مسلم طالبہ نے وکالت کی تعلیم میں حاصل کئے نو گولڈ میڈل، گھر میں جشن کا ماحول

Feb 06, 2017 07:41 PM IST
1 of 9
  • احمد آباد کی ایک مسلم طالبہ کو اس کی شاندار کامیابی کے لیے ایک دو نہیں بلکہ نو نو گولڈ میڈل ملے ہیں ۔ دراصل گجرات ہائی کورٹ کے وکیل ہاشم قریشی کی خواہش تھی کہ وہ اپنے تمام بچوں کو ایسی تعلیم دیں جس کی وجہ سے وہ خود تو اپنے پیروں پر کھڑے ہوں ہی ساتھ ہی معاشرے کو بھی اس سے کچھ فا ئدہ مل سکے ۔ بس اسی مقصد کو سامنے رکھ کر انہوں نے اپنی لڑکی کو وکالت کی تعلیم دینے کا منصوبہ بنایا اور آج ان کی لڑکی نے ایسی شاندار کامیابی حاصل کی ہے  جس سے ان کے والدین کا نام پوری ریاست میں روشن ہو گیا ہے۔

    احمد آباد کی ایک مسلم طالبہ کو اس کی شاندار کامیابی کے لیے ایک دو نہیں بلکہ نو نو گولڈ میڈل ملے ہیں ۔ دراصل گجرات ہائی کورٹ کے وکیل ہاشم قریشی کی خواہش تھی کہ وہ اپنے تمام بچوں کو ایسی تعلیم دیں جس کی وجہ سے وہ خود تو اپنے پیروں پر کھڑے ہوں ہی ساتھ ہی معاشرے کو بھی اس سے کچھ فا ئدہ مل سکے ۔ بس اسی مقصد کو سامنے رکھ کر انہوں نے اپنی لڑکی کو وکالت کی تعلیم دینے کا منصوبہ بنایا اور آج ان کی لڑکی نے ایسی شاندار کامیابی حاصل کی ہے جس سے ان کے والدین کا نام پوری ریاست میں روشن ہو گیا ہے۔

  • احمد آباد میں رہنے والے ہاشم قریشی کے گھر میں آج کل خوشیوں کا ماحول ہے۔  لوگ ایک دوسرے کو مٹھائیاں کھلا کرخوشی کا اظہار کر رہے ہیں ۔

    احمد آباد میں رہنے والے ہاشم قریشی کے گھر میں آج کل خوشیوں کا ماحول ہے۔ لوگ ایک دوسرے کو مٹھائیاں کھلا کرخوشی کا اظہار کر رہے ہیں ۔

  • دراصل ہاشم کی لڑکی هنیجا کو ایک نہیں بلکہ نو نو گولڈ میڈل ایک ساتھ ملے ہیں ۔

    دراصل ہاشم کی لڑکی هنیجا کو ایک نہیں بلکہ نو نو گولڈ میڈل ایک ساتھ ملے ہیں ۔

  • هنیجا کی سخت محنت اور لگن سے انہیں یہ کامیابی ملی ہے لیکن ان کے والدین نے بھی ان کا ہر ہر قدم پر ساتھ دیا ہے۔

    هنیجا کی سخت محنت اور لگن سے انہیں یہ کامیابی ملی ہے لیکن ان کے والدین نے بھی ان کا ہر ہر قدم پر ساتھ دیا ہے۔

  •  اس کامیابی کے بعد هنیجا کہتی ہیں کہ خاص طور پر آج کے معاشرے میں ایک اچھے وکیل کی کافی ضرورت ہے اور اس ضرورت کو پوری کرنے کی ہماری کوشش ہوگی۔

    اس کامیابی کے بعد هنیجا کہتی ہیں کہ خاص طور پر آج کے معاشرے میں ایک اچھے وکیل کی کافی ضرورت ہے اور اس ضرورت کو پوری کرنے کی ہماری کوشش ہوگی۔

  •  ساتھ ہی ساتھ انہوں نے مسلم برادری کے لوگوں کو پیغام دیا کہ وہ بھی اپنی بچیوں کو بہترین تعلیم دیں تاکہ وہ بھی اسی طریقے کی کامیابی حاصل کر سکیں اور اپنے والدین کا نام روشن کر سکیں ۔

    ساتھ ہی ساتھ انہوں نے مسلم برادری کے لوگوں کو پیغام دیا کہ وہ بھی اپنی بچیوں کو بہترین تعلیم دیں تاکہ وہ بھی اسی طریقے کی کامیابی حاصل کر سکیں اور اپنے والدین کا نام روشن کر سکیں ۔

  •  ھنیجا کے والد ہاشم کہتے ہیں کہ خاص طورسے آج مسلم برادری کے لوگوں کو ایک اچھے وکیل کی سخت ضرورت ہے لیکن تجربہ کار وکلاء کی فیس اتنی مہنگی ہوتی ہے کہ لوگ انصاف سے محروم رہ جاتے ہیں ۔

    ھنیجا کے والد ہاشم کہتے ہیں کہ خاص طورسے آج مسلم برادری کے لوگوں کو ایک اچھے وکیل کی سخت ضرورت ہے لیکن تجربہ کار وکلاء کی فیس اتنی مہنگی ہوتی ہے کہ لوگ انصاف سے محروم رہ جاتے ہیں ۔

  •  انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی عدالتیں انصاف دینے کے لئے ہیں لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ ایسے وکیل جوماہر ہوتے ہیں وہ غریب اور عام انسان کے بجٹ میں نہیں مل پاتے۔

    انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی عدالتیں انصاف دینے کے لئے ہیں لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ ایسے وکیل جوماہر ہوتے ہیں وہ غریب اور عام انسان کے بجٹ میں نہیں مل پاتے۔

  • لیکن ہماری کوشش ہوگی کہ ہمارے بچے ایسے  لوگوں کو آج کے حالات میں  انصاف دلوا سکیں۔

    لیکن ہماری کوشش ہوگی کہ ہمارے بچے ایسے لوگوں کو آج کے حالات میں انصاف دلوا سکیں۔

  • احمد آباد میں رہنے والے ہاشم قریشی کے گھر میں آج کل خوشیوں کا ماحول ہے۔  لوگ ایک دوسرے کو مٹھائیاں کھلا کرخوشی کا اظہار کر رہے ہیں ۔
  • دراصل ہاشم کی لڑکی هنیجا کو ایک نہیں بلکہ نو نو گولڈ میڈل ایک ساتھ ملے ہیں ۔
  • هنیجا کی سخت محنت اور لگن سے انہیں یہ کامیابی ملی ہے لیکن ان کے والدین نے بھی ان کا ہر ہر قدم پر ساتھ دیا ہے۔
  •  اس کامیابی کے بعد هنیجا کہتی ہیں کہ خاص طور پر آج کے معاشرے میں ایک اچھے وکیل کی کافی ضرورت ہے اور اس ضرورت کو پوری کرنے کی ہماری کوشش ہوگی۔
  •  ساتھ ہی ساتھ انہوں نے مسلم برادری کے لوگوں کو پیغام دیا کہ وہ بھی اپنی بچیوں کو بہترین تعلیم دیں تاکہ وہ بھی اسی طریقے کی کامیابی حاصل کر سکیں اور اپنے والدین کا نام روشن کر سکیں ۔
  •  ھنیجا کے والد ہاشم کہتے ہیں کہ خاص طورسے آج مسلم برادری کے لوگوں کو ایک اچھے وکیل کی سخت ضرورت ہے لیکن تجربہ کار وکلاء کی فیس اتنی مہنگی ہوتی ہے کہ لوگ انصاف سے محروم رہ جاتے ہیں ۔
  •  انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی عدالتیں انصاف دینے کے لئے ہیں لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ ایسے وکیل جوماہر ہوتے ہیں وہ غریب اور عام انسان کے بجٹ میں نہیں مل پاتے۔
  • لیکن ہماری کوشش ہوگی کہ ہمارے بچے ایسے  لوگوں کو آج کے حالات میں  انصاف دلوا سکیں۔

تازہ ترین تصاویر