لکھنو پیس ڈائیلاگ : ایک دوسرے مذاہب کو سمجھ کر قریب لانے کی ضرورت پر زور

Dec 14, 2017 10:16 PM IST
1 of 10
  • دنیا کو نفرت کی نہیں محبت اور اخوت کی ضرورت ہے۔ ایک دوسرے مذاہب کو سمجھ کرلوگوں کو قریب لانے کی ضرورت ہے۔ ان خیالات کا اظہارپیس ڈائیلاگ کے عنوان سے منعقدہ کانفرنس میں کیا گیا ۔ اس اہم کانفرنس میں مختلف شعبہ ہائےحیات کی ممتاز اورنمائندہ شخصیات نے شرکت کی۔

    دنیا کو نفرت کی نہیں محبت اور اخوت کی ضرورت ہے۔ ایک دوسرے مذاہب کو سمجھ کرلوگوں کو قریب لانے کی ضرورت ہے۔ ان خیالات کا اظہارپیس ڈائیلاگ کے عنوان سے منعقدہ کانفرنس میں کیا گیا ۔ اس اہم کانفرنس میں مختلف شعبہ ہائےحیات کی ممتاز اورنمائندہ شخصیات نے شرکت کی۔

  • سچ تو یہی ہے کہ اب نئی نسل کو امن کے قیام کی ذمہ داریاں سونپ کر ہی آنے والے وقت کو بہتر وخوشگوار بنایا جا سکتا ہے۔

    سچ تو یہی ہے کہ اب نئی نسل کو امن کے قیام کی ذمہ داریاں سونپ کر ہی آنے والے وقت کو بہتر وخوشگوار بنایا جا سکتا ہے۔

  • ایک ایسا ماحول فراہم کیا جا سکتا ہے ، جس میں ہندوستان کی دیرینہ تہذیب کو زندہ کیاجاسکے۔ امن اورمحبت کو پروان چڑھایا جا سکے۔

    ایک ایسا ماحول فراہم کیا جا سکتا ہے ، جس میں ہندوستان کی دیرینہ تہذیب کو زندہ کیاجاسکے۔ امن اورمحبت کو پروان چڑھایا جا سکے۔

  • اکثر وبیشتر یہ دیکھا گیا ہے کہ سماج میں بڑھتی خرابیوں کی ذمہ داری مذہبی لوگ اہل سیاست پر تھوپ دیتے ہیں۔

    اکثر وبیشتر یہ دیکھا گیا ہے کہ سماج میں بڑھتی خرابیوں کی ذمہ داری مذہبی لوگ اہل سیاست پر تھوپ دیتے ہیں۔

  • جبکہ ارباب سیاست یہ کہتے ہیں کہ موجودہ خرابیوں کے لئے وہ مذہبی لوگ ذمہ دار ہیں جو مذہب کے نام پر لوگوں کا استحصال کر رہے ہیں۔

    جبکہ ارباب سیاست یہ کہتے ہیں کہ موجودہ خرابیوں کے لئے وہ مذہبی لوگ ذمہ دار ہیں جو مذہب کے نام پر لوگوں کا استحصال کر رہے ہیں۔

  •  لیکن خاص بات یہ ہے کہ اس کانفرنس میں ارباب سیاست اور مذہبی رہنمائوں دونوں نے ہی اپنی خامیوں اورغلطیوں کا اعتراف کرتے ہوئے اصلاح کرنے کا عہد کیا۔

    لیکن خاص بات یہ ہے کہ اس کانفرنس میں ارباب سیاست اور مذہبی رہنمائوں دونوں نے ہی اپنی خامیوں اورغلطیوں کا اعتراف کرتے ہوئے اصلاح کرنے کا عہد کیا۔

  • کانفرنس میں شرکت کرتے ہوئے بی جے پی لیڈر ورون گاندھی

    کانفرنس میں شرکت کرتے ہوئے بی جے پی لیڈر ورون گاندھی

  • کانفرنس میں شرکت کرتی ہوئی شبانہ اعظمی

    کانفرنس میں شرکت کرتی ہوئی شبانہ اعظمی

  •  کانفرنس میں مختلف شعبہ ہائےحیات کی ممتاز اورنمائندہ شخصیات نے شرکت کی۔

    کانفرنس میں مختلف شعبہ ہائےحیات کی ممتاز اورنمائندہ شخصیات نے شرکت کی۔

  •  کانفرنس میں مختلف شعبہ ہائےحیات کی ممتاز اورنمائندہ شخصیات نے شرکت کی۔

    کانفرنس میں مختلف شعبہ ہائےحیات کی ممتاز اورنمائندہ شخصیات نے شرکت کی۔

  • سچ تو یہی ہے کہ اب نئی نسل کو امن کے قیام کی ذمہ داریاں سونپ کر ہی آنے والے وقت کو بہتر وخوشگوار بنایا جا سکتا ہے۔
  • ایک ایسا ماحول فراہم کیا جا سکتا ہے ، جس میں ہندوستان کی دیرینہ تہذیب کو زندہ کیاجاسکے۔ امن اورمحبت کو پروان چڑھایا جا سکے۔
  • اکثر وبیشتر یہ دیکھا گیا ہے کہ سماج میں بڑھتی خرابیوں کی ذمہ داری مذہبی لوگ اہل سیاست پر تھوپ دیتے ہیں۔
  • جبکہ ارباب سیاست یہ کہتے ہیں کہ موجودہ خرابیوں کے لئے وہ مذہبی لوگ ذمہ دار ہیں جو مذہب کے نام پر لوگوں کا استحصال کر رہے ہیں۔
  •  لیکن خاص بات یہ ہے کہ اس کانفرنس میں ارباب سیاست اور مذہبی رہنمائوں دونوں نے ہی اپنی خامیوں اورغلطیوں کا اعتراف کرتے ہوئے اصلاح کرنے کا عہد کیا۔
  • کانفرنس میں شرکت کرتے ہوئے بی جے پی لیڈر ورون گاندھی
  • کانفرنس میں شرکت کرتی ہوئی شبانہ اعظمی
  •  کانفرنس میں مختلف شعبہ ہائےحیات کی ممتاز اورنمائندہ شخصیات نے شرکت کی۔
  •  کانفرنس میں مختلف شعبہ ہائےحیات کی ممتاز اورنمائندہ شخصیات نے شرکت کی۔

تازہ ترین تصاویر