ہند-امریکہ مل کر دہشت گردی کو ختم کریں گے، مودی نے ٹرمپ کو ہندوستان آنے کی دعوت دی

Jun 27, 2017 12:18 PM IST
1 of 15
  • ہندوستان اور امریکہ نے دہشت گردی کے خلاف لڑائی کو اولین ترجیح دیتے ہوئے دہشت گردی کو مکمل طور پرتباہ کرنے کا عہد کیا ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی اور امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے یہاں وہائٹ ہاؤس میں جاری ایک مشترکہ بیان میں کہا کہ دہشت گردی اور اس کی سرپرستی کرنے والوں کے خلاف لڑائی میں دونوں ملک باہمی تعاون کریں گے۔ مسٹر مودی نے بتایا کہ ہندوستان اور امریکہ کے درمیان وفد سطح کی بات چیت کے دوران دنیا میں بڑھ رہی دہشت گردی، انتہا پسندی اور بنیاد پرستی کے مسئلے پر بھی بات چیت ہوئی اور اسےروکنے میں تعاون پر اتفاق ہوا۔

    ہندوستان اور امریکہ نے دہشت گردی کے خلاف لڑائی کو اولین ترجیح دیتے ہوئے دہشت گردی کو مکمل طور پرتباہ کرنے کا عہد کیا ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی اور امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے یہاں وہائٹ ہاؤس میں جاری ایک مشترکہ بیان میں کہا کہ دہشت گردی اور اس کی سرپرستی کرنے والوں کے خلاف لڑائی میں دونوں ملک باہمی تعاون کریں گے۔ مسٹر مودی نے بتایا کہ ہندوستان اور امریکہ کے درمیان وفد سطح کی بات چیت کے دوران دنیا میں بڑھ رہی دہشت گردی، انتہا پسندی اور بنیاد پرستی کے مسئلے پر بھی بات چیت ہوئی اور اسےروکنے میں تعاون پر اتفاق ہوا۔

  •  مسٹر ٹرمپ نے اپنے بیان میں کہا، ’’ہندوستان اور امریکہ دونوں دہشت گردی سے بری طرح متاثر رہے ہیں اور ہم دہشت گردی کو جڑ سے مٹانے کا عہد کرتے ہیں۔‘‘

    مسٹر ٹرمپ نے اپنے بیان میں کہا، ’’ہندوستان اور امریکہ دونوں دہشت گردی سے بری طرح متاثر رہے ہیں اور ہم دہشت گردی کو جڑ سے مٹانے کا عہد کرتے ہیں۔‘‘

  • مسٹر مودی نے کہا کہ ہندوستان اور امریکہ ترقی کے معاملوں میں عالمی انجن ہیں۔ دہشت گردی کو ختم کرنا دونوں ملکوں کی اولین ترجیح ہے۔ وزیراعظم نے کہا،’’میرا امریکی دورہ اور یہاں ہوئی بات چیت دونوں ملکوں کے تعلقات کی تاریخ میں اہم باب ثابت ہوگا۔

    مسٹر مودی نے کہا کہ ہندوستان اور امریکہ ترقی کے معاملوں میں عالمی انجن ہیں۔ دہشت گردی کو ختم کرنا دونوں ملکوں کی اولین ترجیح ہے۔ وزیراعظم نے کہا،’’میرا امریکی دورہ اور یہاں ہوئی بات چیت دونوں ملکوں کے تعلقات کی تاریخ میں اہم باب ثابت ہوگا۔

  • انہوں نے کہا کہ ہندوستان-بحر الکاہل علاقے میں امن،استحکام اور سکیورٹی ان کی سرکاری ترجیح ہے اور سکیورٹی چیلنجوں کے پیش نظر سکیورٹی کے شعبہ میں امریکی تعاون اہم ہے۔ انہوں نے افغانستان میں عدم استحکام پھیلانے کےلئے پاکستان کا نام لئے بغیر کہا کہ پڑوسی ملک افغانستان میں عدم استحکام ہندوستان کےلئے باعث تشویش ہے۔

    انہوں نے کہا کہ ہندوستان-بحر الکاہل علاقے میں امن،استحکام اور سکیورٹی ان کی سرکاری ترجیح ہے اور سکیورٹی چیلنجوں کے پیش نظر سکیورٹی کے شعبہ میں امریکی تعاون اہم ہے۔ انہوں نے افغانستان میں عدم استحکام پھیلانے کےلئے پاکستان کا نام لئے بغیر کہا کہ پڑوسی ملک افغانستان میں عدم استحکام ہندوستان کےلئے باعث تشویش ہے۔

  • وزیراعظم نے مسٹر ٹرمپ کو مع اہل و عیال ہندوستان آنے کی دعوت دی۔ انہوں نے امریکی صدر کی بیٹی اوانكا کو بھی پیشہ ورانہ وفد لےکر ہندوستان آنے کی دعوت دی۔ مسٹر ٹرمپ نے خود اس دعوت کے بارے میں میڈیا کو بتایا۔

    وزیراعظم نے مسٹر ٹرمپ کو مع اہل و عیال ہندوستان آنے کی دعوت دی۔ انہوں نے امریکی صدر کی بیٹی اوانكا کو بھی پیشہ ورانہ وفد لےکر ہندوستان آنے کی دعوت دی۔ مسٹر ٹرمپ نے خود اس دعوت کے بارے میں میڈیا کو بتایا۔

  •  امریکی صدر نے کہا،’’وزیراعظم مودی نے میری بیٹی اوانکا کو ہندوستان میں کاروباری وفد لے کر آنے کی دعوت دی ہے اورمیرا خیال ہے کہ اس نے(اوانکا) نے اسے منظور کرلیا ہے۔

    امریکی صدر نے کہا،’’وزیراعظم مودی نے میری بیٹی اوانکا کو ہندوستان میں کاروباری وفد لے کر آنے کی دعوت دی ہے اورمیرا خیال ہے کہ اس نے(اوانکا) نے اسے منظور کرلیا ہے۔

  •  مسٹر ٹرمپ نے کہا کہ ہندوستان اور امریکہ کے تعلقات کبھی بہتر اور مضبوط نہیں رہے، لیکن انہوں نے صدر کے عہدے کے لئے ہونے والے انتخابات کے وقت کہا تھا کہ وائٹ ہاؤس میں ہندوستان کا ایک دوست ہوگا اور آج حقیقت میں ہندوستان کے پاس یہاں دوست موجود ہے۔ ان کا اشارہ خود اپنی طرف تھا۔

    مسٹر ٹرمپ نے کہا کہ ہندوستان اور امریکہ کے تعلقات کبھی بہتر اور مضبوط نہیں رہے، لیکن انہوں نے صدر کے عہدے کے لئے ہونے والے انتخابات کے وقت کہا تھا کہ وائٹ ہاؤس میں ہندوستان کا ایک دوست ہوگا اور آج حقیقت میں ہندوستان کے پاس یہاں دوست موجود ہے۔ ان کا اشارہ خود اپنی طرف تھا۔

  • امریکی صدر نے کہا کہ ہندوستان کا مقابلہ کوئی نہیں کرسکتا۔ دونوں کے آئین کی شروعات بھی تین الفاظ سے ہوتی ہے’’وی دی پیپل(ہم لوگ)‘‘۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر مودی اور وہ خود سوشل میڈیا کے عالمی لیڈر ہیں اور دونوں عوام کو مناسب حقوق دئے جانے میں یقین رکھتے ہیں۔

    امریکی صدر نے کہا کہ ہندوستان کا مقابلہ کوئی نہیں کرسکتا۔ دونوں کے آئین کی شروعات بھی تین الفاظ سے ہوتی ہے’’وی دی پیپل(ہم لوگ)‘‘۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر مودی اور وہ خود سوشل میڈیا کے عالمی لیڈر ہیں اور دونوں عوام کو مناسب حقوق دئے جانے میں یقین رکھتے ہیں۔

  • مسٹر ٹرمپ نے وزیراعظم اور ہندوستان کی کامیابیوں کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ وہ اور مسٹر مودی روزگار پیدا کرنے کی کوشش کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا’’مسٹر مودی اور میں دونوں ملکوں کی ضرورتوں کو سمجھتے ہیں۔

    مسٹر ٹرمپ نے وزیراعظم اور ہندوستان کی کامیابیوں کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ وہ اور مسٹر مودی روزگار پیدا کرنے کی کوشش کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا’’مسٹر مودی اور میں دونوں ملکوں کی ضرورتوں کو سمجھتے ہیں۔

  • امریکی صدرنے مسٹر مودی کی قیادت میں ہندوستان میں ہورہی ٹیکس میں بہتری کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ اگلے کچھ دنوں میں ہندوستان اہم ٹیکس بہتری کی سمت میں قدم رکھتے ہوئے اشیا اور سروس ٹیکس (جی ایس ٹی)نافذ کرے گا۔انہوں نے کہا کہ امریکہ بھی جلد ہی اس سمت میں قدم بڑھائے گا۔ اس سے پہلے مسٹر مودی نے آج وائٹ ہاؤس میں مسٹر ٹرمپ سے ملاقات کی۔اس موقع پر امریکی صدر کی اہلیہ بھی موجود تھیں۔ٹرمپ جوڑے نے وائٹ ہاؤس سے باہر آکر خود مسٹر مودی کا استقبال کیا۔

    امریکی صدرنے مسٹر مودی کی قیادت میں ہندوستان میں ہورہی ٹیکس میں بہتری کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ اگلے کچھ دنوں میں ہندوستان اہم ٹیکس بہتری کی سمت میں قدم رکھتے ہوئے اشیا اور سروس ٹیکس (جی ایس ٹی)نافذ کرے گا۔انہوں نے کہا کہ امریکہ بھی جلد ہی اس سمت میں قدم بڑھائے گا۔ اس سے پہلے مسٹر مودی نے آج وائٹ ہاؤس میں مسٹر ٹرمپ سے ملاقات کی۔اس موقع پر امریکی صدر کی اہلیہ بھی موجود تھیں۔ٹرمپ جوڑے نے وائٹ ہاؤس سے باہر آکر خود مسٹر مودی کا استقبال کیا۔

  • وزیراعظم نریندر مودی نے امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کو ہندوستان آنے کی دعوت دی ہے، جسے انہوں نے تہہ دل سے قبول کرلیا اور وہ جلد ہی ہندوستان کے دورے پر جائیں گے۔

    وزیراعظم نریندر مودی نے امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کو ہندوستان آنے کی دعوت دی ہے، جسے انہوں نے تہہ دل سے قبول کرلیا اور وہ جلد ہی ہندوستان کے دورے پر جائیں گے۔

  •  یہاں جاری مشترکہ بیان میں بتایا گیا کہ مسٹر ٹرمپ نے مسٹر مودی کی دعوت کو دل خوشی سے قبول کرلیا ہے اور انہوں نے آنے والے وقت میں باہمی دوستی کے جذبے سے کام کرنے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔

    یہاں جاری مشترکہ بیان میں بتایا گیا کہ مسٹر ٹرمپ نے مسٹر مودی کی دعوت کو دل خوشی سے قبول کرلیا ہے اور انہوں نے آنے والے وقت میں باہمی دوستی کے جذبے سے کام کرنے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔

  • امریکی صدر کے دفتر وائٹ ہاؤس میں وفد سطح کی بات چیت کے بعد نامہ نگاروں سے بات چیت میں مسٹر مودی نے کہا کہ انہوں نے مسٹر ٹرمپ اور ان کے خاندان کو ہندوستان آنے کی دعوت دی ہے۔

    امریکی صدر کے دفتر وائٹ ہاؤس میں وفد سطح کی بات چیت کے بعد نامہ نگاروں سے بات چیت میں مسٹر مودی نے کہا کہ انہوں نے مسٹر ٹرمپ اور ان کے خاندان کو ہندوستان آنے کی دعوت دی ہے۔

  •  انہوں نے کہا’’امید ہے کہ آپ مجھے ہندوستان میں استقبال اور میزبانی کا موقع دیں گے۔‘‘

    انہوں نے کہا’’امید ہے کہ آپ مجھے ہندوستان میں استقبال اور میزبانی کا موقع دیں گے۔‘‘

  • دونوں رہنماؤں کے بیچ یہ پہلی دو طرفہ ملاقات تھی۔ مسٹر ٹرمپ نے امریکی دورے پر آئےمسٹر مودی کی باربار تعریف کی اور انہیں عظیم وزیراعظم کہہ کر خطاب کیا۔ نوٹ: یہ سبھی تصویریں یو این آئی کی ہیں۔

    دونوں رہنماؤں کے بیچ یہ پہلی دو طرفہ ملاقات تھی۔ مسٹر ٹرمپ نے امریکی دورے پر آئےمسٹر مودی کی باربار تعریف کی اور انہیں عظیم وزیراعظم کہہ کر خطاب کیا۔ نوٹ: یہ سبھی تصویریں یو این آئی کی ہیں۔

  •  مسٹر ٹرمپ نے اپنے بیان میں کہا، ’’ہندوستان اور امریکہ دونوں دہشت گردی سے بری طرح متاثر رہے ہیں اور ہم دہشت گردی کو جڑ سے مٹانے کا عہد کرتے ہیں۔‘‘
  • مسٹر مودی نے کہا کہ ہندوستان اور امریکہ ترقی کے معاملوں میں عالمی انجن ہیں۔ دہشت گردی کو ختم کرنا دونوں ملکوں کی اولین ترجیح ہے۔ وزیراعظم نے کہا،’’میرا امریکی دورہ اور یہاں ہوئی بات چیت دونوں ملکوں کے تعلقات کی تاریخ میں اہم باب ثابت ہوگا۔
  • انہوں نے کہا کہ ہندوستان-بحر الکاہل علاقے میں امن،استحکام اور سکیورٹی ان کی سرکاری ترجیح ہے اور سکیورٹی چیلنجوں کے پیش نظر سکیورٹی کے شعبہ میں امریکی تعاون اہم ہے۔ انہوں نے افغانستان میں عدم استحکام پھیلانے کےلئے پاکستان کا نام لئے بغیر کہا کہ پڑوسی ملک افغانستان میں عدم استحکام ہندوستان کےلئے باعث تشویش ہے۔
  • وزیراعظم نے مسٹر ٹرمپ کو مع اہل و عیال ہندوستان آنے کی دعوت دی۔ انہوں نے امریکی صدر کی بیٹی اوانكا کو بھی پیشہ ورانہ وفد لےکر ہندوستان آنے کی دعوت دی۔ مسٹر ٹرمپ نے خود اس دعوت کے بارے میں میڈیا کو بتایا۔
  •  امریکی صدر نے کہا،’’وزیراعظم مودی نے میری بیٹی اوانکا کو ہندوستان میں کاروباری وفد لے کر آنے کی دعوت دی ہے اورمیرا خیال ہے کہ اس نے(اوانکا) نے اسے منظور کرلیا ہے۔
  •  مسٹر ٹرمپ نے کہا کہ ہندوستان اور امریکہ کے تعلقات کبھی بہتر اور مضبوط نہیں رہے، لیکن انہوں نے صدر کے عہدے کے لئے ہونے والے انتخابات کے وقت کہا تھا کہ وائٹ ہاؤس میں ہندوستان کا ایک دوست ہوگا اور آج حقیقت میں ہندوستان کے پاس یہاں دوست موجود ہے۔ ان کا اشارہ خود اپنی طرف تھا۔
  • امریکی صدر نے کہا کہ ہندوستان کا مقابلہ کوئی نہیں کرسکتا۔ دونوں کے آئین کی شروعات بھی تین الفاظ سے ہوتی ہے’’وی دی پیپل(ہم لوگ)‘‘۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر مودی اور وہ خود سوشل میڈیا کے عالمی لیڈر ہیں اور دونوں عوام کو مناسب حقوق دئے جانے میں یقین رکھتے ہیں۔
  • مسٹر ٹرمپ نے وزیراعظم اور ہندوستان کی کامیابیوں کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ وہ اور مسٹر مودی روزگار پیدا کرنے کی کوشش کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا’’مسٹر مودی اور میں دونوں ملکوں کی ضرورتوں کو سمجھتے ہیں۔
  • امریکی صدرنے مسٹر مودی کی قیادت میں ہندوستان میں ہورہی ٹیکس میں بہتری کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ اگلے کچھ دنوں میں ہندوستان اہم ٹیکس بہتری کی سمت میں قدم رکھتے ہوئے اشیا اور سروس ٹیکس (جی ایس ٹی)نافذ کرے گا۔انہوں نے کہا کہ امریکہ بھی جلد ہی اس سمت میں قدم بڑھائے گا۔ اس سے پہلے مسٹر مودی نے آج وائٹ ہاؤس میں مسٹر ٹرمپ سے ملاقات کی۔اس موقع پر امریکی صدر کی اہلیہ بھی موجود تھیں۔ٹرمپ جوڑے نے وائٹ ہاؤس سے باہر آکر خود مسٹر مودی کا استقبال کیا۔
  • وزیراعظم نریندر مودی نے امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کو ہندوستان آنے کی دعوت دی ہے، جسے انہوں نے تہہ دل سے قبول کرلیا اور وہ جلد ہی ہندوستان کے دورے پر جائیں گے۔
  •  یہاں جاری مشترکہ بیان میں بتایا گیا کہ مسٹر ٹرمپ نے مسٹر مودی کی دعوت کو دل خوشی سے قبول کرلیا ہے اور انہوں نے آنے والے وقت میں باہمی دوستی کے جذبے سے کام کرنے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔
  • امریکی صدر کے دفتر وائٹ ہاؤس میں وفد سطح کی بات چیت کے بعد نامہ نگاروں سے بات چیت میں مسٹر مودی نے کہا کہ انہوں نے مسٹر ٹرمپ اور ان کے خاندان کو ہندوستان آنے کی دعوت دی ہے۔
  •  انہوں نے کہا’’امید ہے کہ آپ مجھے ہندوستان میں استقبال اور میزبانی کا موقع دیں گے۔‘‘
  • دونوں رہنماؤں کے بیچ یہ پہلی دو طرفہ ملاقات تھی۔ مسٹر ٹرمپ نے امریکی دورے پر آئےمسٹر مودی کی باربار تعریف کی اور انہیں عظیم وزیراعظم کہہ کر خطاب کیا۔ نوٹ: یہ سبھی تصویریں یو این آئی کی ہیں۔

تازہ ترین تصاویر