بھوپال : رنگ پنچمی کے تاریخی جلوس میں مسلمانوں نے بھی کی شرکت

Mar 17, 2017 07:27 PM IST
1 of 10
  • بھوپال میں رنگ پنچمی کا تہوارروایتی انداز میں سخت سیکورٹی انتظامات کے درمیان منایا گیا ۔رنگ پنچمی کے موقع پر بھوپال کے چوک بازار سے ہندو اتسو سمتی کے زیر اہتمام رنگ پنچمی کا جلوس نکالا گیا ۔ جلوس شہر کے مختلف راستوں سے ہوتا ہوا پیر گیٹ پر آکر ختم ہوا۔

    بھوپال میں رنگ پنچمی کا تہوارروایتی انداز میں سخت سیکورٹی انتظامات کے درمیان منایا گیا ۔رنگ پنچمی کے موقع پر بھوپال کے چوک بازار سے ہندو اتسو سمتی کے زیر اہتمام رنگ پنچمی کا جلوس نکالا گیا ۔ جلوس شہر کے مختلف راستوں سے ہوتا ہوا پیر گیٹ پر آکر ختم ہوا۔

  • جلوس جہاں جہاں سے نکلا ، وہاں روایتی انداز میں مسلم سماج کے لوگوں نے اس کا استقبال کیا ۔

    جلوس جہاں جہاں سے نکلا ، وہاں روایتی انداز میں مسلم سماج کے لوگوں نے اس کا استقبال کیا ۔

  •  واضح رہے کہ بھوپال میں نوابی عہد میں ہولی کے پانچویں دن رنگ پنچمی منانے کی روایت شروع ہوئی تھی ، جو آج بھی قائم ہے ۔

    واضح رہے کہ بھوپال میں نوابی عہد میں ہولی کے پانچویں دن رنگ پنچمی منانے کی روایت شروع ہوئی تھی ، جو آج بھی قائم ہے ۔

  •  نوابی عہد میں رنگ پنچمی میں نوابین بھوپال خود شامل ہوا کرتے تھے ۔

    نوابی عہد میں رنگ پنچمی میں نوابین بھوپال خود شامل ہوا کرتے تھے ۔

  •  نوابی عہد کا خاتمہ ہوئے تو برسو ں ہوگئے ، لیکن بھوپال میں گنگا جمنی تہذیب کی علامت کے طور پر یہ روایت آج بھی موجود ہے۔

    نوابی عہد کا خاتمہ ہوئے تو برسو ں ہوگئے ، لیکن بھوپال میں گنگا جمنی تہذیب کی علامت کے طور پر یہ روایت آج بھی موجود ہے۔

  • بھوپال کی مشترکہ تہذیب کے بارے میں جب بھی بحث  ہوتی ہے تو اس میں  رنگ پمچمی کی ہمیشہ مثال دی جاتی ہے۔

    بھوپال کی مشترکہ تہذیب کے بارے میں جب بھی بحث ہوتی ہے تو اس میں رنگ پمچمی کی ہمیشہ مثال دی جاتی ہے۔

  • رنگ پنچمی کے موقع پر انتظامیہ کی جانب سے سخت سیکورٹی کا انتظامات کیے گئے۔

    رنگ پنچمی کے موقع پر انتظامیہ کی جانب سے سخت سیکورٹی کا انتظامات کیے گئے۔

  • ریاست کے تجارتی شہر اندور میں تو رنگ پنچمی  کا نظارہ کچھ الگ ہی تھا ۔

    ریاست کے تجارتی شہر اندور میں تو رنگ پنچمی کا نظارہ کچھ الگ ہی تھا ۔

  • یہاں اس موقع پر چل تقریب نکالی گئیں۔ اس کی خوبی یہ ہوتی ہے کہ اس میں ٹینکروں میں رنگ بھرا ہوتا ہے، جسے موٹر پمپ کے ذریعے بھیڑ پر پھینکا جاتا ہے۔

    یہاں اس موقع پر چل تقریب نکالی گئیں۔ اس کی خوبی یہ ہوتی ہے کہ اس میں ٹینکروں میں رنگ بھرا ہوتا ہے، جسے موٹر پمپ کے ذریعے بھیڑ پر پھینکا جاتا ہے۔

  • گلال بھی کچھ اسی طرح سے ہوا اڑایا گیا۔ کئی منزلہ عمارتوں پر کھڑے لوگ بھی اس سے بچ نہیں پائے۔

    گلال بھی کچھ اسی طرح سے ہوا اڑایا گیا۔ کئی منزلہ عمارتوں پر کھڑے لوگ بھی اس سے بچ نہیں پائے۔

  • جلوس جہاں جہاں سے نکلا ، وہاں روایتی انداز میں مسلم سماج کے لوگوں نے اس کا استقبال کیا ۔
  •  واضح رہے کہ بھوپال میں نوابی عہد میں ہولی کے پانچویں دن رنگ پنچمی منانے کی روایت شروع ہوئی تھی ، جو آج بھی قائم ہے ۔
  •  نوابی عہد میں رنگ پنچمی میں نوابین بھوپال خود شامل ہوا کرتے تھے ۔
  •  نوابی عہد کا خاتمہ ہوئے تو برسو ں ہوگئے ، لیکن بھوپال میں گنگا جمنی تہذیب کی علامت کے طور پر یہ روایت آج بھی موجود ہے۔
  • بھوپال کی مشترکہ تہذیب کے بارے میں جب بھی بحث  ہوتی ہے تو اس میں  رنگ پمچمی کی ہمیشہ مثال دی جاتی ہے۔
  • رنگ پنچمی کے موقع پر انتظامیہ کی جانب سے سخت سیکورٹی کا انتظامات کیے گئے۔
  • ریاست کے تجارتی شہر اندور میں تو رنگ پنچمی  کا نظارہ کچھ الگ ہی تھا ۔
  • یہاں اس موقع پر چل تقریب نکالی گئیں۔ اس کی خوبی یہ ہوتی ہے کہ اس میں ٹینکروں میں رنگ بھرا ہوتا ہے، جسے موٹر پمپ کے ذریعے بھیڑ پر پھینکا جاتا ہے۔
  • گلال بھی کچھ اسی طرح سے ہوا اڑایا گیا۔ کئی منزلہ عمارتوں پر کھڑے لوگ بھی اس سے بچ نہیں پائے۔

تازہ ترین تصاویر