تین طلاق دینے پر مساجد سے سماجی بائیکاٹ کا ہوگا اعلان، مفتیان کرام جاری کریں گے فتوی

Apr 17, 2017 09:58 PM IST
1 of 8
  • فوری طور پر تین طلاق دینا اب آسان نہیں ہو گا۔ فوری طور پر تین طلاق دینا اب آپ کو مشکل میں ڈال سکتا ہے۔ آپ کو سماجی بائیکاٹ کی سزا سنائی جائے گی۔ مساجد سے آپ کے بائیکاٹ کا اعلان کیا جائے گا ۔ لڑکی فریق کے سوال کے جواب میں مفتی آپ کے خلاف فتوی بھی جاری کر سکتے ہیں۔ جلد ہی اس سلسلہ میں مسلم پرسنل لاء بورڈ ہدایات جاری کرنے والا ہے۔

    فوری طور پر تین طلاق دینا اب آسان نہیں ہو گا۔ فوری طور پر تین طلاق دینا اب آپ کو مشکل میں ڈال سکتا ہے۔ آپ کو سماجی بائیکاٹ کی سزا سنائی جائے گی۔ مساجد سے آپ کے بائیکاٹ کا اعلان کیا جائے گا ۔ لڑکی فریق کے سوال کے جواب میں مفتی آپ کے خلاف فتوی بھی جاری کر سکتے ہیں۔ جلد ہی اس سلسلہ میں مسلم پرسنل لاء بورڈ ہدایات جاری کرنے والا ہے۔

  • فوری طور پر تین طلاق کے معاملہ میں آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کی اتوار کی میٹنگ میں فیصلہ لیا جاچکا ہے۔

    فوری طور پر تین طلاق کے معاملہ میں آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کی اتوار کی میٹنگ میں فیصلہ لیا جاچکا ہے۔

  •  بورڈ کے رکن کمال فاروقی کا کہنا ہے کہ فیصلہ کے تحت فوری طور پر تین طلاق بولنے والے شخص کا سماجی بائیکاٹ کیا جائے گا۔

    بورڈ کے رکن کمال فاروقی کا کہنا ہے کہ فیصلہ کے تحت فوری طور پر تین طلاق بولنے والے شخص کا سماجی بائیکاٹ کیا جائے گا۔

  •  جس طرح سے پہلے گاؤں اور برادری کی پنچایت میں سماجی بائیکاٹ کا فیصلہ لیا جاتا تھا، اسی طرح فوری طور پر تین طلاق بولنے والوں کے خلاف یہ فیصلہ لیا جائے گا۔

    جس طرح سے پہلے گاؤں اور برادری کی پنچایت میں سماجی بائیکاٹ کا فیصلہ لیا جاتا تھا، اسی طرح فوری طور پر تین طلاق بولنے والوں کے خلاف یہ فیصلہ لیا جائے گا۔

  • بورڈ کے ایک دوسرے رکن مولانا خالد رشید فرنگی محلی نے بتایا کہ جلد ہی بورڈ کی طرف سے لئے گئے فیصلہ کی کاپی مقامی سطح پر تمام مولانا، مفتی، قاضی اور مساجد کے امام صاحب کو بھیج دی جائے گی۔

    بورڈ کے ایک دوسرے رکن مولانا خالد رشید فرنگی محلی نے بتایا کہ جلد ہی بورڈ کی طرف سے لئے گئے فیصلہ کی کاپی مقامی سطح پر تمام مولانا، مفتی، قاضی اور مساجد کے امام صاحب کو بھیج دی جائے گی۔

  •  ان سب کو حق ہوگا کہ یہ معاملے کو سننے کے بعد لڑکی فریق کو بتا سکیں کہ ہاں اب مجرم لڑکے کے خلاف سماجی بائیکاٹ کا اعلان کیا جا سکتا ہے۔

    ان سب کو حق ہوگا کہ یہ معاملے کو سننے کے بعد لڑکی فریق کو بتا سکیں کہ ہاں اب مجرم لڑکے کے خلاف سماجی بائیکاٹ کا اعلان کیا جا سکتا ہے۔

  • file photo

    file photo

  • آگرہ شہر مفتی عبدالقدوس کے مطابق کہ اگر ہمارے پاس لڑکی فریق کوئی تحریر لے کر آتا ہے کہ اس کی بیٹی یا بہن کے شوہر نے فوری طور پر تین طلاق دیا ہے اور یہ بات تحریر سے ثابت بھی ہوجاتی ہے تو شوہر کے سماجی بائیکاٹ کا فتوی بھی دیا جاسکتا ہے۔

    آگرہ شہر مفتی عبدالقدوس کے مطابق کہ اگر ہمارے پاس لڑکی فریق کوئی تحریر لے کر آتا ہے کہ اس کی بیٹی یا بہن کے شوہر نے فوری طور پر تین طلاق دیا ہے اور یہ بات تحریر سے ثابت بھی ہوجاتی ہے تو شوہر کے سماجی بائیکاٹ کا فتوی بھی دیا جاسکتا ہے۔

  • فوری طور پر تین طلاق کے معاملہ میں آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کی اتوار کی میٹنگ میں فیصلہ لیا جاچکا ہے۔
  •  بورڈ کے رکن کمال فاروقی کا کہنا ہے کہ فیصلہ کے تحت فوری طور پر تین طلاق بولنے والے شخص کا سماجی بائیکاٹ کیا جائے گا۔
  •  جس طرح سے پہلے گاؤں اور برادری کی پنچایت میں سماجی بائیکاٹ کا فیصلہ لیا جاتا تھا، اسی طرح فوری طور پر تین طلاق بولنے والوں کے خلاف یہ فیصلہ لیا جائے گا۔
  • بورڈ کے ایک دوسرے رکن مولانا خالد رشید فرنگی محلی نے بتایا کہ جلد ہی بورڈ کی طرف سے لئے گئے فیصلہ کی کاپی مقامی سطح پر تمام مولانا، مفتی، قاضی اور مساجد کے امام صاحب کو بھیج دی جائے گی۔
  •  ان سب کو حق ہوگا کہ یہ معاملے کو سننے کے بعد لڑکی فریق کو بتا سکیں کہ ہاں اب مجرم لڑکے کے خلاف سماجی بائیکاٹ کا اعلان کیا جا سکتا ہے۔
  • file photo
  • آگرہ شہر مفتی عبدالقدوس کے مطابق کہ اگر ہمارے پاس لڑکی فریق کوئی تحریر لے کر آتا ہے کہ اس کی بیٹی یا بہن کے شوہر نے فوری طور پر تین طلاق دیا ہے اور یہ بات تحریر سے ثابت بھی ہوجاتی ہے تو شوہر کے سماجی بائیکاٹ کا فتوی بھی دیا جاسکتا ہے۔

تازہ ترین تصاویر