علاحدگی پسند لیڈر مولوی محمد فاروق اور عبدالغنی لون کی برسی سے قبل سری نگر میں کرفیو جیسی پابندیاں

May 20, 2017 02:44 PM IST
1 of 14
  •  وادی کشمیر میں حریت قائدین مرحوم میر واعظ مولوی محمد فاروق اور مرحوم عبدالغنی لون کی برسیوں سے ایک روز قبل ہی گرمائی دارالحکومت سری نگر کے پائین شہر کے تین پولیس تھانوں کے تحت آنے والے علاقوں میں کرفیو جیسی پابندیاں نافذ کی گئیں۔ پابندیوں کے سبب ان علاقوں میں ہفتہ کو تمام طرح کی کاروباری سرگرمیاں مفلوج ہوکر رہ گئی ہیں۔ اس کے علاوہ تعلیمی اداروں، بینکوں اور سرکاری دفاتر میں معمول کا کام کاج بری طرح سے متاثر ہوا ۔

    وادی کشمیر میں حریت قائدین مرحوم میر واعظ مولوی محمد فاروق اور مرحوم عبدالغنی لون کی برسیوں سے ایک روز قبل ہی گرمائی دارالحکومت سری نگر کے پائین شہر کے تین پولیس تھانوں کے تحت آنے والے علاقوں میں کرفیو جیسی پابندیاں نافذ کی گئیں۔ پابندیوں کے سبب ان علاقوں میں ہفتہ کو تمام طرح کی کاروباری سرگرمیاں مفلوج ہوکر رہ گئی ہیں۔ اس کے علاوہ تعلیمی اداروں، بینکوں اور سرکاری دفاتر میں معمول کا کام کاج بری طرح سے متاثر ہوا ۔

  • حریت قائدین کی برسیوں کے سلسلے میں میرواعظ مولوی عمر فاروق کی قیادت والی حریت کانفرنس آج (ہفتہ کو) سری نگر کی تاریخی و مرکزی جامع مسجد سے ایک ریلی برآمد کرنے والی تھی۔

    حریت قائدین کی برسیوں کے سلسلے میں میرواعظ مولوی عمر فاروق کی قیادت والی حریت کانفرنس آج (ہفتہ کو) سری نگر کی تاریخی و مرکزی جامع مسجد سے ایک ریلی برآمد کرنے والی تھی۔

  • سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ضلع مجسٹریٹ سری نگر ڈاکٹر فاروق احمد لون کے احکامات پر پائین شہر کے تین پولیس تھانوں نوہٹہ، ایم آر گنج اور صفا کدل کے تحت آنے والے علاقوں میں احتیاطی اقدامات کے طور پر کسی بھی طرح کے تشدد کو روکنے کے لئے پابندیاں نافذ کی گئی ہیں۔

    سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ضلع مجسٹریٹ سری نگر ڈاکٹر فاروق احمد لون کے احکامات پر پائین شہر کے تین پولیس تھانوں نوہٹہ، ایم آر گنج اور صفا کدل کے تحت آنے والے علاقوں میں احتیاطی اقدامات کے طور پر کسی بھی طرح کے تشدد کو روکنے کے لئے پابندیاں نافذ کی گئی ہیں۔

  • تاہم یہ واضح نہیں ہوا کہ ان تین پولیس تھانوں کے تحت آنے والے علاقوں میں کرفیو یا صرف دفعہ 144 سی آر پی سی کے تحت پابندیاں نافذ کی گئی ہیں۔

    تاہم یہ واضح نہیں ہوا کہ ان تین پولیس تھانوں کے تحت آنے والے علاقوں میں کرفیو یا صرف دفعہ 144 سی آر پی سی کے تحت پابندیاں نافذ کی گئی ہیں۔

  • انتظامیہ کی جانب سے پابندیاں نافذ کرنے کی کوئی وجہ بھی ظاہر نہیں کی گئی ہے۔

    انتظامیہ کی جانب سے پابندیاں نافذ کرنے کی کوئی وجہ بھی ظاہر نہیں کی گئی ہے۔

  • ان علاقوں کے رہائشیوں نے بتایا کہ ہفتہ کی صبح پولیس گاڑیوں پر نصب لاوڈ اسپیکروں کے ذریعے بار بار اعلان کرایا گیا کہ لوگ اپنے گھروں سے باہر نہ آئیں۔

    ان علاقوں کے رہائشیوں نے بتایا کہ ہفتہ کی صبح پولیس گاڑیوں پر نصب لاوڈ اسپیکروں کے ذریعے بار بار اعلان کرایا گیا کہ لوگ اپنے گھروں سے باہر نہ آئیں۔

  • پائین شہر کے حساس علاقوں میں یہ پابندیاں حریت قائدین مرحوم میر واعظ مولوی محمد فاروق اور مرحوم عبدالغنی لون کی برسیوں سے ایک روز قبل ہی نافذ کی گئی ہیں۔

    پائین شہر کے حساس علاقوں میں یہ پابندیاں حریت قائدین مرحوم میر واعظ مولوی محمد فاروق اور مرحوم عبدالغنی لون کی برسیوں سے ایک روز قبل ہی نافذ کی گئی ہیں۔

  • مرحوم میرواعظ مولوی محمد فاروق کو 21 مئی 1990 ء کو نامعلوم بندوق برداروں نے اُن کی نگین رہائش گاہ میں ہلاک کیا تھاجبکہ مرحوم عبدالغنی لون کو 2002 ء میں اُس وقت نامعلوم بندوق برداروں نے ہلاک کیا تھا جب وہ میرواعظ کی 12 ویں برسی کے موقع پر عیدگاہ سری نگر میں منعقدہ اجتماعی فاتحہ خوانی کی تقریب میں شرکت کرنے کے بعد گھر لوٹ رہے تھے۔

    مرحوم میرواعظ مولوی محمد فاروق کو 21 مئی 1990 ء کو نامعلوم بندوق برداروں نے اُن کی نگین رہائش گاہ میں ہلاک کیا تھاجبکہ مرحوم عبدالغنی لون کو 2002 ء میں اُس وقت نامعلوم بندوق برداروں نے ہلاک کیا تھا جب وہ میرواعظ کی 12 ویں برسی کے موقع پر عیدگاہ سری نگر میں منعقدہ اجتماعی فاتحہ خوانی کی تقریب میں شرکت کرنے کے بعد گھر لوٹ رہے تھے۔

  • مرحوم مولوی محمد فاروق حریت کانفرنس (ع) کے موجودہ چیئرمین میر واعظ مولوی عمر فاروق کے والد ہیں جبکہ مرحوم عبدالغنی لون ریاستی وزیر سجاد غنی لون اور علیحدگی پسند لیڈر بلال غنی لون کے والد ہیں۔

    مرحوم مولوی محمد فاروق حریت کانفرنس (ع) کے موجودہ چیئرمین میر واعظ مولوی عمر فاروق کے والد ہیں جبکہ مرحوم عبدالغنی لون ریاستی وزیر سجاد غنی لون اور علیحدگی پسند لیڈر بلال غنی لون کے والد ہیں۔

  • ہفتہ کی صبح پائین شہر کی تاریخی جامع مسجد کے علاقہ میں حریت کانفرنس کے کارکنوں کی ریلی کو ناکام بنانے کے لئے سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں کی بھاری جمعیت تعینات کی گئی ہے۔

    ہفتہ کی صبح پائین شہر کی تاریخی جامع مسجد کے علاقہ میں حریت کانفرنس کے کارکنوں کی ریلی کو ناکام بنانے کے لئے سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں کی بھاری جمعیت تعینات کی گئی ہے۔

  • نوہٹہ کے رہائشیوں کے مطابق صبح کے نو بجے تک علاقہ میں لوگوں کی نقل وحرکت پر کوئی پابندی نہیں تھی، لیکن ایک سینئر پولیس افسر نے علاقہ میں وارد ہوکر سیکورٹی فورسز کو لوگوں کی نقل وحرکت روکنے کی ہدایت دی‘۔

    نوہٹہ کے رہائشیوں کے مطابق صبح کے نو بجے تک علاقہ میں لوگوں کی نقل وحرکت پر کوئی پابندی نہیں تھی، لیکن ایک سینئر پولیس افسر نے علاقہ میں وارد ہوکر سیکورٹی فورسز کو لوگوں کی نقل وحرکت روکنے کی ہدایت دی‘۔

  • رہائشیوں کے مطابق اس کے بعد سیکورٹی فورسز نے یہ کہتے ہوئے لوگوں کو اپنے گھروں کے اندر ہی رہنے کو کہا کہ علاقہ میں کرفیو نافذ کردیا گیا ہے۔

    رہائشیوں کے مطابق اس کے بعد سیکورٹی فورسز نے یہ کہتے ہوئے لوگوں کو اپنے گھروں کے اندر ہی رہنے کو کہا کہ علاقہ میں کرفیو نافذ کردیا گیا ہے۔

  • ایسی ہی صورتحال صفا کدل اور ایم آر گنج میں بھی نظر آئی جہاں پابندیاں کو سختی سے نافذ کرنے کے لئے سیکورٹی فورسز کی بھاری جمعیت تعینات کی گئی ہے۔

    ایسی ہی صورتحال صفا کدل اور ایم آر گنج میں بھی نظر آئی جہاں پابندیاں کو سختی سے نافذ کرنے کے لئے سیکورٹی فورسز کی بھاری جمعیت تعینات کی گئی ہے۔

  • نوہٹہ، صفا کدل اور ایم آر گنج میں پابندیاں کا اثر دوسرے علاقوں میں بھی نظرآیا جہاں دکانیں اور تجارتی مراکز بند رہے۔ تاہم سیول لائنز اور بالائی شہر میں صورتحال معمول پر ہے۔

    نوہٹہ، صفا کدل اور ایم آر گنج میں پابندیاں کا اثر دوسرے علاقوں میں بھی نظرآیا جہاں دکانیں اور تجارتی مراکز بند رہے۔ تاہم سیول لائنز اور بالائی شہر میں صورتحال معمول پر ہے۔

  • حریت قائدین کی برسیوں کے سلسلے میں میرواعظ مولوی عمر فاروق کی قیادت والی حریت کانفرنس آج (ہفتہ کو) سری نگر کی تاریخی و مرکزی جامع مسجد سے ایک ریلی برآمد کرنے والی تھی۔
  • سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ضلع مجسٹریٹ سری نگر ڈاکٹر فاروق احمد لون کے احکامات پر پائین شہر کے تین پولیس تھانوں نوہٹہ، ایم آر گنج اور صفا کدل کے تحت آنے والے علاقوں میں احتیاطی اقدامات کے طور پر کسی بھی طرح کے تشدد کو روکنے کے لئے پابندیاں نافذ کی گئی ہیں۔
  • تاہم یہ واضح نہیں ہوا کہ ان تین پولیس تھانوں کے تحت آنے والے علاقوں میں کرفیو یا صرف دفعہ 144 سی آر پی سی کے تحت پابندیاں نافذ کی گئی ہیں۔
  • انتظامیہ کی جانب سے پابندیاں نافذ کرنے کی کوئی وجہ بھی ظاہر نہیں کی گئی ہے۔
  • ان علاقوں کے رہائشیوں نے بتایا کہ ہفتہ کی صبح پولیس گاڑیوں پر نصب لاوڈ اسپیکروں کے ذریعے بار بار اعلان کرایا گیا کہ لوگ اپنے گھروں سے باہر نہ آئیں۔
  • پائین شہر کے حساس علاقوں میں یہ پابندیاں حریت قائدین مرحوم میر واعظ مولوی محمد فاروق اور مرحوم عبدالغنی لون کی برسیوں سے ایک روز قبل ہی نافذ کی گئی ہیں۔
  • مرحوم میرواعظ مولوی محمد فاروق کو 21 مئی 1990 ء کو نامعلوم بندوق برداروں نے اُن کی نگین رہائش گاہ میں ہلاک کیا تھاجبکہ مرحوم عبدالغنی لون کو 2002 ء میں اُس وقت نامعلوم بندوق برداروں نے ہلاک کیا تھا جب وہ میرواعظ کی 12 ویں برسی کے موقع پر عیدگاہ سری نگر میں منعقدہ اجتماعی فاتحہ خوانی کی تقریب میں شرکت کرنے کے بعد گھر لوٹ رہے تھے۔
  • مرحوم مولوی محمد فاروق حریت کانفرنس (ع) کے موجودہ چیئرمین میر واعظ مولوی عمر فاروق کے والد ہیں جبکہ مرحوم عبدالغنی لون ریاستی وزیر سجاد غنی لون اور علیحدگی پسند لیڈر بلال غنی لون کے والد ہیں۔
  • ہفتہ کی صبح پائین شہر کی تاریخی جامع مسجد کے علاقہ میں حریت کانفرنس کے کارکنوں کی ریلی کو ناکام بنانے کے لئے سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں کی بھاری جمعیت تعینات کی گئی ہے۔
  • نوہٹہ کے رہائشیوں کے مطابق صبح کے نو بجے تک علاقہ میں لوگوں کی نقل وحرکت پر کوئی پابندی نہیں تھی، لیکن ایک سینئر پولیس افسر نے علاقہ میں وارد ہوکر سیکورٹی فورسز کو لوگوں کی نقل وحرکت روکنے کی ہدایت دی‘۔
  • رہائشیوں کے مطابق اس کے بعد سیکورٹی فورسز نے یہ کہتے ہوئے لوگوں کو اپنے گھروں کے اندر ہی رہنے کو کہا کہ علاقہ میں کرفیو نافذ کردیا گیا ہے۔
  • ایسی ہی صورتحال صفا کدل اور ایم آر گنج میں بھی نظر آئی جہاں پابندیاں کو سختی سے نافذ کرنے کے لئے سیکورٹی فورسز کی بھاری جمعیت تعینات کی گئی ہے۔
  • نوہٹہ، صفا کدل اور ایم آر گنج میں پابندیاں کا اثر دوسرے علاقوں میں بھی نظرآیا جہاں دکانیں اور تجارتی مراکز بند رہے۔ تاہم سیول لائنز اور بالائی شہر میں صورتحال معمول پر ہے۔

تازہ ترین تصاویر