چار ماہ بعد بھی جے این یو طالب علم نجیب کا نہیں مل پایا کوئی سراغ ، اورنگ آباد میں شدید احتجاج

Mar 02, 2017 10:58 PM IST
1 of 6
  • جے این یو طالب علم نجیب احمد کی پراسرار گمشدگی کے خلاف جماعت اسلامی ہند کی طلبہ تنظیم ایس آئی او نے اورنگ آباد میں شدید مظاہرہ کیا اور نجیب معاملہ کی ہائی کورٹ کی نگرانی میں عدالتی جانچ کا مطالبہ کیا ہے ۔ ساتھ ہی ساتھ ایک مقررہ وقت میں جانچ مکمل کرنے اور قصور واروں کو کیفرکردار تک پہنچانے کا بھی مطالبہ کیا ۔

    جے این یو طالب علم نجیب احمد کی پراسرار گمشدگی کے خلاف جماعت اسلامی ہند کی طلبہ تنظیم ایس آئی او نے اورنگ آباد میں شدید مظاہرہ کیا اور نجیب معاملہ کی ہائی کورٹ کی نگرانی میں عدالتی جانچ کا مطالبہ کیا ہے ۔ ساتھ ہی ساتھ ایک مقررہ وقت میں جانچ مکمل کرنے اور قصور واروں کو کیفرکردار تک پہنچانے کا بھی مطالبہ کیا ۔

  •  نجیب احمد گمشدگی معاملہ میں پولیس کے رول پر بھی سوالات اٹھائے جارہے ہیں۔ طلبہ تنظیموں کے لیے نجیب احمد فرقہ وارنہ عفریت کے خلاف ایک علامت بن گیا ہے۔ یہ مسئلہ اسی وقت حل ہوسکتا ہے جب نجیب کا کوئی سراغ ملے ، لیکن حکومت اور پولیس کی خاموشی سوالات کو جنم دے رہی ہے۔

    نجیب احمد گمشدگی معاملہ میں پولیس کے رول پر بھی سوالات اٹھائے جارہے ہیں۔ طلبہ تنظیموں کے لیے نجیب احمد فرقہ وارنہ عفریت کے خلاف ایک علامت بن گیا ہے۔ یہ مسئلہ اسی وقت حل ہوسکتا ہے جب نجیب کا کوئی سراغ ملے ، لیکن حکومت اور پولیس کی خاموشی سوالات کو جنم دے رہی ہے۔

  •  جے این یو میں اسکول آف بائیولوجی کے ریسرچ اسٹوڈنٹس نجیب احمد پچھلےسال پندرہ اکتوبرسے پراسرار طور پر لاپتہ ہے۔

    جے این یو میں اسکول آف بائیولوجی کے ریسرچ اسٹوڈنٹس نجیب احمد پچھلےسال پندرہ اکتوبرسے پراسرار طور پر لاپتہ ہے۔

  • پچھلے چار مہینوں سے لاپتہ نجیب احمد کا سراغ لگانے کے معاملے میں یوں تو دہلی پولیس کے مطابق اس نے کوئی کسر نہیں چھوڑرکھی ہے ، لیکن اس کے ہاتھ اب تک کوئی سراغ نہیں لگا ہے۔ نجیب کی گمشدگی کو لے کر طلبہ تنظیموں کے احتجاج کا سلسلہ بھی بدستور جاری ہے ۔

    پچھلے چار مہینوں سے لاپتہ نجیب احمد کا سراغ لگانے کے معاملے میں یوں تو دہلی پولیس کے مطابق اس نے کوئی کسر نہیں چھوڑرکھی ہے ، لیکن اس کے ہاتھ اب تک کوئی سراغ نہیں لگا ہے۔ نجیب کی گمشدگی کو لے کر طلبہ تنظیموں کے احتجاج کا سلسلہ بھی بدستور جاری ہے ۔

  • جماعت اسلامی ہند کی طلبہ ونگ نجیب کی پراسرار گمشدگی کولے کر  حکومت کے خلاف ماہ مزاحمت منارہی ہے، جس کے تحت ملک کے مختلف شہروں میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے ۔اورنگ آباد میں بھی ایس آئی او نے احتجاجی مظاہرہ کیا اور نجیب معاملہ کی عدالتی جانچ کا مطالبہ کیا ۔

    جماعت اسلامی ہند کی طلبہ ونگ نجیب کی پراسرار گمشدگی کولے کر حکومت کے خلاف ماہ مزاحمت منارہی ہے، جس کے تحت ملک کے مختلف شہروں میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے ۔اورنگ آباد میں بھی ایس آئی او نے احتجاجی مظاہرہ کیا اور نجیب معاملہ کی عدالتی جانچ کا مطالبہ کیا ۔

  • ایس آئی او نے تعلیمی اداروں میں اقلیتوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے قانون سازی پر بھی زور دیا۔ طلبہ تنظیم نے سوال اٹھایا کہ نجیب مارپیٹ معاملہ میں اے بی وی پی کا رول سامنے آیا ہے۔ اس کے گواہ بھی موجود ہیں ، اس کے باوجود سچ سامنے کیوں نہیں آرہا ہے ۔ ایس آئی او کا کہنا ہے کہ بات صرف ایک نجیب کی نہیں ہے بلکہ ملک بھرکے تعلیمی اداروں میں اقلیتی طلبہ کو نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔

    ایس آئی او نے تعلیمی اداروں میں اقلیتوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے قانون سازی پر بھی زور دیا۔ طلبہ تنظیم نے سوال اٹھایا کہ نجیب مارپیٹ معاملہ میں اے بی وی پی کا رول سامنے آیا ہے۔ اس کے گواہ بھی موجود ہیں ، اس کے باوجود سچ سامنے کیوں نہیں آرہا ہے ۔ ایس آئی او کا کہنا ہے کہ بات صرف ایک نجیب کی نہیں ہے بلکہ ملک بھرکے تعلیمی اداروں میں اقلیتی طلبہ کو نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔

  •  نجیب احمد گمشدگی معاملہ میں پولیس کے رول پر بھی سوالات اٹھائے جارہے ہیں۔ طلبہ تنظیموں کے لیے نجیب احمد فرقہ وارنہ عفریت کے خلاف ایک علامت بن گیا ہے۔ یہ مسئلہ اسی وقت حل ہوسکتا ہے جب نجیب کا کوئی سراغ ملے ، لیکن حکومت اور پولیس کی خاموشی سوالات کو جنم دے رہی ہے۔
  •  جے این یو میں اسکول آف بائیولوجی کے ریسرچ اسٹوڈنٹس نجیب احمد پچھلےسال پندرہ اکتوبرسے پراسرار طور پر لاپتہ ہے۔
  • پچھلے چار مہینوں سے لاپتہ نجیب احمد کا سراغ لگانے کے معاملے میں یوں تو دہلی پولیس کے مطابق اس نے کوئی کسر نہیں چھوڑرکھی ہے ، لیکن اس کے ہاتھ اب تک کوئی سراغ نہیں لگا ہے۔ نجیب کی گمشدگی کو لے کر طلبہ تنظیموں کے احتجاج کا سلسلہ بھی بدستور جاری ہے ۔
  • جماعت اسلامی ہند کی طلبہ ونگ نجیب کی پراسرار گمشدگی کولے کر  حکومت کے خلاف ماہ مزاحمت منارہی ہے، جس کے تحت ملک کے مختلف شہروں میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے ۔اورنگ آباد میں بھی ایس آئی او نے احتجاجی مظاہرہ کیا اور نجیب معاملہ کی عدالتی جانچ کا مطالبہ کیا ۔
  • ایس آئی او نے تعلیمی اداروں میں اقلیتوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے قانون سازی پر بھی زور دیا۔ طلبہ تنظیم نے سوال اٹھایا کہ نجیب مارپیٹ معاملہ میں اے بی وی پی کا رول سامنے آیا ہے۔ اس کے گواہ بھی موجود ہیں ، اس کے باوجود سچ سامنے کیوں نہیں آرہا ہے ۔ ایس آئی او کا کہنا ہے کہ بات صرف ایک نجیب کی نہیں ہے بلکہ ملک بھرکے تعلیمی اداروں میں اقلیتی طلبہ کو نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔

تازہ ترین تصاویر