کشمیر میں یوم جمہوریہ کی فل ڈریس ریہرسل، 26 جنوری کیلئے مثالی حفاظتی انتظامات

Jan 24, 2017 03:23 PM IST
1 of 9
  • سخت ترین حفاظتی حصار اور برستی برف کے بیچ منگل کو یوم جمہوریہ کی تقریب کے سلسلے میں گرمائی دارالحکومت سری نگر کے بخشی اسٹیڈیم میں فل ڈریس ریہرسل کی گئی۔ وادی کے دوسرے حصوں میں بھی سخت سیکورٹی انتظامات اور برستی برف میں یوم جمہوریہ کی فل ڈریس ریہرسل تقریبات کا انعقاد عمل میں آیا ہے ۔ بخشی اسٹیدیم میں فل ڈریس ریہرسل کے موقعہ پر ڈویژنل کمشنر کشمیر بصیر احمد خان نے پرچم کشائی کی رسم انجام دی اور پریڈ کی سلامی لی۔

    سخت ترین حفاظتی حصار اور برستی برف کے بیچ منگل کو یوم جمہوریہ کی تقریب کے سلسلے میں گرمائی دارالحکومت سری نگر کے بخشی اسٹیڈیم میں فل ڈریس ریہرسل کی گئی۔ وادی کے دوسرے حصوں میں بھی سخت سیکورٹی انتظامات اور برستی برف میں یوم جمہوریہ کی فل ڈریس ریہرسل تقریبات کا انعقاد عمل میں آیا ہے ۔ بخشی اسٹیدیم میں فل ڈریس ریہرسل کے موقعہ پر ڈویژنل کمشنر کشمیر بصیر احمد خان نے پرچم کشائی کی رسم انجام دی اور پریڈ کی سلامی لی۔

  •  سخت سردی اور برستی برف کے باوجود مختلف تعلیمی اداروں کے طلباء وطالبات کے ساتھ ساتھ مرکزی نیم فوجی دستوں، جموں وکشمیر پولیس، ہوم گارڈ اور فائر اینڈ ایمرجنسی سروس نے بھی پریڈ میں حصہ لیا۔

    سخت سردی اور برستی برف کے باوجود مختلف تعلیمی اداروں کے طلباء وطالبات کے ساتھ ساتھ مرکزی نیم فوجی دستوں، جموں وکشمیر پولیس، ہوم گارڈ اور فائر اینڈ ایمرجنسی سروس نے بھی پریڈ میں حصہ لیا۔

  • ریہرسل سے قبل اسکولی بچوں اور بچیوں کو اسٹیڈیم میں داخل ہونے کے لئے سخت سردی اور برستی برف باری کے باوجود کڑی جامہ تلاشی کے مرحلے سے گذرنا پڑا۔ اسکولی اساتذہ نے یو این آئی کے نامہ نگار کو بتایا ’جامہ تلاشی اور شناخت کی تصدیق کے لئے ہمارے طلبہ و طالبات کو برستی برف کے درمیان قریب ایک گھنٹے تک گیٹ نمبر چار پر قطار میں ٹھہرایا گیا‘۔

    ریہرسل سے قبل اسکولی بچوں اور بچیوں کو اسٹیڈیم میں داخل ہونے کے لئے سخت سردی اور برستی برف باری کے باوجود کڑی جامہ تلاشی کے مرحلے سے گذرنا پڑا۔ اسکولی اساتذہ نے یو این آئی کے نامہ نگار کو بتایا ’جامہ تلاشی اور شناخت کی تصدیق کے لئے ہمارے طلبہ و طالبات کو برستی برف کے درمیان قریب ایک گھنٹے تک گیٹ نمبر چار پر قطار میں ٹھہرایا گیا‘۔

  • فل ڈریس ریہرسل کی اس تقریب میں فنکاروں اور طالب علموں نے رنگا رنگ ثقافتی پروگرام بھی پیش کئے۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ یوم جمہوریہ کی ریہرسل تقریبات کے دوران سری نگر کے بخشی اسٹیڈیم اور دیگر اضلاع میں واقع اسٹیڈیموں کے اندر و باہر سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اضافی اہلکاروں کو تعینات کر رکھا گیا تھا۔

    فل ڈریس ریہرسل کی اس تقریب میں فنکاروں اور طالب علموں نے رنگا رنگ ثقافتی پروگرام بھی پیش کئے۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ یوم جمہوریہ کی ریہرسل تقریبات کے دوران سری نگر کے بخشی اسٹیڈیم اور دیگر اضلاع میں واقع اسٹیڈیموں کے اندر و باہر سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اضافی اہلکاروں کو تعینات کر رکھا گیا تھا۔

  • دریں اثنا ریاست کے دونوں خطوں (کشمیر اور جموں) میں یوم جمہوریہ کی تقریبات کے احسن انعقاد کے لئے سیکورٹی کے غیرمعمولی انتظامات کئے گئے ہیں۔ گذشتہ برس جنگجویانہ حملوں خاص طور پر فدائین حملوں میں آنے والی شدت کے پیش نظر ریاست بھر میں تعینات سیکورٹی فورسز کو ہائی الرٹ پر رکھا گیا ہے۔ اس کے علاوہ سرحدوں پر دراندازی کی کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کے طور پر فوجیوں کی اضافی نفری کی تعیناتی کے ساتھ ساتھ نگرانی بھی بڑھا دی گئی ہے۔

    دریں اثنا ریاست کے دونوں خطوں (کشمیر اور جموں) میں یوم جمہوریہ کی تقریبات کے احسن انعقاد کے لئے سیکورٹی کے غیرمعمولی انتظامات کئے گئے ہیں۔ گذشتہ برس جنگجویانہ حملوں خاص طور پر فدائین حملوں میں آنے والی شدت کے پیش نظر ریاست بھر میں تعینات سیکورٹی فورسز کو ہائی الرٹ پر رکھا گیا ہے۔ اس کے علاوہ سرحدوں پر دراندازی کی کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کے طور پر فوجیوں کی اضافی نفری کی تعیناتی کے ساتھ ساتھ نگرانی بھی بڑھا دی گئی ہے۔

  • سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا ’اگرچہ جنگجوؤں کے ممکنہ حملوں کے متعلق کوئی خفیہ اطلاع نہیں ہے لیکن سیکورٹی فورسز کوئی چانس نہیں لے رہے ہیں‘۔ انہوں نے بتایا ’کچھ جنگجو یوم جمہوریہ کی تقریبات میں رخنہ ڈالنے کی کوششیں کرسکتے ہیں، اور ایسی کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کے لئے سیکورٹی فورسز تیار ہیں‘۔

    سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا ’اگرچہ جنگجوؤں کے ممکنہ حملوں کے متعلق کوئی خفیہ اطلاع نہیں ہے لیکن سیکورٹی فورسز کوئی چانس نہیں لے رہے ہیں‘۔ انہوں نے بتایا ’کچھ جنگجو یوم جمہوریہ کی تقریبات میں رخنہ ڈالنے کی کوششیں کرسکتے ہیں، اور ایسی کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کے لئے سیکورٹی فورسز تیار ہیں‘۔

  • سیکورٹی ذرائع کے مطابق یوم جمہوریہ کی تقریبات سے قبل دراندازی کی ممکنہ کوششوں کو ناکام بنانے کے لئے جموں خطہ میں پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدوں پر تعینات سیکورٹی فورسز کو ہائی الرٹ پر رکھا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر شبانہ گشت بھی بڑھا دی گئی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ یوم جمہوریہ کی تقریبات جہاں جہاں منعقد ہونے والی ہیں، کو چوبیسوں گھنٹے سیکورٹی اہلکاروں کی نگرانی میں رکھا گیا ہے۔ سری نگر میں واقع بخشی اسٹیڈیم جہاں وادی میں منعقد ہونے والی یوم جمہوریہ کی سب سے بڑی تقریب منعقد کی جائے گی ، کے گرد ونواح میں سیکورٹی کا سخت بندوبست کیا گیا ہے جبکہ سری نگر اور وادی کے دوسرے اضلاع میں راہگیروں کی جامہ تلاشیوں اور گاڑیوں کی چیکنگ کا عمل گذشتہ ایک ہفتے سے جاری ہے۔

    سیکورٹی ذرائع کے مطابق یوم جمہوریہ کی تقریبات سے قبل دراندازی کی ممکنہ کوششوں کو ناکام بنانے کے لئے جموں خطہ میں پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدوں پر تعینات سیکورٹی فورسز کو ہائی الرٹ پر رکھا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر شبانہ گشت بھی بڑھا دی گئی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ یوم جمہوریہ کی تقریبات جہاں جہاں منعقد ہونے والی ہیں، کو چوبیسوں گھنٹے سیکورٹی اہلکاروں کی نگرانی میں رکھا گیا ہے۔ سری نگر میں واقع بخشی اسٹیڈیم جہاں وادی میں منعقد ہونے والی یوم جمہوریہ کی سب سے بڑی تقریب منعقد کی جائے گی ، کے گرد ونواح میں سیکورٹی کا سخت بندوبست کیا گیا ہے جبکہ سری نگر اور وادی کے دوسرے اضلاع میں راہگیروں کی جامہ تلاشیوں اور گاڑیوں کی چیکنگ کا عمل گذشتہ ایک ہفتے سے جاری ہے۔

  • کسی بھی ناگہانی واقعہ سے نمٹنے کے لئے بخشی اسٹیڈیم کے گردونواح میں ریاستی پولیس اور نیم فوجی دستوں کی بھاری نفری کو تعینات کیا گیا ہے جبکہ اسٹیدیم کے قریب واقع تمام اونچی عماروں پر ماہر نشانہ بازوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ اسٹیڈیم کے باب الداخلہ کو بھی خاردار تار سے بند رکھا گیا ہے اور صرف سیکورٹی فورسز کی گاڑیوں کو اندر جانے کی اجازت دی جارہی ہے۔  تاہم سری نگر کے تاریخی امر سنگھ کالج اور ٹیگور ہال کی طرف جانے والی سڑکوں کو اس بار سیل نہیں کیا گیا ہے۔ سیکورٹی فورس اہلکار گاڑیوں اور راہگیروں پر قریبی نگاہ رکھے ہوئے ہیں۔

    کسی بھی ناگہانی واقعہ سے نمٹنے کے لئے بخشی اسٹیڈیم کے گردونواح میں ریاستی پولیس اور نیم فوجی دستوں کی بھاری نفری کو تعینات کیا گیا ہے جبکہ اسٹیدیم کے قریب واقع تمام اونچی عماروں پر ماہر نشانہ بازوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ اسٹیڈیم کے باب الداخلہ کو بھی خاردار تار سے بند رکھا گیا ہے اور صرف سیکورٹی فورسز کی گاڑیوں کو اندر جانے کی اجازت دی جارہی ہے۔ تاہم سری نگر کے تاریخی امر سنگھ کالج اور ٹیگور ہال کی طرف جانے والی سڑکوں کو اس بار سیل نہیں کیا گیا ہے۔ سیکورٹی فورس اہلکار گاڑیوں اور راہگیروں پر قریبی نگاہ رکھے ہوئے ہیں۔

  • اسٹیڈیم کے گردونواح میں کئی ایک حساس مقامات پر مشتبہ افراد کی نقل وحرکت پر قریبی نگاہ رکھنے کیلئے سی سی ٹی وی کیمرے نصب کئے گئے ہیں اور بلٹ پروف گاڑیاں تعینات کردی گئی ہیں۔ سراغ رساں کتوں، میٹل ڈٹیکٹرس اور بم ڈسپوزل اسکواڈ کی مدد سے بخشی اسٹیدیم ، اقبال پارک اور انڈور اسٹیدیم کی چیکنگ انجام دی گئی۔ سیکورٹی فورس اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں نے یوم جمہوریہ کی تقریب سے قبل جنگجوؤں کے کسی بھی حملے کو ناکام بنانے کے لئے اسٹیڈیم کے تین کلو میٹر کے دائرے میں آنے والے علاقوں میں شبانہ گشت بھی تیز کردی ہے۔ منگل کی صبح سے ہی مختلف اضلاع کو سری نگر سے جوڑنے والی سڑکوں پر تعینات سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس اہلکاروں کو گاڑیوں اور راہگیروں کی تلاشی لینے میں مصروف دیکھا گیا۔ نوٹ: سبھی تصویریں یو این آئی کی ہیں۔

    اسٹیڈیم کے گردونواح میں کئی ایک حساس مقامات پر مشتبہ افراد کی نقل وحرکت پر قریبی نگاہ رکھنے کیلئے سی سی ٹی وی کیمرے نصب کئے گئے ہیں اور بلٹ پروف گاڑیاں تعینات کردی گئی ہیں۔ سراغ رساں کتوں، میٹل ڈٹیکٹرس اور بم ڈسپوزل اسکواڈ کی مدد سے بخشی اسٹیدیم ، اقبال پارک اور انڈور اسٹیدیم کی چیکنگ انجام دی گئی۔ سیکورٹی فورس اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں نے یوم جمہوریہ کی تقریب سے قبل جنگجوؤں کے کسی بھی حملے کو ناکام بنانے کے لئے اسٹیڈیم کے تین کلو میٹر کے دائرے میں آنے والے علاقوں میں شبانہ گشت بھی تیز کردی ہے۔ منگل کی صبح سے ہی مختلف اضلاع کو سری نگر سے جوڑنے والی سڑکوں پر تعینات سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس اہلکاروں کو گاڑیوں اور راہگیروں کی تلاشی لینے میں مصروف دیکھا گیا۔ نوٹ: سبھی تصویریں یو این آئی کی ہیں۔

  •  سخت سردی اور برستی برف کے باوجود مختلف تعلیمی اداروں کے طلباء وطالبات کے ساتھ ساتھ مرکزی نیم فوجی دستوں، جموں وکشمیر پولیس، ہوم گارڈ اور فائر اینڈ ایمرجنسی سروس نے بھی پریڈ میں حصہ لیا۔
  • ریہرسل سے قبل اسکولی بچوں اور بچیوں کو اسٹیڈیم میں داخل ہونے کے لئے سخت سردی اور برستی برف باری کے باوجود کڑی جامہ تلاشی کے مرحلے سے گذرنا پڑا۔ اسکولی اساتذہ نے یو این آئی کے نامہ نگار کو بتایا ’جامہ تلاشی اور شناخت کی تصدیق کے لئے ہمارے طلبہ و طالبات کو برستی برف کے درمیان قریب ایک گھنٹے تک گیٹ نمبر چار پر قطار میں ٹھہرایا گیا‘۔
  • فل ڈریس ریہرسل کی اس تقریب میں فنکاروں اور طالب علموں نے رنگا رنگ ثقافتی پروگرام بھی پیش کئے۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ یوم جمہوریہ کی ریہرسل تقریبات کے دوران سری نگر کے بخشی اسٹیڈیم اور دیگر اضلاع میں واقع اسٹیڈیموں کے اندر و باہر سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اضافی اہلکاروں کو تعینات کر رکھا گیا تھا۔
  • دریں اثنا ریاست کے دونوں خطوں (کشمیر اور جموں) میں یوم جمہوریہ کی تقریبات کے احسن انعقاد کے لئے سیکورٹی کے غیرمعمولی انتظامات کئے گئے ہیں۔ گذشتہ برس جنگجویانہ حملوں خاص طور پر فدائین حملوں میں آنے والی شدت کے پیش نظر ریاست بھر میں تعینات سیکورٹی فورسز کو ہائی الرٹ پر رکھا گیا ہے۔ اس کے علاوہ سرحدوں پر دراندازی کی کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کے طور پر فوجیوں کی اضافی نفری کی تعیناتی کے ساتھ ساتھ نگرانی بھی بڑھا دی گئی ہے۔
  • سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا ’اگرچہ جنگجوؤں کے ممکنہ حملوں کے متعلق کوئی خفیہ اطلاع نہیں ہے لیکن سیکورٹی فورسز کوئی چانس نہیں لے رہے ہیں‘۔ انہوں نے بتایا ’کچھ جنگجو یوم جمہوریہ کی تقریبات میں رخنہ ڈالنے کی کوششیں کرسکتے ہیں، اور ایسی کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کے لئے سیکورٹی فورسز تیار ہیں‘۔
  • سیکورٹی ذرائع کے مطابق یوم جمہوریہ کی تقریبات سے قبل دراندازی کی ممکنہ کوششوں کو ناکام بنانے کے لئے جموں خطہ میں پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدوں پر تعینات سیکورٹی فورسز کو ہائی الرٹ پر رکھا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر شبانہ گشت بھی بڑھا دی گئی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ یوم جمہوریہ کی تقریبات جہاں جہاں منعقد ہونے والی ہیں، کو چوبیسوں گھنٹے سیکورٹی اہلکاروں کی نگرانی میں رکھا گیا ہے۔ سری نگر میں واقع بخشی اسٹیڈیم جہاں وادی میں منعقد ہونے والی یوم جمہوریہ کی سب سے بڑی تقریب منعقد کی جائے گی ، کے گرد ونواح میں سیکورٹی کا سخت بندوبست کیا گیا ہے جبکہ سری نگر اور وادی کے دوسرے اضلاع میں راہگیروں کی جامہ تلاشیوں اور گاڑیوں کی چیکنگ کا عمل گذشتہ ایک ہفتے سے جاری ہے۔
  • کسی بھی ناگہانی واقعہ سے نمٹنے کے لئے بخشی اسٹیڈیم کے گردونواح میں ریاستی پولیس اور نیم فوجی دستوں کی بھاری نفری کو تعینات کیا گیا ہے جبکہ اسٹیدیم کے قریب واقع تمام اونچی عماروں پر ماہر نشانہ بازوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ اسٹیڈیم کے باب الداخلہ کو بھی خاردار تار سے بند رکھا گیا ہے اور صرف سیکورٹی فورسز کی گاڑیوں کو اندر جانے کی اجازت دی جارہی ہے۔  تاہم سری نگر کے تاریخی امر سنگھ کالج اور ٹیگور ہال کی طرف جانے والی سڑکوں کو اس بار سیل نہیں کیا گیا ہے۔ سیکورٹی فورس اہلکار گاڑیوں اور راہگیروں پر قریبی نگاہ رکھے ہوئے ہیں۔
  • اسٹیڈیم کے گردونواح میں کئی ایک حساس مقامات پر مشتبہ افراد کی نقل وحرکت پر قریبی نگاہ رکھنے کیلئے سی سی ٹی وی کیمرے نصب کئے گئے ہیں اور بلٹ پروف گاڑیاں تعینات کردی گئی ہیں۔ سراغ رساں کتوں، میٹل ڈٹیکٹرس اور بم ڈسپوزل اسکواڈ کی مدد سے بخشی اسٹیدیم ، اقبال پارک اور انڈور اسٹیدیم کی چیکنگ انجام دی گئی۔ سیکورٹی فورس اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں نے یوم جمہوریہ کی تقریب سے قبل جنگجوؤں کے کسی بھی حملے کو ناکام بنانے کے لئے اسٹیڈیم کے تین کلو میٹر کے دائرے میں آنے والے علاقوں میں شبانہ گشت بھی تیز کردی ہے۔ منگل کی صبح سے ہی مختلف اضلاع کو سری نگر سے جوڑنے والی سڑکوں پر تعینات سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس اہلکاروں کو گاڑیوں اور راہگیروں کی تلاشی لینے میں مصروف دیکھا گیا۔ نوٹ: سبھی تصویریں یو این آئی کی ہیں۔

تازہ ترین تصاویر