ایم سی ڈی انتخابات : ووٹنگ کل ، مسلم علاقوں میں انتخابی درجہ حرارت ساتویں آسمان پر ، ووٹوں کی تقسیم تقریبا طے

Apr 22, 2017 08:30 PM IST
1 of 8
  • دہلی میں انتخابی مہم کل شام پانچ بجے تھم گئی اور اب فیصلہ ووٹروں کے ہاتھ میں ہے ۔ کل رائے دہندگان اپنے نمائندہ کے انتخاب کے لئے صبح پانچ بجے سے ووٹ ڈالیں گے۔ دہلی کے مسلم علاقوں میں عام آدمی پارٹی ، کانگریس، سماجوادی پارٹی اور مجلس اتحاد المسلمین کے درمیان زبردست مقابلہ آرائی دیکھنے کو مل سکتی ہے جبکہ بہار سے تعلق رکھنے والی پارٹیاں آر جے ڈی اور جے ڈی یو بھی بڑی پارٹیوں کا کھیل بگاڑ سکتی ہیں ۔

    دہلی میں انتخابی مہم کل شام پانچ بجے تھم گئی اور اب فیصلہ ووٹروں کے ہاتھ میں ہے ۔ کل رائے دہندگان اپنے نمائندہ کے انتخاب کے لئے صبح پانچ بجے سے ووٹ ڈالیں گے۔ دہلی کے مسلم علاقوں میں عام آدمی پارٹی ، کانگریس، سماجوادی پارٹی اور مجلس اتحاد المسلمین کے درمیان زبردست مقابلہ آرائی دیکھنے کو مل سکتی ہے جبکہ بہار سے تعلق رکھنے والی پارٹیاں آر جے ڈی اور جے ڈی یو بھی بڑی پارٹیوں کا کھیل بگاڑ سکتی ہیں ۔

  • پوری دہلی کی طرح مسلم علاقوں میں بھی زبردست انتخابی ماحول ہے امیدواروں کے ذریعہ چلائی گئی انتخابی مہم میں عا م آدمی پارٹی ، کانگریس ، سماجوادی پارٹی اور مجلس اتحاد المسلمین نے زبردست انداز میں تشہیر کی بڑے بڑے سیاسی لیڈر کارپوریشن امیدوار کے حق میں ووٹ مانگتے نظرآئے ۔

    پوری دہلی کی طرح مسلم علاقوں میں بھی زبردست انتخابی ماحول ہے امیدواروں کے ذریعہ چلائی گئی انتخابی مہم میں عا م آدمی پارٹی ، کانگریس ، سماجوادی پارٹی اور مجلس اتحاد المسلمین نے زبردست انداز میں تشہیر کی بڑے بڑے سیاسی لیڈر کارپوریشن امیدوار کے حق میں ووٹ مانگتے نظرآئے ۔

  • انتخابی مہم کے دوران ریلیوں اور انتخابی جلسوں میں مقامی مسائل صاف صفائی اور ڈینگو ڈ، چکن گنیا ، قبرستان ، بدعنوانی اور شاہراہوں کی خستہ حالت پر فوکس رہا تو گائے کے تحفظ ، اذان پر پابندی سے لے کر گائے کے تحفظ کے نام پر غنڈہ گردی اور مسلمانوں کے ساتھ ناانصافی کی گونج بھی خوب سنائی دی ۔

    انتخابی مہم کے دوران ریلیوں اور انتخابی جلسوں میں مقامی مسائل صاف صفائی اور ڈینگو ڈ، چکن گنیا ، قبرستان ، بدعنوانی اور شاہراہوں کی خستہ حالت پر فوکس رہا تو گائے کے تحفظ ، اذان پر پابندی سے لے کر گائے کے تحفظ کے نام پر غنڈہ گردی اور مسلمانوں کے ساتھ ناانصافی کی گونج بھی خوب سنائی دی ۔

  • تاہم اب فیصلہ رائے دہندگان کے ہاتھ میں ہیں اور وہ بھی اپنے لیڈران سے حساب کتاب کے لئے تیار ہیں عوام انتخابی مہم میں بڑے پیمانے پر خرچ سے لے کر گلی کوچوں کی گندگی تک حساب کتاب مانگ رہے ہیں ۔

    تاہم اب فیصلہ رائے دہندگان کے ہاتھ میں ہیں اور وہ بھی اپنے لیڈران سے حساب کتاب کے لئے تیار ہیں عوام انتخابی مہم میں بڑے پیمانے پر خرچ سے لے کر گلی کوچوں کی گندگی تک حساب کتاب مانگ رہے ہیں ۔

  • دہلی کے مسلم علاقوںمیں سیور کاگندا پانی راستوں پر بہتا ہے ، پیدل چلنے والے راہگیر ہوں یا موٹر سائیکل سوار سب کو دامن بچاکر چلنا پڑتا ہے ۔ عجیب بات یہ ہے کہ بدترحالات کا سامنا کررہے لوگوں کے مکانوں کی دیواروں پر بھی انتخابی تشہیر اور امیدواروں کے پوسٹر لگے ہوئے ہیں ۔

    دہلی کے مسلم علاقوںمیں سیور کاگندا پانی راستوں پر بہتا ہے ، پیدل چلنے والے راہگیر ہوں یا موٹر سائیکل سوار سب کو دامن بچاکر چلنا پڑتا ہے ۔ عجیب بات یہ ہے کہ بدترحالات کا سامنا کررہے لوگوں کے مکانوں کی دیواروں پر بھی انتخابی تشہیر اور امیدواروں کے پوسٹر لگے ہوئے ہیں ۔

  • عوام بے حال اور پریشان ہیں اورامید بھری نظروں سے اس انتخاب کو دیکھ رہے ہیں تو قسمت آزمارہے امیدواروں کے پاس وعدوں کا پٹارا ہے او روہ ہر مسئلہ چٹکی بجاکر حل کردینے کا وعدہ کررہے ہیں ۔

    عوام بے حال اور پریشان ہیں اورامید بھری نظروں سے اس انتخاب کو دیکھ رہے ہیں تو قسمت آزمارہے امیدواروں کے پاس وعدوں کا پٹارا ہے او روہ ہر مسئلہ چٹکی بجاکر حل کردینے کا وعدہ کررہے ہیں ۔

  • پانی، صاف صفائی اور اسپتال جیسی بنیاد ی سہولیات سے محرومی نے دہلی سے باہر کی سیاسی پارٹیوں کو بھی پورا موقع دیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ مسلم علاقوں میں عام آدمی پارٹی اور کانگریس کو مجلس اتحاد المسلمین اور سماجوادی پارٹی زبردست ٹکر دے رہی ہیں۔

    پانی، صاف صفائی اور اسپتال جیسی بنیاد ی سہولیات سے محرومی نے دہلی سے باہر کی سیاسی پارٹیوں کو بھی پورا موقع دیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ مسلم علاقوں میں عام آدمی پارٹی اور کانگریس کو مجلس اتحاد المسلمین اور سماجوادی پارٹی زبردست ٹکر دے رہی ہیں۔

  • اسی طرح بہار کی جے ڈی یو اور آرجے ڈی جیسی پارٹیاں بھی پوروانچلی اور بہاری وو ٹ کے سہارے بڑی سیاسی پارٹیوں کا کھیل بگاڑ رہی ہیں۔

    اسی طرح بہار کی جے ڈی یو اور آرجے ڈی جیسی پارٹیاں بھی پوروانچلی اور بہاری وو ٹ کے سہارے بڑی سیاسی پارٹیوں کا کھیل بگاڑ رہی ہیں۔

  • پوری دہلی کی طرح مسلم علاقوں میں بھی زبردست انتخابی ماحول ہے امیدواروں کے ذریعہ چلائی گئی انتخابی مہم میں عا م آدمی پارٹی ، کانگریس ، سماجوادی پارٹی اور مجلس اتحاد المسلمین نے زبردست انداز میں تشہیر کی بڑے بڑے سیاسی لیڈر کارپوریشن امیدوار کے حق میں ووٹ مانگتے نظرآئے ۔
  • انتخابی مہم کے دوران ریلیوں اور انتخابی جلسوں میں مقامی مسائل صاف صفائی اور ڈینگو ڈ، چکن گنیا ، قبرستان ، بدعنوانی اور شاہراہوں کی خستہ حالت پر فوکس رہا تو گائے کے تحفظ ، اذان پر پابندی سے لے کر گائے کے تحفظ کے نام پر غنڈہ گردی اور مسلمانوں کے ساتھ ناانصافی کی گونج بھی خوب سنائی دی ۔
  • تاہم اب فیصلہ رائے دہندگان کے ہاتھ میں ہیں اور وہ بھی اپنے لیڈران سے حساب کتاب کے لئے تیار ہیں عوام انتخابی مہم میں بڑے پیمانے پر خرچ سے لے کر گلی کوچوں کی گندگی تک حساب کتاب مانگ رہے ہیں ۔
  • دہلی کے مسلم علاقوںمیں سیور کاگندا پانی راستوں پر بہتا ہے ، پیدل چلنے والے راہگیر ہوں یا موٹر سائیکل سوار سب کو دامن بچاکر چلنا پڑتا ہے ۔ عجیب بات یہ ہے کہ بدترحالات کا سامنا کررہے لوگوں کے مکانوں کی دیواروں پر بھی انتخابی تشہیر اور امیدواروں کے پوسٹر لگے ہوئے ہیں ۔
  • عوام بے حال اور پریشان ہیں اورامید بھری نظروں سے اس انتخاب کو دیکھ رہے ہیں تو قسمت آزمارہے امیدواروں کے پاس وعدوں کا پٹارا ہے او روہ ہر مسئلہ چٹکی بجاکر حل کردینے کا وعدہ کررہے ہیں ۔
  • پانی، صاف صفائی اور اسپتال جیسی بنیاد ی سہولیات سے محرومی نے دہلی سے باہر کی سیاسی پارٹیوں کو بھی پورا موقع دیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ مسلم علاقوں میں عام آدمی پارٹی اور کانگریس کو مجلس اتحاد المسلمین اور سماجوادی پارٹی زبردست ٹکر دے رہی ہیں۔
  • اسی طرح بہار کی جے ڈی یو اور آرجے ڈی جیسی پارٹیاں بھی پوروانچلی اور بہاری وو ٹ کے سہارے بڑی سیاسی پارٹیوں کا کھیل بگاڑ رہی ہیں۔

تازہ ترین تصاویر