مسلم خواتین کی تعلیم و ترقی میں حجاب نہیں ہے رکاوٹ، باحجاب ہما اور حنا کو ملا گولڈ میڈل

Mar 18, 2017 05:56 PM IST
1 of 6
  • مسلم خواتین کے لیے حجاب اسلامی تہذیب کا حصہ رہا ہے اور ہندوستان جیسے جمہوری نظام اور مشترکہ تہذیب والے ملک میں خواتین کو حجاب پہننے یا نہ پہننے کو لیکر مکمل آزادی حاصل ہے۔ تاہم مسلم خواتین کی آزادی کو لیکر وقتاً فوقتاً سوال اٹھائے جاتے رہے ہیں . لیکن ان سوالوں کے برعکس مسلم لڑکیاں اور خاص طور پر طالبات حجاب میں رہتے ہوئے آزاد خیالی کے ساتھ  نہ صرف اپنی صلاحیتوں کا بہترین مظاہرہ کر رہی ہیں بلکہ سماج کی دوسری لڑکیوں کے لیے ایک نظیر بھی پیش کر رہی  ہیں ۔

    مسلم خواتین کے لیے حجاب اسلامی تہذیب کا حصہ رہا ہے اور ہندوستان جیسے جمہوری نظام اور مشترکہ تہذیب والے ملک میں خواتین کو حجاب پہننے یا نہ پہننے کو لیکر مکمل آزادی حاصل ہے۔ تاہم مسلم خواتین کی آزادی کو لیکر وقتاً فوقتاً سوال اٹھائے جاتے رہے ہیں . لیکن ان سوالوں کے برعکس مسلم لڑکیاں اور خاص طور پر طالبات حجاب میں رہتے ہوئے آزاد خیالی کے ساتھ نہ صرف اپنی صلاحیتوں کا بہترین مظاہرہ کر رہی ہیں بلکہ سماج کی دوسری لڑکیوں کے لیے ایک نظیر بھی پیش کر رہی ہیں ۔

  • میرٹھ یونیورسٹی سے اعلیٰ تعلیم حاصل کر رہی ہما اور حنا ان لڑکیوں میں شامل ہیں جنہیں اس سال یونیورسٹی کی تقسیم اسناد تقریب میں  گولڈ میڈل حاصل ہوا ہے ۔ سائنس کی طالبہ ہما نے جہاں ایم فل زولوجی میں ٹاپ کرکے گولڈ میڈل حاصل کیا ہے وہیں حنا نے ایم فل اردو میں ٹاپ کرکے گولڈ مڈل حاصل کیا ہے ۔

    میرٹھ یونیورسٹی سے اعلیٰ تعلیم حاصل کر رہی ہما اور حنا ان لڑکیوں میں شامل ہیں جنہیں اس سال یونیورسٹی کی تقسیم اسناد تقریب میں گولڈ میڈل حاصل ہوا ہے ۔ سائنس کی طالبہ ہما نے جہاں ایم فل زولوجی میں ٹاپ کرکے گولڈ میڈل حاصل کیا ہے وہیں حنا نے ایم فل اردو میں ٹاپ کرکے گولڈ مڈل حاصل کیا ہے ۔

  •  گھر میں اسلامی طور طریقوں کے ماحول میں پلی بڑھیں ان لڑکیوں کے لیے حجاب انکی پوشاک کا حصہ رہا ہے لیکن تعلیم اور ترقی کی راہ میں حجاب ان لڑکیوں کے لیے رکاوٹ کا سبب کبھی نہیں بنا ۔

    گھر میں اسلامی طور طریقوں کے ماحول میں پلی بڑھیں ان لڑکیوں کے لیے حجاب انکی پوشاک کا حصہ رہا ہے لیکن تعلیم اور ترقی کی راہ میں حجاب ان لڑکیوں کے لیے رکاوٹ کا سبب کبھی نہیں بنا ۔

  •  آج اپنی صلاحیتوں سے یہ لڑکیاں ان افراد کے لئے خود ایک جواب بن گئی ہیں جو برقع یا حجاب کو خواتین کی تعلیم و ترقی کی راہ میں رکاوٹ مانتے ہوئے سوال اٹھاتے رہتے ہیں ۔

    آج اپنی صلاحیتوں سے یہ لڑکیاں ان افراد کے لئے خود ایک جواب بن گئی ہیں جو برقع یا حجاب کو خواتین کی تعلیم و ترقی کی راہ میں رکاوٹ مانتے ہوئے سوال اٹھاتے رہتے ہیں ۔

  •  اس سال میرٹھ یونیورسٹی کی تقسیم اسناد تقریب کے دوران 36 میں سے 25 گولڈ میڈل طالبات نے حاصل کیے ہیں . مختلف شعبہ سے اعلیٰ تعلیم حاصل کر رہی ان طالبات میں بڑی تعداد مسلم لڑکیوں کی بھی ہے جو اپنے مذہبی تقاضوں  کو برقرار رکھتے ہوئے تعلیم و ترقی کی راہ پر گامزن ہیں ۔

    اس سال میرٹھ یونیورسٹی کی تقسیم اسناد تقریب کے دوران 36 میں سے 25 گولڈ میڈل طالبات نے حاصل کیے ہیں . مختلف شعبہ سے اعلیٰ تعلیم حاصل کر رہی ان طالبات میں بڑی تعداد مسلم لڑکیوں کی بھی ہے جو اپنے مذہبی تقاضوں کو برقرار رکھتے ہوئے تعلیم و ترقی کی راہ پر گامزن ہیں ۔

  •  مسلم سماج میں حنا اور ہما ہی نہیں بلکہ ان جیسی ہزاروں لڑکیاں آج  ان سوالوں کا جواب ہیں جو کسی مخصوص پہناوے یا پوشاک کو نشانہ بنا کر اٹھائے جاتے رہے  ہیں ۔

    مسلم سماج میں حنا اور ہما ہی نہیں بلکہ ان جیسی ہزاروں لڑکیاں آج ان سوالوں کا جواب ہیں جو کسی مخصوص پہناوے یا پوشاک کو نشانہ بنا کر اٹھائے جاتے رہے ہیں ۔

  • میرٹھ یونیورسٹی سے اعلیٰ تعلیم حاصل کر رہی ہما اور حنا ان لڑکیوں میں شامل ہیں جنہیں اس سال یونیورسٹی کی تقسیم اسناد تقریب میں  گولڈ میڈل حاصل ہوا ہے ۔ سائنس کی طالبہ ہما نے جہاں ایم فل زولوجی میں ٹاپ کرکے گولڈ میڈل حاصل کیا ہے وہیں حنا نے ایم فل اردو میں ٹاپ کرکے گولڈ مڈل حاصل کیا ہے ۔
  •  گھر میں اسلامی طور طریقوں کے ماحول میں پلی بڑھیں ان لڑکیوں کے لیے حجاب انکی پوشاک کا حصہ رہا ہے لیکن تعلیم اور ترقی کی راہ میں حجاب ان لڑکیوں کے لیے رکاوٹ کا سبب کبھی نہیں بنا ۔
  •  آج اپنی صلاحیتوں سے یہ لڑکیاں ان افراد کے لئے خود ایک جواب بن گئی ہیں جو برقع یا حجاب کو خواتین کی تعلیم و ترقی کی راہ میں رکاوٹ مانتے ہوئے سوال اٹھاتے رہتے ہیں ۔
  •  اس سال میرٹھ یونیورسٹی کی تقسیم اسناد تقریب کے دوران 36 میں سے 25 گولڈ میڈل طالبات نے حاصل کیے ہیں . مختلف شعبہ سے اعلیٰ تعلیم حاصل کر رہی ان طالبات میں بڑی تعداد مسلم لڑکیوں کی بھی ہے جو اپنے مذہبی تقاضوں  کو برقرار رکھتے ہوئے تعلیم و ترقی کی راہ پر گامزن ہیں ۔
  •  مسلم سماج میں حنا اور ہما ہی نہیں بلکہ ان جیسی ہزاروں لڑکیاں آج  ان سوالوں کا جواب ہیں جو کسی مخصوص پہناوے یا پوشاک کو نشانہ بنا کر اٹھائے جاتے رہے  ہیں ۔

تازہ ترین تصاویر