سلمیٰ انصاری کے مدرسہ چاچا نہرو میں طلبہ وطالبات کر رہے اوم اور اللہ کا ورد ساتھ ساتھ

Jan 23, 2018 08:44 PM IST
1 of 10
  •  سابق نائب صدر جمہوریہ ہند محمد حامد انصاری کی اہلیہ سلمیٰ انصاری کے ذریعہ علی گڑھ میں کئی سال قبل شروع کئے گئے مدرسہ چاچا نہرو میں تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ وطالبات یوگ کلاسیز میں اوم اوراللہ کا ساتھ ساتھ ورد کر رہے ہیں۔ گزشتہ دنوں سلمیٰ انصاری نے میڈیا سے کہا تھا کہ اوم کہنے سے آکسیجن ملتی ہے اور وہ جلد ہی اپنے مدرسہ میں اس کی کلاس شروع کرائیں گی، جس کواب عملی جامہ پہنایا جا رہا ہے۔

    سابق نائب صدر جمہوریہ ہند محمد حامد انصاری کی اہلیہ سلمیٰ انصاری کے ذریعہ علی گڑھ میں کئی سال قبل شروع کئے گئے مدرسہ چاچا نہرو میں تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ وطالبات یوگ کلاسیز میں اوم اوراللہ کا ساتھ ساتھ ورد کر رہے ہیں۔ گزشتہ دنوں سلمیٰ انصاری نے میڈیا سے کہا تھا کہ اوم کہنے سے آکسیجن ملتی ہے اور وہ جلد ہی اپنے مدرسہ میں اس کی کلاس شروع کرائیں گی، جس کواب عملی جامہ پہنایا جا رہا ہے۔

  •  سلمیٰ انصاری کے اس مدرسہ میں بچے صبح دعا کے ساتھ گائتی منترا بھی پڑھتے ہیں ۔ کہا جاتا ہے کہ نفرت کی بات کرنے والے افراد کو اس مدرسہ سے سیکھ لینے کی ضرورت ہے ۔

    سلمیٰ انصاری کے اس مدرسہ میں بچے صبح دعا کے ساتھ گائتی منترا بھی پڑھتے ہیں ۔ کہا جاتا ہے کہ نفرت کی بات کرنے والے افراد کو اس مدرسہ سے سیکھ لینے کی ضرورت ہے ۔

  • ملک میں آج جہاں سیاسی پارٹیوں کے ذریعہ نفرتیں پروان چڑھانے کی طرح طرح کی کوششیں کی جا رہی ہیں،  ایسے میں یہ مدرسہ پیار و محبت کا درس دے رہا ہے ۔

    ملک میں آج جہاں سیاسی پارٹیوں کے ذریعہ نفرتیں پروان چڑھانے کی طرح طرح کی کوششیں کی جا رہی ہیں، ایسے میں یہ مدرسہ پیار و محبت کا درس دے رہا ہے ۔

  • یہاں بچے صبح لب پہ آتی ہے دعا کے ساتھ جہاں گائتری منتر پڑھتے ہیں وہیں یوگ کلاسیز میں ’’اوم‘‘کے ساتھ ’’اللہ‘‘ بھی کہتے ہیں۔

    یہاں بچے صبح لب پہ آتی ہے دعا کے ساتھ جہاں گائتری منتر پڑھتے ہیں وہیں یوگ کلاسیز میں ’’اوم‘‘کے ساتھ ’’اللہ‘‘ بھی کہتے ہیں۔

  • انکا کہنا ہے کہ اس سے انھیں سکون ملتا ہے ۔ وہیں مدرسہ کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ ہمارے مدرسہ میں بھی دیگر مذاہب کے طلباء ہیں تو ہم انھیں بین المذاہب کی تعلیم دیتے ہیں۔

    انکا کہنا ہے کہ اس سے انھیں سکون ملتا ہے ۔ وہیں مدرسہ کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ ہمارے مدرسہ میں بھی دیگر مذاہب کے طلباء ہیں تو ہم انھیں بین المذاہب کی تعلیم دیتے ہیں۔

  • مدرسہ چاچا نہرومیں تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ وطالبات کہتے ہیں کہ یہاں کسی طرح کی مذہبی تفریق نہیں ہے۔ ہمیں اوم اور گائتری منتر پڑھنے سے سکون ملتا ہے۔

    مدرسہ چاچا نہرومیں تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ وطالبات کہتے ہیں کہ یہاں کسی طرح کی مذہبی تفریق نہیں ہے۔ ہمیں اوم اور گائتری منتر پڑھنے سے سکون ملتا ہے۔

  •  انکا کہنا ہے کہ جب ہم اللہ پڑھتے ہیں تو ایسا لگتا ہے کہ ساری مشکیں آسان ہو رہی ہیں۔

    انکا کہنا ہے کہ جب ہم اللہ پڑھتے ہیں تو ایسا لگتا ہے کہ ساری مشکیں آسان ہو رہی ہیں۔

  • وہیں ہندو طالب علم انل کا کہنا ہے کہ وہ دوسری کلاس سے اس مدرسہ میں پڑھ رہے ہیں۔ جس طرح انھیں گائتری منتر پڑھنا اچھا لگتا ہے، اسی طرح اللہ ہو کا ورد بھی وہ کرتے ہیں۔ انھیں کوئی پریشانی نہیں ہے۔

    وہیں ہندو طالب علم انل کا کہنا ہے کہ وہ دوسری کلاس سے اس مدرسہ میں پڑھ رہے ہیں۔ جس طرح انھیں گائتری منتر پڑھنا اچھا لگتا ہے، اسی طرح اللہ ہو کا ورد بھی وہ کرتے ہیں۔ انھیں کوئی پریشانی نہیں ہے۔

  •  یوگا کلاسیز چلانے والے استاد عزیز الرحمن بتاتے ہیں کہ انھیں بچوں کو سب سکھانا اچھا لگتا ہے۔

    یوگا کلاسیز چلانے والے استاد عزیز الرحمن بتاتے ہیں کہ انھیں بچوں کو سب سکھانا اچھا لگتا ہے۔

  • وہ کہتے ہیں کہ جس طرح سے اوم سے شانتی ملتی ہے اسی طرح اللہ سے بھی سکون ملتا ہے اور دماغ تمام تر پریشانیوں سے نجات پا جاتا ہے۔

    وہ کہتے ہیں کہ جس طرح سے اوم سے شانتی ملتی ہے اسی طرح اللہ سے بھی سکون ملتا ہے اور دماغ تمام تر پریشانیوں سے نجات پا جاتا ہے۔

  •  سلمیٰ انصاری کے اس مدرسہ میں بچے صبح دعا کے ساتھ گائتی منترا بھی پڑھتے ہیں ۔ کہا جاتا ہے کہ نفرت کی بات کرنے والے افراد کو اس مدرسہ سے سیکھ لینے کی ضرورت ہے ۔
  • ملک میں آج جہاں سیاسی پارٹیوں کے ذریعہ نفرتیں پروان چڑھانے کی طرح طرح کی کوششیں کی جا رہی ہیں،  ایسے میں یہ مدرسہ پیار و محبت کا درس دے رہا ہے ۔
  • یہاں بچے صبح لب پہ آتی ہے دعا کے ساتھ جہاں گائتری منتر پڑھتے ہیں وہیں یوگ کلاسیز میں ’’اوم‘‘کے ساتھ ’’اللہ‘‘ بھی کہتے ہیں۔
  • انکا کہنا ہے کہ اس سے انھیں سکون ملتا ہے ۔ وہیں مدرسہ کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ ہمارے مدرسہ میں بھی دیگر مذاہب کے طلباء ہیں تو ہم انھیں بین المذاہب کی تعلیم دیتے ہیں۔
  • مدرسہ چاچا نہرومیں تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ وطالبات کہتے ہیں کہ یہاں کسی طرح کی مذہبی تفریق نہیں ہے۔ ہمیں اوم اور گائتری منتر پڑھنے سے سکون ملتا ہے۔
  •  انکا کہنا ہے کہ جب ہم اللہ پڑھتے ہیں تو ایسا لگتا ہے کہ ساری مشکیں آسان ہو رہی ہیں۔
  • وہیں ہندو طالب علم انل کا کہنا ہے کہ وہ دوسری کلاس سے اس مدرسہ میں پڑھ رہے ہیں۔ جس طرح انھیں گائتری منتر پڑھنا اچھا لگتا ہے، اسی طرح اللہ ہو کا ورد بھی وہ کرتے ہیں۔ انھیں کوئی پریشانی نہیں ہے۔
  •  یوگا کلاسیز چلانے والے استاد عزیز الرحمن بتاتے ہیں کہ انھیں بچوں کو سب سکھانا اچھا لگتا ہے۔
  • وہ کہتے ہیں کہ جس طرح سے اوم سے شانتی ملتی ہے اسی طرح اللہ سے بھی سکون ملتا ہے اور دماغ تمام تر پریشانیوں سے نجات پا جاتا ہے۔

تازہ ترین تصاویر