سرنگ ہے، جس کی لمبائی 9.28 کلومیٹر ہے۔ (تصویر : نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

    جموں و کشمیر میں اتوار کو وزیر اعظم مودی ملک کی سب سے طریل سرنگ قوم کے نام وقف کرنے والے ہیں ۔ اس کا نام 'چیناني-ناشري سرنگ ہے۔ یہ قومی شاہراہ نمبر 44 پر واقع ہے۔ جموں اور کشمیر ہائی وے پر بنی یہ سرنگ ایشیا کی سب سے لمبی سرنگ ہے، جس کی لمبائی 9.28 کلومیٹر ہے۔ (تصویر : نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

  • یہ سرنگ ہندوستان کی سب سے طویل سڑک سرنگ اور ہندوستانی انجینئرز کے ہنر کا نایاب نمونہ ہے۔ اس سے جموں اور سرینگر کے درمیان کا فاصلہ 30.11 کلومیٹر کم ہو جائے گا۔ (تصویر : نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

    یہ سرنگ ہندوستان کی سب سے طویل سڑک سرنگ اور ہندوستانی انجینئرز کے ہنر کا نایاب نمونہ ہے۔ اس سے جموں اور سرینگر کے درمیان کا فاصلہ 30.11 کلومیٹر کم ہو جائے گا۔ (تصویر : نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

  • 'گوگل میپ پر یہ سرنگ کچھ اس طرح نظر آئے گی ۔ چیناني اور ناشري کے درمیان فاصلہ 41 کلومیٹر کی بجائے اب 10.9 کلو میٹر رہ جائے گا۔ اس سرنگ کو بنانے کے لئے 19 کلومیٹر کی کھدائی کی گئی ۔ یہ سرنگ ریکارڈ 4 سال میں تیار ہو گئی ہے۔ (تصویر :نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

    'گوگل میپ پر یہ سرنگ کچھ اس طرح نظر آئے گی ۔ چیناني اور ناشري کے درمیان فاصلہ 41 کلومیٹر کی بجائے اب 10.9 کلو میٹر رہ جائے گا۔ اس سرنگ کو بنانے کے لئے 19 کلومیٹر کی کھدائی کی گئی ۔ یہ سرنگ ریکارڈ 4 سال میں تیار ہو گئی ہے۔ (تصویر :نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

  • دعوی کیا جا رہا ہے کہ اس سرنگ کی وجہ سے ہر روز 27 لاکھ روپے کے پٹرول ڈیزل کی بچت ہوگی۔ 3720 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار یہ سرنگ دنیا کی کسی بھی بہترین سرنگ کی برابری کر سکتی ہے ، کیونکہ خصوصیات کے ساتھ ساتھ اس میں سیکورٹی کے لحاظ سے بھی ایڈوانس ٹیکنالوجی کا استعمال کیا گیا ہے۔ (تصویر : نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

    دعوی کیا جا رہا ہے کہ اس سرنگ کی وجہ سے ہر روز 27 لاکھ روپے کے پٹرول ڈیزل کی بچت ہوگی۔ 3720 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار یہ سرنگ دنیا کی کسی بھی بہترین سرنگ کی برابری کر سکتی ہے ، کیونکہ خصوصیات کے ساتھ ساتھ اس میں سیکورٹی کے لحاظ سے بھی ایڈوانس ٹیکنالوجی کا استعمال کیا گیا ہے۔ (تصویر : نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

  • یہ ہندوستان کی پہلی سرنگ ہے ، جس میں 'انٹیگریٹڈ سرنگ کنٹرول سسٹم لگایا گیا ہے۔ جگہ جگہ وینٹیلیشن کے نظام لگائے گئے ہیں، تاکہ باہر کی تازہ ہوا اندر آتی رہے۔ ایڈوانس اسکینر لگے ہیں، تاکہ یہ کسی بھی خطرے کو بھانپ سکے اور سب سے خاص بات یہ ہے کہ یہ سرنگ مکمل طور مکینیکل ہے۔ یعنی اس کو چلانے کے لئے کسی انسان کا موجود ہونا ضروری نہیں ہے۔ ٹریفک سگنل، بجلی، ٹیلی مواصلات سب کچھ خود کار طریقے سے کام کرے گا۔ (تصویر: نیوز 18 انڈیا)۔

    یہ ہندوستان کی پہلی سرنگ ہے ، جس میں 'انٹیگریٹڈ سرنگ کنٹرول سسٹم لگایا گیا ہے۔ جگہ جگہ وینٹیلیشن کے نظام لگائے گئے ہیں، تاکہ باہر کی تازہ ہوا اندر آتی رہے۔ ایڈوانس اسکینر لگے ہیں، تاکہ یہ کسی بھی خطرے کو بھانپ سکے اور سب سے خاص بات یہ ہے کہ یہ سرنگ مکمل طور مکینیکل ہے۔ یعنی اس کو چلانے کے لئے کسی انسان کا موجود ہونا ضروری نہیں ہے۔ ٹریفک سگنل، بجلی، ٹیلی مواصلات سب کچھ خود کار طریقے سے کام کرے گا۔ (تصویر: نیوز 18 انڈیا)۔

  • اس سرنگ کی سب سے بڑی خاص بات یہ ہے کہ اس میں 120 سے زیادہ سی سی ٹی وی کیمرے لگائے گئے ہیں، جن میں ہر کیمرے کا فاصلہ 75 میٹر ہے۔ ساتھ ہی کوئی حادثہ یا گاڑی خراب ہونے کی صورت میں اس سرنگ سے باہر نکالنے کے لئے اس کے متوازی 9 کلومیٹر لمبی سرنگ بھی بنی ہے۔ (تصویر :  نیوز 18 انڈیا)۔

    اس سرنگ کی سب سے بڑی خاص بات یہ ہے کہ اس میں 120 سے زیادہ سی سی ٹی وی کیمرے لگائے گئے ہیں، جن میں ہر کیمرے کا فاصلہ 75 میٹر ہے۔ ساتھ ہی کوئی حادثہ یا گاڑی خراب ہونے کی صورت میں اس سرنگ سے باہر نکالنے کے لئے اس کے متوازی 9 کلومیٹر لمبی سرنگ بھی بنی ہے۔ (تصویر : نیوز 18 انڈیا)۔

  • برف باری اور دیگر موسم میں بھی یہ سرنگ سفر کو آسان بنائے گی۔ ابھی گاڑی ڈرائیوروں کو ٹریفک جام سے نجات کے ساتھ بھاری برف باری اور پیچ و خم سے بھرے ہوئے پہاڑی راستوں سے بھی چھٹکارا مل جائے گا۔(تصویر :  نیوز 18 انڈیا)۔

    برف باری اور دیگر موسم میں بھی یہ سرنگ سفر کو آسان بنائے گی۔ ابھی گاڑی ڈرائیوروں کو ٹریفک جام سے نجات کے ساتھ بھاری برف باری اور پیچ و خم سے بھرے ہوئے پہاڑی راستوں سے بھی چھٹکارا مل جائے گا۔(تصویر : نیوز 18 انڈیا)۔

  • بارہ سو میٹر کی اونچائی پر ہمالیہ کی نچلی پہاڑی سلسلوں میں جب اس سرنگ کی بنیاد پڑی ، تو انجینئرز کے سامنے پہاڑ جیسا چیلنج تھا۔ پہاڑ کو نقصان پہنچائے بغیر انہیں ایک ایسا راستہ نکالنا تھا، جو نہ صرف فاصلہ کم کرے ، بلکہ اس سے گزرنے والے مسافروں کے سفر کو بھی یادگار بنا دے۔ (تصویر :نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

    بارہ سو میٹر کی اونچائی پر ہمالیہ کی نچلی پہاڑی سلسلوں میں جب اس سرنگ کی بنیاد پڑی ، تو انجینئرز کے سامنے پہاڑ جیسا چیلنج تھا۔ پہاڑ کو نقصان پہنچائے بغیر انہیں ایک ایسا راستہ نکالنا تھا، جو نہ صرف فاصلہ کم کرے ، بلکہ اس سے گزرنے والے مسافروں کے سفر کو بھی یادگار بنا دے۔ (تصویر :نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

  • یہ سرنگ ہندوستان کی سب سے طویل سڑک سرنگ اور ہندوستانی انجینئرز کے ہنر کا نایاب نمونہ ہے۔ اس سے جموں اور سرینگر کے درمیان کا فاصلہ 30.11 کلومیٹر کم ہو جائے گا۔ (تصویر : نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔
  • 'گوگل میپ پر یہ سرنگ کچھ اس طرح نظر آئے گی ۔ چیناني اور ناشري کے درمیان فاصلہ 41 کلومیٹر کی بجائے اب 10.9 کلو میٹر رہ جائے گا۔ اس سرنگ کو بنانے کے لئے 19 کلومیٹر کی کھدائی کی گئی ۔ یہ سرنگ ریکارڈ 4 سال میں تیار ہو گئی ہے۔ (تصویر :نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔
  • دعوی کیا جا رہا ہے کہ اس سرنگ کی وجہ سے ہر روز 27 لاکھ روپے کے پٹرول ڈیزل کی بچت ہوگی۔ 3720 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار یہ سرنگ دنیا کی کسی بھی بہترین سرنگ کی برابری کر سکتی ہے ، کیونکہ خصوصیات کے ساتھ ساتھ اس میں سیکورٹی کے لحاظ سے بھی ایڈوانس ٹیکنالوجی کا استعمال کیا گیا ہے۔ (تصویر : نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔
  • یہ ہندوستان کی پہلی سرنگ ہے ، جس میں 'انٹیگریٹڈ سرنگ کنٹرول سسٹم لگایا گیا ہے۔ جگہ جگہ وینٹیلیشن کے نظام لگائے گئے ہیں، تاکہ باہر کی تازہ ہوا اندر آتی رہے۔ ایڈوانس اسکینر لگے ہیں، تاکہ یہ کسی بھی خطرے کو بھانپ سکے اور سب سے خاص بات یہ ہے کہ یہ سرنگ مکمل طور مکینیکل ہے۔ یعنی اس کو چلانے کے لئے کسی انسان کا موجود ہونا ضروری نہیں ہے۔ ٹریفک سگنل، بجلی، ٹیلی مواصلات سب کچھ خود کار طریقے سے کام کرے گا۔ (تصویر: نیوز 18 انڈیا)۔
  • اس سرنگ کی سب سے بڑی خاص بات یہ ہے کہ اس میں 120 سے زیادہ سی سی ٹی وی کیمرے لگائے گئے ہیں، جن میں ہر کیمرے کا فاصلہ 75 میٹر ہے۔ ساتھ ہی کوئی حادثہ یا گاڑی خراب ہونے کی صورت میں اس سرنگ سے باہر نکالنے کے لئے اس کے متوازی 9 کلومیٹر لمبی سرنگ بھی بنی ہے۔ (تصویر :  نیوز 18 انڈیا)۔
  • برف باری اور دیگر موسم میں بھی یہ سرنگ سفر کو آسان بنائے گی۔ ابھی گاڑی ڈرائیوروں کو ٹریفک جام سے نجات کے ساتھ بھاری برف باری اور پیچ و خم سے بھرے ہوئے پہاڑی راستوں سے بھی چھٹکارا مل جائے گا۔(تصویر :  نیوز 18 انڈیا)۔
  • بارہ سو میٹر کی اونچائی پر ہمالیہ کی نچلی پہاڑی سلسلوں میں جب اس سرنگ کی بنیاد پڑی ، تو انجینئرز کے سامنے پہاڑ جیسا چیلنج تھا۔ پہاڑ کو نقصان پہنچائے بغیر انہیں ایک ایسا راستہ نکالنا تھا، جو نہ صرف فاصلہ کم کرے ، بلکہ اس سے گزرنے والے مسافروں کے سفر کو بھی یادگار بنا دے۔ (تصویر :نتن گڈکری ٹوئٹر ہینڈل)۔

تازہ ترین تصاویر