قدرت کا کرشمہ : بچپن سے نابینا ماجد خان الیکٹرانکس کے سامان کی درستگی میں ہے ماہر

Feb 23, 2018 11:17 PM IST
1 of 9
  • مدھیہ پردیش کے ضلع کھرگون کا چھوٹا سا گاؤں گوگاوا میں ماجد خان قدرت کا ایک کرشمہ ہی ہیں ، جن کی دونوں آنکھیں نہیں ہیں ، مگر کمال یہ ہے کی آنکھوں کے نہ ہونے بعد بھی وہ کام کر لیتے ہیں جو آنکھ والے نہیں کر سکتے ہے۔ ماجد خان اپنے اس کام سے سماج کو ہی نہیں بلکہ آج کے نوجوانوں کو بھی ایک پیغام دے رہے ہیں جو کامیابی حاصل کرنے کے لیے شارٹ کٹ کا استعمال کرتے ہیں ۔

    مدھیہ پردیش کے ضلع کھرگون کا چھوٹا سا گاؤں گوگاوا میں ماجد خان قدرت کا ایک کرشمہ ہی ہیں ، جن کی دونوں آنکھیں نہیں ہیں ، مگر کمال یہ ہے کی آنکھوں کے نہ ہونے بعد بھی وہ کام کر لیتے ہیں جو آنکھ والے نہیں کر سکتے ہے۔ ماجد خان اپنے اس کام سے سماج کو ہی نہیں بلکہ آج کے نوجوانوں کو بھی ایک پیغام دے رہے ہیں جو کامیابی حاصل کرنے کے لیے شارٹ کٹ کا استعمال کرتے ہیں ۔

  • کھرگون کے چھو ٹے سے گاؤں گوگاوا کے ماجد خان الیکٹرانکس کے سامان کو درست کرنے کام کر تے ہیں۔ یوں تو  اس کام کو کرنے والےبہت سےلوگ ہیں ، لیکن ماجد کی خاص بات یہ ہے کہ وہ دونوں آنکھوں سےبچپن سے ہی نا بینا ہیں۔

    کھرگون کے چھو ٹے سے گاؤں گوگاوا کے ماجد خان الیکٹرانکس کے سامان کو درست کرنے کام کر تے ہیں۔ یوں تو اس کام کو کرنے والےبہت سےلوگ ہیں ، لیکن ماجد کی خاص بات یہ ہے کہ وہ دونوں آنکھوں سےبچپن سے ہی نا بینا ہیں۔

  • مگر ماجد کا کمال ہے کہ الیکٹرانکس کے خراب سامان کی نبص وہ چٹکی میں پکڑ لیتے ہیں اوراسے درست کر دیتے ہیں ۔

    مگر ماجد کا کمال ہے کہ الیکٹرانکس کے خراب سامان کی نبص وہ چٹکی میں پکڑ لیتے ہیں اوراسے درست کر دیتے ہیں ۔

  • ماجد یہ کام 20 سالوں سے کرتےآ رہے ہیں۔ ماجد نے یہ کام اپنے دوست کی دوکان پر بیٹھ کر پوچھ پوچھ کر سیکھا ہےاوراس کام سےچھ افراد کا پیٹ پال رہے ہیں ۔

    ماجد یہ کام 20 سالوں سے کرتےآ رہے ہیں۔ ماجد نے یہ کام اپنے دوست کی دوکان پر بیٹھ کر پوچھ پوچھ کر سیکھا ہےاوراس کام سےچھ افراد کا پیٹ پال رہے ہیں ۔

  • ساتھ ہی ساتھ مدھیہ پردیش حکومت سے اپنے روزگار کو بہتر طریقہ سے چلانے کے لیے بازار میں دکان دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں ۔

    ساتھ ہی ساتھ مدھیہ پردیش حکومت سے اپنے روزگار کو بہتر طریقہ سے چلانے کے لیے بازار میں دکان دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں ۔

  •  گوگاوا گاؤں ہو یا آس پاس کے دیگر گاؤں، سبھی اپنا سامان درست کروانے کیلئے ماجد کے پاس آتے ہیں اور ان کے کام سے خوش ہوکر جاتے ہیں ۔

    گوگاوا گاؤں ہو یا آس پاس کے دیگر گاؤں، سبھی اپنا سامان درست کروانے کیلئے ماجد کے پاس آتے ہیں اور ان کے کام سے خوش ہوکر جاتے ہیں ۔

  • ساتھ ہی ساتھ ان کو کام کر تا دیکھ کر حیرت کا بھی اظہار کرتے ہیں۔

    ساتھ ہی ساتھ ان کو کام کر تا دیکھ کر حیرت کا بھی اظہار کرتے ہیں۔

  • ماجد اپنا کام گھر پر کرتے ہیں، کیوں کہ ان کی دوکان تین سال پہلے اتیکرمن ابھیان میں توڑ دی گئی تھی جوکہ کافی کوششوں کے بعد بھی ابھی تک نہیں مل پائی ہے۔

    ماجد اپنا کام گھر پر کرتے ہیں، کیوں کہ ان کی دوکان تین سال پہلے اتیکرمن ابھیان میں توڑ دی گئی تھی جوکہ کافی کوششوں کے بعد بھی ابھی تک نہیں مل پائی ہے۔

  • ماجد کی اہلیہ شمیم خان بھی کہتی ہیں کہ اگردکان بازارمیں مل جائے ، تو ان کی کمائی میں اضافہ ہوسکتا ہے ۔

    ماجد کی اہلیہ شمیم خان بھی کہتی ہیں کہ اگردکان بازارمیں مل جائے ، تو ان کی کمائی میں اضافہ ہوسکتا ہے ۔

  • کھرگون کے چھو ٹے سے گاؤں گوگاوا کے ماجد خان الیکٹرانکس کے سامان کو درست کرنے کام کر تے ہیں۔ یوں تو  اس کام کو کرنے والےبہت سےلوگ ہیں ، لیکن ماجد کی خاص بات یہ ہے کہ وہ دونوں آنکھوں سےبچپن سے ہی نا بینا ہیں۔
  • مگر ماجد کا کمال ہے کہ الیکٹرانکس کے خراب سامان کی نبص وہ چٹکی میں پکڑ لیتے ہیں اوراسے درست کر دیتے ہیں ۔
  • ماجد یہ کام 20 سالوں سے کرتےآ رہے ہیں۔ ماجد نے یہ کام اپنے دوست کی دوکان پر بیٹھ کر پوچھ پوچھ کر سیکھا ہےاوراس کام سےچھ افراد کا پیٹ پال رہے ہیں ۔
  • ساتھ ہی ساتھ مدھیہ پردیش حکومت سے اپنے روزگار کو بہتر طریقہ سے چلانے کے لیے بازار میں دکان دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں ۔
  •  گوگاوا گاؤں ہو یا آس پاس کے دیگر گاؤں، سبھی اپنا سامان درست کروانے کیلئے ماجد کے پاس آتے ہیں اور ان کے کام سے خوش ہوکر جاتے ہیں ۔
  • ساتھ ہی ساتھ ان کو کام کر تا دیکھ کر حیرت کا بھی اظہار کرتے ہیں۔
  • ماجد اپنا کام گھر پر کرتے ہیں، کیوں کہ ان کی دوکان تین سال پہلے اتیکرمن ابھیان میں توڑ دی گئی تھی جوکہ کافی کوششوں کے بعد بھی ابھی تک نہیں مل پائی ہے۔
  • ماجد کی اہلیہ شمیم خان بھی کہتی ہیں کہ اگردکان بازارمیں مل جائے ، تو ان کی کمائی میں اضافہ ہوسکتا ہے ۔

تازہ ترین تصاویر