Live Results Assembly Elections 2018

مالیگاؤں : مسلم خواتین نے شروع کی تحریک برائے شراب بندی، ووٹنگ کے ذریعہ ہوگا فیصلہ

Dec 27, 2017 10:54 PM IST
1 of 7
  • شراب ایک سماجی برائی، گھروں اور خاندانوں کی عزت و وقار کے ساتھ ان کی دولت  نگل کر کنگال کر دینے والی شے ہے۔ اس سماجی برائی کو اپنےاطراف سے ختم کرنے کے لئےمالیگاؤں شہر کے وارڈ نمبر 12 کی رہنے والی خواتین نے تحریک برائے شراب بندی شروع کی ہے۔ اس تحریک کےذریعے قانون کےمطابق اس علاقہ میں ووٹنگ کی جائے گی۔ 50 فیصدی سے زیادہ ووٹ اگر ‘‘گری ہوئی بوتل’’ کو ملی تو اس علاقہ کی ساری شراب کی دکانیں بند کرائی جائیں گی۔

    شراب ایک سماجی برائی، گھروں اور خاندانوں کی عزت و وقار کے ساتھ ان کی دولت نگل کر کنگال کر دینے والی شے ہے۔ اس سماجی برائی کو اپنےاطراف سے ختم کرنے کے لئےمالیگاؤں شہر کے وارڈ نمبر 12 کی رہنے والی خواتین نے تحریک برائے شراب بندی شروع کی ہے۔ اس تحریک کےذریعے قانون کےمطابق اس علاقہ میں ووٹنگ کی جائے گی۔ 50 فیصدی سے زیادہ ووٹ اگر ‘‘گری ہوئی بوتل’’ کو ملی تو اس علاقہ کی ساری شراب کی دکانیں بند کرائی جائیں گی۔

  • مالیگاؤں میونسپل کے وارڈ نمبر 12 میں 4  شراب خانے ہیں۔ 3 دیسی اور ایک انگریزی شراب کی دکان ہے۔ اس وارڈ میں ایک تاڑی کا سینٹر بھی ہے۔

    مالیگاؤں میونسپل کے وارڈ نمبر 12 میں 4 شراب خانے ہیں۔ 3 دیسی اور ایک انگریزی شراب کی دکان ہے۔ اس وارڈ میں ایک تاڑی کا سینٹر بھی ہے۔

  •  اس علاقے میں 90 فیصدی سے زیادہ آبادی مسلمانوں کی ہے۔

    اس علاقے میں 90 فیصدی سے زیادہ آبادی مسلمانوں کی ہے۔

  • ان دکانوں کی وجہ سے نوجوان اورمزدور طبقہ شراب کی لت میں مبتلا ہو رہا ہے۔ اسلئے علاقہ کی خواتین نے مل کر تحریک برائے شراب بندی جوخالص عوامی تحریک ہے، شروع کی ہے۔

    ان دکانوں کی وجہ سے نوجوان اورمزدور طبقہ شراب کی لت میں مبتلا ہو رہا ہے۔ اسلئے علاقہ کی خواتین نے مل کر تحریک برائے شراب بندی جوخالص عوامی تحریک ہے، شروع کی ہے۔

  • ممبئی شراب بندی قانون 1949 کے تحت خواتین مخصوص مخالفت کی رائے الیکشن میںاس کے لیے ووٹ کرتی ہیں کہ شراب خانے قائم رہیں یا ہمیشہ کے لئے بند کردئیے جائیں، ؟ اس الیکشن میں دو نشانیوں پر ووٹر خواتین کو سیدھی رکھی ہوئی بوتل (یعنی شراب خانے کی حمایت میں) اور گری ہوئی بوتل (شراب خانے کی مخالفت میں) ووٹ دینا ہوتا ہے۔

    ممبئی شراب بندی قانون 1949 کے تحت خواتین مخصوص مخالفت کی رائے الیکشن میںاس کے لیے ووٹ کرتی ہیں کہ شراب خانے قائم رہیں یا ہمیشہ کے لئے بند کردئیے جائیں، ؟ اس الیکشن میں دو نشانیوں پر ووٹر خواتین کو سیدھی رکھی ہوئی بوتل (یعنی شراب خانے کی حمایت میں) اور گری ہوئی بوتل (شراب خانے کی مخالفت میں) ووٹ دینا ہوتا ہے۔

  •  اگرگری ہوئی بوتل پر 50 فیصدی سے ایک ووٹ بھی زیادہ پڑتا ہے ، تو اُسی دن سےاس علاقہ کے شراب خانے ہمیشہ کے لئے بند کردئیے جاتے ہیں۔

    اگرگری ہوئی بوتل پر 50 فیصدی سے ایک ووٹ بھی زیادہ پڑتا ہے ، تو اُسی دن سےاس علاقہ کے شراب خانے ہمیشہ کے لئے بند کردئیے جاتے ہیں۔

  • مالیگاؤں شہرکی مسلم خواتین کا یہ قدم پورے ملک کی خواتین کے لئے ایک مشعل راہ ثابت ہو سکتا ہے۔(تصاویر : ای ٹی وی )۔

    مالیگاؤں شہرکی مسلم خواتین کا یہ قدم پورے ملک کی خواتین کے لئے ایک مشعل راہ ثابت ہو سکتا ہے۔(تصاویر : ای ٹی وی )۔

  • مالیگاؤں میونسپل کے وارڈ نمبر 12 میں 4  شراب خانے ہیں۔ 3 دیسی اور ایک انگریزی شراب کی دکان ہے۔ اس وارڈ میں ایک تاڑی کا سینٹر بھی ہے۔
  •  اس علاقے میں 90 فیصدی سے زیادہ آبادی مسلمانوں کی ہے۔
  • ان دکانوں کی وجہ سے نوجوان اورمزدور طبقہ شراب کی لت میں مبتلا ہو رہا ہے۔ اسلئے علاقہ کی خواتین نے مل کر تحریک برائے شراب بندی جوخالص عوامی تحریک ہے، شروع کی ہے۔
  • ممبئی شراب بندی قانون 1949 کے تحت خواتین مخصوص مخالفت کی رائے الیکشن میںاس کے لیے ووٹ کرتی ہیں کہ شراب خانے قائم رہیں یا ہمیشہ کے لئے بند کردئیے جائیں، ؟ اس الیکشن میں دو نشانیوں پر ووٹر خواتین کو سیدھی رکھی ہوئی بوتل (یعنی شراب خانے کی حمایت میں) اور گری ہوئی بوتل (شراب خانے کی مخالفت میں) ووٹ دینا ہوتا ہے۔
  •  اگرگری ہوئی بوتل پر 50 فیصدی سے ایک ووٹ بھی زیادہ پڑتا ہے ، تو اُسی دن سےاس علاقہ کے شراب خانے ہمیشہ کے لئے بند کردئیے جاتے ہیں۔
  • مالیگاؤں شہرکی مسلم خواتین کا یہ قدم پورے ملک کی خواتین کے لئے ایک مشعل راہ ثابت ہو سکتا ہے۔(تصاویر : ای ٹی وی )۔

تازہ ترین تصاویر