مدارس کی تجدید کاری کی تیاری کے لئے وزارت اقلیتی امور کی ٹیم ملک بھر کے دورے پر

Feb 07, 2017 12:23 PM IST
1 of 8
  • مرکزی حکومت کی مدرسہ ماڈرنائزیشن اسکیم کے خطوط  کو مزید بہتربنانے کے لئے ایک ٹیم ان دنوں ملک بھر کے دورے پر ہے۔ مرکزی وزارت اقلیتی امورکی جانب سے تشکیل شدہ اس ٹیم کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ مدرسوں اورقوم  کے ذمہ داران  کے اطمینان کے بعد موصول ہونے والی تجاویزکو وہ مرکز کو پیش کریں گے جس کے بعد حکومت، مدرسہ ماڈرنائزیشن کے مزید بہترخطوط تیار کر سکے گی ۔

    مرکزی حکومت کی مدرسہ ماڈرنائزیشن اسکیم کے خطوط کو مزید بہتربنانے کے لئے ایک ٹیم ان دنوں ملک بھر کے دورے پر ہے۔ مرکزی وزارت اقلیتی امورکی جانب سے تشکیل شدہ اس ٹیم کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ مدرسوں اورقوم کے ذمہ داران کے اطمینان کے بعد موصول ہونے والی تجاویزکو وہ مرکز کو پیش کریں گے جس کے بعد حکومت، مدرسہ ماڈرنائزیشن کے مزید بہترخطوط تیار کر سکے گی ۔

  •  کمیٹی کے ذمہ داران کے مطابق فروری کے آخر تک وزارت اقلیتی امور کو یہ رپورٹ جمع کرانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے تاہم اس میں توسیع کی  بھی گنجائش ہے۔

    کمیٹی کے ذمہ داران کے مطابق فروری کے آخر تک وزارت اقلیتی امور کو یہ رپورٹ جمع کرانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے تاہم اس میں توسیع کی بھی گنجائش ہے۔

  • مرکزی وزارت اقلیتی امورکےتحت کام کر رہے مولانا آزاد ایجوکیشن فاونڈیشن کی گورننگ باڈی نےمدرسوں کو ماڈرنائزیشن سے جوڑنے کے لیے سات رکنی ٹیم تشکیل دی ہے۔ یہ سات رکنی ٹیم ان دنوں ملک بھر کے دورے پر ہے۔

    مرکزی وزارت اقلیتی امورکےتحت کام کر رہے مولانا آزاد ایجوکیشن فاونڈیشن کی گورننگ باڈی نےمدرسوں کو ماڈرنائزیشن سے جوڑنے کے لیے سات رکنی ٹیم تشکیل دی ہے۔ یہ سات رکنی ٹیم ان دنوں ملک بھر کے دورے پر ہے۔

  •  ذمہ داران کا کہنا ہے کہ مدرسہ جیسے حساس معاملے پر اگر حکومت اپنی جانب سے کوئی تجویز پیش کرتی ہے تو اس پر کچھ حلقے اعتراض کر سکتے ہیں ۔ اس لیے مدارس اور قوم کے ذمہ داران کے مشورہ سے تجاویز لی جا رہی ہیں ۔

    ذمہ داران کا کہنا ہے کہ مدرسہ جیسے حساس معاملے پر اگر حکومت اپنی جانب سے کوئی تجویز پیش کرتی ہے تو اس پر کچھ حلقے اعتراض کر سکتے ہیں ۔ اس لیے مدارس اور قوم کے ذمہ داران کے مشورہ سے تجاویز لی جا رہی ہیں ۔

  •  یہ ٹیم معلوم کر رہی ہے کہ  کس شکل میں مدرسوں کو امداد دی جائے ۔  کس سمت میں مدرسوں پر سرکاری فنڈس خرچ کیا جائے۔ کس طرح سے مدارس کے طلبا کے معیار کو بڑھایا جائے۔

    یہ ٹیم معلوم کر رہی ہے کہ کس شکل میں مدرسوں کو امداد دی جائے ۔ کس سمت میں مدرسوں پر سرکاری فنڈس خرچ کیا جائے۔ کس طرح سے مدارس کے طلبا کے معیار کو بڑھایا جائے۔

  • ذمہ داران کے مطابق سات رکنی ٹیم نے اپنی جانب سے بھی کچھ تجاویزحکومت کو دی ہیں جس پرحکومت نےعمل آوری کی یقین دہانی کرائی ہے۔

    ذمہ داران کے مطابق سات رکنی ٹیم نے اپنی جانب سے بھی کچھ تجاویزحکومت کو دی ہیں جس پرحکومت نےعمل آوری کی یقین دہانی کرائی ہے۔

  • کرناٹک  حکومت بھی مدرسہ ماڈرنائزیشن اسکیم چلا رہی ہے۔ اس ضمن میں کمیٹی  کے ارکان نے گلبرگہ میں کرناٹک کے سابق وزیر اقلیتی امور قمر الاسلام سے ملاقات  کی اور اقلیتی طبقات کے لیےسرکاری اسکیموں پر تبادلہ خیال کیا۔

    کرناٹک حکومت بھی مدرسہ ماڈرنائزیشن اسکیم چلا رہی ہے۔ اس ضمن میں کمیٹی کے ارکان نے گلبرگہ میں کرناٹک کے سابق وزیر اقلیتی امور قمر الاسلام سے ملاقات کی اور اقلیتی طبقات کے لیےسرکاری اسکیموں پر تبادلہ خیال کیا۔

  • 8

    8

  •  کمیٹی کے ذمہ داران کے مطابق فروری کے آخر تک وزارت اقلیتی امور کو یہ رپورٹ جمع کرانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے تاہم اس میں توسیع کی  بھی گنجائش ہے۔
  • مرکزی وزارت اقلیتی امورکےتحت کام کر رہے مولانا آزاد ایجوکیشن فاونڈیشن کی گورننگ باڈی نےمدرسوں کو ماڈرنائزیشن سے جوڑنے کے لیے سات رکنی ٹیم تشکیل دی ہے۔ یہ سات رکنی ٹیم ان دنوں ملک بھر کے دورے پر ہے۔
  •  ذمہ داران کا کہنا ہے کہ مدرسہ جیسے حساس معاملے پر اگر حکومت اپنی جانب سے کوئی تجویز پیش کرتی ہے تو اس پر کچھ حلقے اعتراض کر سکتے ہیں ۔ اس لیے مدارس اور قوم کے ذمہ داران کے مشورہ سے تجاویز لی جا رہی ہیں ۔
  •  یہ ٹیم معلوم کر رہی ہے کہ  کس شکل میں مدرسوں کو امداد دی جائے ۔  کس سمت میں مدرسوں پر سرکاری فنڈس خرچ کیا جائے۔ کس طرح سے مدارس کے طلبا کے معیار کو بڑھایا جائے۔
  • ذمہ داران کے مطابق سات رکنی ٹیم نے اپنی جانب سے بھی کچھ تجاویزحکومت کو دی ہیں جس پرحکومت نےعمل آوری کی یقین دہانی کرائی ہے۔
  • کرناٹک  حکومت بھی مدرسہ ماڈرنائزیشن اسکیم چلا رہی ہے۔ اس ضمن میں کمیٹی  کے ارکان نے گلبرگہ میں کرناٹک کے سابق وزیر اقلیتی امور قمر الاسلام سے ملاقات  کی اور اقلیتی طبقات کے لیےسرکاری اسکیموں پر تبادلہ خیال کیا۔
  • 8

تازہ ترین تصاویر