کشمیر، تین طلاق اور ماب لنچنگ سے لے کر نیو انڈیا تک ، پڑھیں  وزیر اعظم کی تقریر کی 10 بڑی باتیں 

Aug 15, 2017 01:07 PM IST
1 of 11
  • آزادی کی 70 ویں سالگرہ پر وزیر اعظم مودی نے لال قلعہ کی فصیل سے ملک کو خطاب کیا۔ اس دوران انہوں نے ملک کو یوم آزادی مبارک دی۔ یوپی کے گورکھپور میں اسپتال میں ہوئی موت اور ہماچل میں قدرتی آفت کے نتیجے میں موت پر تعزیت کا اظہار کرنے کے ساتھ انہوں نے اپنے خطاب کا آغاز کیا۔ انہوں نے عقیدے کے نام پر قتل و غارت گری ، جموں و کشمیر میں امن و امان اور تین طلاق کے مسئلہ کا بھی تذکرہ کیا۔ آئیے ہم آپ کو بتاتے ہیں وزیر اعلی کی تقریر کی 10 اہم باتیں ۔

    آزادی کی 70 ویں سالگرہ پر وزیر اعظم مودی نے لال قلعہ کی فصیل سے ملک کو خطاب کیا۔ اس دوران انہوں نے ملک کو یوم آزادی مبارک دی۔ یوپی کے گورکھپور میں اسپتال میں ہوئی موت اور ہماچل میں قدرتی آفت کے نتیجے میں موت پر تعزیت کا اظہار کرنے کے ساتھ انہوں نے اپنے خطاب کا آغاز کیا۔ انہوں نے عقیدے کے نام پر قتل و غارت گری ، جموں و کشمیر میں امن و امان اور تین طلاق کے مسئلہ کا بھی تذکرہ کیا۔ آئیے ہم آپ کو بتاتے ہیں وزیر اعلی کی تقریر کی 10 اہم باتیں ۔

  • کشمیر میں گولی، گالی سے نہیں گلے لگانے سے آئے گی تبدیلی  :وزیر اعظم نے اپنی تقریر میں کہا کہ کشمیر میں حالات بدل رہے ہیں۔ وہاں کی ترقی حکومت کی ترجیح میں ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ وہاں گالی اور گولی سے نہیں، بلکہ گلے لگانے سے تبدیلی آئے گی ۔ اس کے لئے سب کشمیریوں کو آگے آنا ہوگا۔

    کشمیر میں گولی، گالی سے نہیں گلے لگانے سے آئے گی تبدیلی :وزیر اعظم نے اپنی تقریر میں کہا کہ کشمیر میں حالات بدل رہے ہیں۔ وہاں کی ترقی حکومت کی ترجیح میں ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ وہاں گالی اور گولی سے نہیں، بلکہ گلے لگانے سے تبدیلی آئے گی ۔ اس کے لئے سب کشمیریوں کو آگے آنا ہوگا۔

  • عقیدے کے نام پر تشدد برداشت نہیں :وزیر اعظم نے عقیدے کے نام پر جاری قتل و غارت گری کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ اسے کسی بھی قیمت پر برداشت نہیں کیا جائے گا۔ ان کا یہ بیان گئوركشكوں کو طرف اشارہ کر رہا ہے۔ گزشتہ چند دنوں میں گئوركشا کے نام پر قتل و غارت گری کا بازار گرم ہوا ہے ۔

    عقیدے کے نام پر تشدد برداشت نہیں :وزیر اعظم نے عقیدے کے نام پر جاری قتل و غارت گری کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ اسے کسی بھی قیمت پر برداشت نہیں کیا جائے گا۔ ان کا یہ بیان گئوركشكوں کو طرف اشارہ کر رہا ہے۔ گزشتہ چند دنوں میں گئوركشا کے نام پر قتل و غارت گری کا بازار گرم ہوا ہے ۔

  • تین طلاق :وزیر اعظم نے تین طلاق کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ اس کے خلاف مسلم خواتین آگے آئیں۔ حکومت کی پہل پر تین طلاق کی متاثرہ خواتین آگے آئیں اور تحریک چلائی۔ حکومت ان کے ساتھ کھڑی ہے۔

    تین طلاق :وزیر اعظم نے تین طلاق کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ اس کے خلاف مسلم خواتین آگے آئیں۔ حکومت کی پہل پر تین طلاق کی متاثرہ خواتین آگے آئیں اور تحریک چلائی۔ حکومت ان کے ساتھ کھڑی ہے۔

  • سرجیکل اسٹرئیک :وزیراعظم نے کہا کہ سرجیکل اسٹرائیک سے دنیا نے ملک کا لوہا تسلیم کیا۔ ہماری فوج نے اپنی طاقت کا مظاہرہ کیا ہے۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں دنیا کے کئی ملک ہمارے ساتھ آئے ہیں۔ بہت سے نئے ممالک نے تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔ اس سے ہمیں ایک نئی مضبوطی ملی ہے۔

    سرجیکل اسٹرئیک :وزیراعظم نے کہا کہ سرجیکل اسٹرائیک سے دنیا نے ملک کا لوہا تسلیم کیا۔ ہماری فوج نے اپنی طاقت کا مظاہرہ کیا ہے۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں دنیا کے کئی ملک ہمارے ساتھ آئے ہیں۔ بہت سے نئے ممالک نے تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔ اس سے ہمیں ایک نئی مضبوطی ملی ہے۔

  • نوٹ بندي سے ملک کو فائدہ ہوا :وزیراعظم نے کہا کہ نوٹ بندي ملک میں تاریخی تبدیلی لے کر آئی ۔ لوگ ایمانداری کی طرف آگے بڑھ رہے ہیں۔ حکومت بے ایمانوں کے خلاف کارروائی کر رہی ہے۔ نوٹ بندي کے بعد ڈیجیٹل لین دین میں 35 فیصد کا اضافہ ہوا۔ نوٹ بندي کے دوران لوگوں نے صبر سے کام لیا اور ملک کی ترقی میں جرات کا ثبوت دیا۔

    نوٹ بندي سے ملک کو فائدہ ہوا :وزیراعظم نے کہا کہ نوٹ بندي ملک میں تاریخی تبدیلی لے کر آئی ۔ لوگ ایمانداری کی طرف آگے بڑھ رہے ہیں۔ حکومت بے ایمانوں کے خلاف کارروائی کر رہی ہے۔ نوٹ بندي کے بعد ڈیجیٹل لین دین میں 35 فیصد کا اضافہ ہوا۔ نوٹ بندي کے دوران لوگوں نے صبر سے کام لیا اور ملک کی ترقی میں جرات کا ثبوت دیا۔

  • کالے دھن والوں کے خلاف کارروائی :وزیر اعظم نے کہا کہ کچھ لوگ ٹیکس کے بارے میں جانتے تک نہیں تھے۔ انہوں نے اپنی پوری زندگی ٹیکس نہیں دیا۔ حکومت نے ان پر لگام لگانے کا کام کیا۔ پونے دو لاکھ شیل کمپنیوں کا رجسٹریشن بند کیا۔ اتنا ہی نہیں 8 سو کروڑ کی غیر قانونی جائیداد ضبط ہوئی۔ ملک میں تین لاکھ کمپنیاں صرف شیل کمپنیاں ہیں اور حوالہ کاروبار کرتی ہیں۔ حکومت نے ان پر لگام لگایا۔ اس کے بعد دو لاکھ کروڑ تک کے کالے دھن کو بینک تک پہنچنا پڑا۔

    کالے دھن والوں کے خلاف کارروائی :وزیر اعظم نے کہا کہ کچھ لوگ ٹیکس کے بارے میں جانتے تک نہیں تھے۔ انہوں نے اپنی پوری زندگی ٹیکس نہیں دیا۔ حکومت نے ان پر لگام لگانے کا کام کیا۔ پونے دو لاکھ شیل کمپنیوں کا رجسٹریشن بند کیا۔ اتنا ہی نہیں 8 سو کروڑ کی غیر قانونی جائیداد ضبط ہوئی۔ ملک میں تین لاکھ کمپنیاں صرف شیل کمپنیاں ہیں اور حوالہ کاروبار کرتی ہیں۔ حکومت نے ان پر لگام لگایا۔ اس کے بعد دو لاکھ کروڑ تک کے کالے دھن کو بینک تک پہنچنا پڑا۔

  • سدرشندھاري سے چركھادھاري تک ـ:وزیر اعظم نے اپنی تقریر میں سدرشن چكردھاري کرشن سے چركھادھاري مہاتما گاندھی تک کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ملک کی ترقی انہی کے راستے پر ہو سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ارجن کو کرشن کا دیا پیغام یاد کیجئے۔ ملک کی ترقی کی رفتار میں کمی نہیں آئی ہے اور سال 2022 تک نیو انڈیا بنانے کا عہد کرنے کی ضرورت ہے۔

    سدرشندھاري سے چركھادھاري تک ـ:وزیر اعظم نے اپنی تقریر میں سدرشن چكردھاري کرشن سے چركھادھاري مہاتما گاندھی تک کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ملک کی ترقی انہی کے راستے پر ہو سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ارجن کو کرشن کا دیا پیغام یاد کیجئے۔ ملک کی ترقی کی رفتار میں کمی نہیں آئی ہے اور سال 2022 تک نیو انڈیا بنانے کا عہد کرنے کی ضرورت ہے۔

  • ریکارڈ فصل کی پیداوار :وزیر اعظم نے کہا کہ ملک میں اس سال ریکارڈ فصل کی پیداوار ہوئی ہے۔ دال کی پیداوار بھی ریکارڈ ہوئی ہے۔ 16 لاکھ ٹن دال حکومت نے خریدی ہے۔

    ریکارڈ فصل کی پیداوار :وزیر اعظم نے کہا کہ ملک میں اس سال ریکارڈ فصل کی پیداوار ہوئی ہے۔ دال کی پیداوار بھی ریکارڈ ہوئی ہے۔ 16 لاکھ ٹن دال حکومت نے خریدی ہے۔

  • نوجوانوں کو ملا روزگار :وزیر اعظم نے کہا کہ ان کی حکومت نے نوجوانوں کے لئے خاص کام کیا ہے۔ نوجوانوں کو ضمانت کے بغیر لون دیا ہے۔ وزیر اعظم کرنسی اسکیم سے کروڑوں نوجوان اپنے پیروں پر کھڑے ہوئے ہیں۔ اتنا ہی نہیں وہ دو تین لوگوں کو نوکری دینے کی پوزیشن میں پہنچ گئے ہیں۔

    نوجوانوں کو ملا روزگار :وزیر اعظم نے کہا کہ ان کی حکومت نے نوجوانوں کے لئے خاص کام کیا ہے۔ نوجوانوں کو ضمانت کے بغیر لون دیا ہے۔ وزیر اعظم کرنسی اسکیم سے کروڑوں نوجوان اپنے پیروں پر کھڑے ہوئے ہیں۔ اتنا ہی نہیں وہ دو تین لوگوں کو نوکری دینے کی پوزیشن میں پہنچ گئے ہیں۔

  • نیو انڈیا :وزیر اعظم نے ایک بار پھر کہا کہ سال 2022 تک ملک کو نیا ہندوستان بنانے کا عہد کرنے کی ضرورت ہے۔ آزادی کی 75 ویں سالگرہ پر ہمیں ایک نئی اونچائی پر پہنچنا ہے۔ نوجوان ہندوستان ایسا کرنے کے قابل ہے اور ہم ایسا کریں گے بھی، اس کے لئے عہدکرنے کی ضرورت ہے۔

    نیو انڈیا :وزیر اعظم نے ایک بار پھر کہا کہ سال 2022 تک ملک کو نیا ہندوستان بنانے کا عہد کرنے کی ضرورت ہے۔ آزادی کی 75 ویں سالگرہ پر ہمیں ایک نئی اونچائی پر پہنچنا ہے۔ نوجوان ہندوستان ایسا کرنے کے قابل ہے اور ہم ایسا کریں گے بھی، اس کے لئے عہدکرنے کی ضرورت ہے۔

  • کشمیر میں گولی، گالی سے نہیں گلے لگانے سے آئے گی تبدیلی  :وزیر اعظم نے اپنی تقریر میں کہا کہ کشمیر میں حالات بدل رہے ہیں۔ وہاں کی ترقی حکومت کی ترجیح میں ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ وہاں گالی اور گولی سے نہیں، بلکہ گلے لگانے سے تبدیلی آئے گی ۔ اس کے لئے سب کشمیریوں کو آگے آنا ہوگا۔
  • عقیدے کے نام پر تشدد برداشت نہیں :وزیر اعظم نے عقیدے کے نام پر جاری قتل و غارت گری کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ اسے کسی بھی قیمت پر برداشت نہیں کیا جائے گا۔ ان کا یہ بیان گئوركشكوں کو طرف اشارہ کر رہا ہے۔ گزشتہ چند دنوں میں گئوركشا کے نام پر قتل و غارت گری کا بازار گرم ہوا ہے ۔
  • تین طلاق :وزیر اعظم نے تین طلاق کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ اس کے خلاف مسلم خواتین آگے آئیں۔ حکومت کی پہل پر تین طلاق کی متاثرہ خواتین آگے آئیں اور تحریک چلائی۔ حکومت ان کے ساتھ کھڑی ہے۔
  • سرجیکل اسٹرئیک :وزیراعظم نے کہا کہ سرجیکل اسٹرائیک سے دنیا نے ملک کا لوہا تسلیم کیا۔ ہماری فوج نے اپنی طاقت کا مظاہرہ کیا ہے۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں دنیا کے کئی ملک ہمارے ساتھ آئے ہیں۔ بہت سے نئے ممالک نے تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔ اس سے ہمیں ایک نئی مضبوطی ملی ہے۔
  • نوٹ بندي سے ملک کو فائدہ ہوا :وزیراعظم نے کہا کہ نوٹ بندي ملک میں تاریخی تبدیلی لے کر آئی ۔ لوگ ایمانداری کی طرف آگے بڑھ رہے ہیں۔ حکومت بے ایمانوں کے خلاف کارروائی کر رہی ہے۔ نوٹ بندي کے بعد ڈیجیٹل لین دین میں 35 فیصد کا اضافہ ہوا۔ نوٹ بندي کے دوران لوگوں نے صبر سے کام لیا اور ملک کی ترقی میں جرات کا ثبوت دیا۔
  • کالے دھن والوں کے خلاف کارروائی :وزیر اعظم نے کہا کہ کچھ لوگ ٹیکس کے بارے میں جانتے تک نہیں تھے۔ انہوں نے اپنی پوری زندگی ٹیکس نہیں دیا۔ حکومت نے ان پر لگام لگانے کا کام کیا۔ پونے دو لاکھ شیل کمپنیوں کا رجسٹریشن بند کیا۔ اتنا ہی نہیں 8 سو کروڑ کی غیر قانونی جائیداد ضبط ہوئی۔ ملک میں تین لاکھ کمپنیاں صرف شیل کمپنیاں ہیں اور حوالہ کاروبار کرتی ہیں۔ حکومت نے ان پر لگام لگایا۔ اس کے بعد دو لاکھ کروڑ تک کے کالے دھن کو بینک تک پہنچنا پڑا۔
  • سدرشندھاري سے چركھادھاري تک ـ:وزیر اعظم نے اپنی تقریر میں سدرشن چكردھاري کرشن سے چركھادھاري مہاتما گاندھی تک کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ملک کی ترقی انہی کے راستے پر ہو سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ارجن کو کرشن کا دیا پیغام یاد کیجئے۔ ملک کی ترقی کی رفتار میں کمی نہیں آئی ہے اور سال 2022 تک نیو انڈیا بنانے کا عہد کرنے کی ضرورت ہے۔
  • ریکارڈ فصل کی پیداوار :وزیر اعظم نے کہا کہ ملک میں اس سال ریکارڈ فصل کی پیداوار ہوئی ہے۔ دال کی پیداوار بھی ریکارڈ ہوئی ہے۔ 16 لاکھ ٹن دال حکومت نے خریدی ہے۔
  • نوجوانوں کو ملا روزگار :وزیر اعظم نے کہا کہ ان کی حکومت نے نوجوانوں کے لئے خاص کام کیا ہے۔ نوجوانوں کو ضمانت کے بغیر لون دیا ہے۔ وزیر اعظم کرنسی اسکیم سے کروڑوں نوجوان اپنے پیروں پر کھڑے ہوئے ہیں۔ اتنا ہی نہیں وہ دو تین لوگوں کو نوکری دینے کی پوزیشن میں پہنچ گئے ہیں۔
  • نیو انڈیا :وزیر اعظم نے ایک بار پھر کہا کہ سال 2022 تک ملک کو نیا ہندوستان بنانے کا عہد کرنے کی ضرورت ہے۔ آزادی کی 75 ویں سالگرہ پر ہمیں ایک نئی اونچائی پر پہنچنا ہے۔ نوجوان ہندوستان ایسا کرنے کے قابل ہے اور ہم ایسا کریں گے بھی، اس کے لئے عہدکرنے کی ضرورت ہے۔

تازہ ترین تصاویر