ماہ رمضان کی آمد کےساتھ ہی بھوپال میں مساجد کرنے لگیں اپنی تنگ دامنی کی شکایت ، بازاروں کی بھی بڑھی رونق

May 17, 2018 10:48 PM IST
1 of 6
  • ماہ رمضان کا اعلان ہوتے ہی بھوپال کی مسجدوں اور بازاروں کی رونق میں اضافہ ہوگیا ہے ۔ مسجدیں جہاں عام دنوں میں نمازیوں کا انتظار کرتی تھیں ، وہی رمضان کا اعلان ہوتے ہی مساجد اب اپنی تنگ دامنی کی شکایت کرنے لگی ہیں۔

    ماہ رمضان کا اعلان ہوتے ہی بھوپال کی مسجدوں اور بازاروں کی رونق میں اضافہ ہوگیا ہے ۔ مسجدیں جہاں عام دنوں میں نمازیوں کا انتظار کرتی تھیں ، وہی رمضان کا اعلان ہوتے ہی مساجد اب اپنی تنگ دامنی کی شکایت کرنے لگی ہیں۔

  • حالانکہ کل کچھ تاخیر سے رمضان کے چاند کا اعلان کیاگیا ، اس کے باوجود بھوپال جسے مسجدوں کا شہر کہا جاتا ہے ، وہاں پر مساجد میں نمازیوں کی اس قدر بھیڑ ہوگئی کہ مسجدیں نہ صرف اپنی تنگ دامنی کی شکایت کرنے لگیں بلکہ کچھ مقامات پر سڑکوں پر بھی نمام تراویح کا اہتمام کیا گیا۔

    حالانکہ کل کچھ تاخیر سے رمضان کے چاند کا اعلان کیاگیا ، اس کے باوجود بھوپال جسے مسجدوں کا شہر کہا جاتا ہے ، وہاں پر مساجد میں نمازیوں کی اس قدر بھیڑ ہوگئی کہ مسجدیں نہ صرف اپنی تنگ دامنی کی شکایت کرنے لگیں بلکہ کچھ مقامات پر سڑکوں پر بھی نمام تراویح کا اہتمام کیا گیا۔

  • ماہ رمضان میں اگر آپ نئے بھوپال میں جائیں گے تو آپ کو عام دنوں کے جیسے ہی حالات نظر آئیں گے ، لیکن قدیم بھوپال کے چوک بازار ،ندیم روڈ، اتوارہ بازار، جہانگیرآباد، ابراہیم پورہ اور چوک بازار کی رونق میں جس طرح سے اضافہ ہوا ہے ، وہ قابل دید ہے ۔

    ماہ رمضان میں اگر آپ نئے بھوپال میں جائیں گے تو آپ کو عام دنوں کے جیسے ہی حالات نظر آئیں گے ، لیکن قدیم بھوپال کے چوک بازار ،ندیم روڈ، اتوارہ بازار، جہانگیرآباد، ابراہیم پورہ اور چوک بازار کی رونق میں جس طرح سے اضافہ ہوا ہے ، وہ قابل دید ہے ۔

  •  بھوپال میں دستر خوان کو وسیع رکھنے کی راویت تو ہے ہی ، لیکن یہاں کے افطار کے دسترخوان پر جب تک انگور دانہ نہیں ہوتا تب تک بھوپال کا افطار دسترخوان مکمل نہیں ہوتا ہے۔ انگور دانوں کے لئے بھوپال میں کچھ خاص بازار لگائے گئے ہیں۔

    بھوپال میں دستر خوان کو وسیع رکھنے کی راویت تو ہے ہی ، لیکن یہاں کے افطار کے دسترخوان پر جب تک انگور دانہ نہیں ہوتا تب تک بھوپال کا افطار دسترخوان مکمل نہیں ہوتا ہے۔ انگور دانوں کے لئے بھوپال میں کچھ خاص بازار لگائے گئے ہیں۔

  • بھوپال میں ماہ رمضان میں نمازیوں کی کثرت سے علمائے دین خوش تو ہیں لیکن اسی کے ساتھ وہ امت مسلمہ سے اس بات کی بھی گزارش کر رہے ہیں کہ ایک ہفتہ میں نماز تراویح پڑھ کر باقی مہینہ نماز کو ترک نہ کریں ۔

    بھوپال میں ماہ رمضان میں نمازیوں کی کثرت سے علمائے دین خوش تو ہیں لیکن اسی کے ساتھ وہ امت مسلمہ سے اس بات کی بھی گزارش کر رہے ہیں کہ ایک ہفتہ میں نماز تراویح پڑھ کر باقی مہینہ نماز کو ترک نہ کریں ۔

  •  علمائے دین کا کہنا ہے کہ اس کا اہتمام پورے ذوق و شوق کے ساتھ پورے سال رکھیں ،تبھی اسلام کی تعلیم کا صحیح حق ادا ہو سکے گا۔

    علمائے دین کا کہنا ہے کہ اس کا اہتمام پورے ذوق و شوق کے ساتھ پورے سال رکھیں ،تبھی اسلام کی تعلیم کا صحیح حق ادا ہو سکے گا۔

  • حالانکہ کل کچھ تاخیر سے رمضان کے چاند کا اعلان کیاگیا ، اس کے باوجود بھوپال جسے مسجدوں کا شہر کہا جاتا ہے ، وہاں پر مساجد میں نمازیوں کی اس قدر بھیڑ ہوگئی کہ مسجدیں نہ صرف اپنی تنگ دامنی کی شکایت کرنے لگیں بلکہ کچھ مقامات پر سڑکوں پر بھی نمام تراویح کا اہتمام کیا گیا۔
  • ماہ رمضان میں اگر آپ نئے بھوپال میں جائیں گے تو آپ کو عام دنوں کے جیسے ہی حالات نظر آئیں گے ، لیکن قدیم بھوپال کے چوک بازار ،ندیم روڈ، اتوارہ بازار، جہانگیرآباد، ابراہیم پورہ اور چوک بازار کی رونق میں جس طرح سے اضافہ ہوا ہے ، وہ قابل دید ہے ۔
  •  بھوپال میں دستر خوان کو وسیع رکھنے کی راویت تو ہے ہی ، لیکن یہاں کے افطار کے دسترخوان پر جب تک انگور دانہ نہیں ہوتا تب تک بھوپال کا افطار دسترخوان مکمل نہیں ہوتا ہے۔ انگور دانوں کے لئے بھوپال میں کچھ خاص بازار لگائے گئے ہیں۔
  • بھوپال میں ماہ رمضان میں نمازیوں کی کثرت سے علمائے دین خوش تو ہیں لیکن اسی کے ساتھ وہ امت مسلمہ سے اس بات کی بھی گزارش کر رہے ہیں کہ ایک ہفتہ میں نماز تراویح پڑھ کر باقی مہینہ نماز کو ترک نہ کریں ۔
  •  علمائے دین کا کہنا ہے کہ اس کا اہتمام پورے ذوق و شوق کے ساتھ پورے سال رکھیں ،تبھی اسلام کی تعلیم کا صحیح حق ادا ہو سکے گا۔

تازہ ترین تصاویر