رمضان کا مہینہ شروع ہوتے ہی اوکھلا، جامعہ نگر میں مہنگائی بے لگام، بازاروں کی رونق پھیکی

Jun 01, 2017 11:31 AM IST
1 of 5
  • رمضان کا مہینہ شروع ہوتے ہی یوں تو پورے ملک میں مہنگائی بے لگام ہو گئی ہے۔ تاہم مسلم علاقوں میں یہ مہنگائی کچھ زیادہ ہی ہے۔ بات کریں دلی کے مسلم اکثریتی علاقہ اوکھلا، جامعہ نگر کی تو یہاں پھلوں، کھجوروں، سبزیوں اور کھجلا پھینی کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں۔ ایسا لگتا ہے کہ منافع خوروں نے شاید یہ طے کر لیا ہے کہ پورے سال میں صرف اسی ایک مہینہ ہی میں پوری دولت کمانی ہے۔ یہاں مٹن، چکن اور دیگر اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں بھی بے تحاشا اضافہ ہوا ہے۔

    رمضان کا مہینہ شروع ہوتے ہی یوں تو پورے ملک میں مہنگائی بے لگام ہو گئی ہے۔ تاہم مسلم علاقوں میں یہ مہنگائی کچھ زیادہ ہی ہے۔ بات کریں دلی کے مسلم اکثریتی علاقہ اوکھلا، جامعہ نگر کی تو یہاں پھلوں، کھجوروں، سبزیوں اور کھجلا پھینی کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں۔ ایسا لگتا ہے کہ منافع خوروں نے شاید یہ طے کر لیا ہے کہ پورے سال میں صرف اسی ایک مہینہ ہی میں پوری دولت کمانی ہے۔ یہاں مٹن، چکن اور دیگر اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں بھی بے تحاشا اضافہ ہوا ہے۔

  • زبردست مہنگائی کی وجہ سے عام دنوں کے مقابلہ ان دنوں بازاروں میں خریداروں کی بھیڑ بھی کم نظر آ رہی  ہے اور روزہ افطار کے دوران دستر خوان پر جو رونق ہونی چاہئے وہ نہیں ہو پاتی ہے۔

    زبردست مہنگائی کی وجہ سے عام دنوں کے مقابلہ ان دنوں بازاروں میں خریداروں کی بھیڑ بھی کم نظر آ رہی ہے اور روزہ افطار کے دوران دستر خوان پر جو رونق ہونی چاہئے وہ نہیں ہو پاتی ہے۔

  • حالانکہ اشیائے خوردونوش کا رمضان کے مہینہ میں قدرے مہنگا ہو جانا کوئی نئی بات نہیں ہے، اس سے پہلے بھی کچھ ایسی ہی صورت حال رہی ہے۔ لیکن جب سے دلی میں عام آدمی پارٹی اور مرکز میں بی جے پی سرکار نے حکومت سنبھالی ہے تب سے مہنگائی نے عام انسان کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے ۔

    حالانکہ اشیائے خوردونوش کا رمضان کے مہینہ میں قدرے مہنگا ہو جانا کوئی نئی بات نہیں ہے، اس سے پہلے بھی کچھ ایسی ہی صورت حال رہی ہے۔ لیکن جب سے دلی میں عام آدمی پارٹی اور مرکز میں بی جے پی سرکار نے حکومت سنبھالی ہے تب سے مہنگائی نے عام انسان کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے ۔

  • ایک طرف تو مہنگائی آسمان چھو رہی ہے تو دوسری طرف لوگوں کو روزگار میسر نہیں۔ کاروبار بالکل ٹھپ ہیں ۔ البتہ جو لوگ برسر روزگار ہیں، انہیں بھی اس لئے پریشانی ہو رہی ہے کہ بڑھتی مہنگائی کے مقابلہ ان کی تنخواہیں اسی حساب سے نہیں بڑھ پا رہی ہیں۔ نتیجتاً، سماج کا متوسط طبقہ مہنگائی کی زد میں کچھ زیادہ ہی ہے ۔

    ایک طرف تو مہنگائی آسمان چھو رہی ہے تو دوسری طرف لوگوں کو روزگار میسر نہیں۔ کاروبار بالکل ٹھپ ہیں ۔ البتہ جو لوگ برسر روزگار ہیں، انہیں بھی اس لئے پریشانی ہو رہی ہے کہ بڑھتی مہنگائی کے مقابلہ ان کی تنخواہیں اسی حساب سے نہیں بڑھ پا رہی ہیں۔ نتیجتاً، سماج کا متوسط طبقہ مہنگائی کی زد میں کچھ زیادہ ہی ہے ۔

  •  اوکھلا میں عالم یہ ہے کہ دلی کے دیگر علاقوں کے مقابلہ یہاں مہنگے داموں میں سامان فروخت کیے جاتے ہیں۔ ان سے کوئی یہ معلوم کرنے والا نہیں ہے کہ آخر اور جگہوں کے مقابلہ یہاں سامان زیادہ مہنگے کیوں بیچے جاتے ہیں۔

    اوکھلا میں عالم یہ ہے کہ دلی کے دیگر علاقوں کے مقابلہ یہاں مہنگے داموں میں سامان فروخت کیے جاتے ہیں۔ ان سے کوئی یہ معلوم کرنے والا نہیں ہے کہ آخر اور جگہوں کے مقابلہ یہاں سامان زیادہ مہنگے کیوں بیچے جاتے ہیں۔

  • زبردست مہنگائی کی وجہ سے عام دنوں کے مقابلہ ان دنوں بازاروں میں خریداروں کی بھیڑ بھی کم نظر آ رہی  ہے اور روزہ افطار کے دوران دستر خوان پر جو رونق ہونی چاہئے وہ نہیں ہو پاتی ہے۔
  • حالانکہ اشیائے خوردونوش کا رمضان کے مہینہ میں قدرے مہنگا ہو جانا کوئی نئی بات نہیں ہے، اس سے پہلے بھی کچھ ایسی ہی صورت حال رہی ہے۔ لیکن جب سے دلی میں عام آدمی پارٹی اور مرکز میں بی جے پی سرکار نے حکومت سنبھالی ہے تب سے مہنگائی نے عام انسان کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے ۔
  • ایک طرف تو مہنگائی آسمان چھو رہی ہے تو دوسری طرف لوگوں کو روزگار میسر نہیں۔ کاروبار بالکل ٹھپ ہیں ۔ البتہ جو لوگ برسر روزگار ہیں، انہیں بھی اس لئے پریشانی ہو رہی ہے کہ بڑھتی مہنگائی کے مقابلہ ان کی تنخواہیں اسی حساب سے نہیں بڑھ پا رہی ہیں۔ نتیجتاً، سماج کا متوسط طبقہ مہنگائی کی زد میں کچھ زیادہ ہی ہے ۔
  •  اوکھلا میں عالم یہ ہے کہ دلی کے دیگر علاقوں کے مقابلہ یہاں مہنگے داموں میں سامان فروخت کیے جاتے ہیں۔ ان سے کوئی یہ معلوم کرنے والا نہیں ہے کہ آخر اور جگہوں کے مقابلہ یہاں سامان زیادہ مہنگے کیوں بیچے جاتے ہیں۔

تازہ ترین تصاویر