Live Results Assembly Elections 2018

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان ایک مرتبہ پھر تنقید کی زد پر ، پڑھیں کیا ہے پورا معاملہ ؟ 

Dec 18, 2017 10:36 PM IST
1 of 15
  • سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان ایک مرتبہ پھر چوطرفہ تنقید کی زد پر ہیں ۔ اس مرتبہ وہ اپنے شاہی اخراجات کی وجہ سے تنقید کے شکار ہیں۔ کچھ دنوں قبل دنیا کی سب سے مہنگی پینٹنگ خریدنے پر تنقید کا شکار ہوئے ولی عہد کے بارے اب ایک اور سنسنی خیز دعوی  کیا گیا ہے ۔ امریکی اخبار نیویارک ٹائمس نے دعوی کیا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے دنیا کا مہنگا ترین گھر خریدا ہے۔

    سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان ایک مرتبہ پھر چوطرفہ تنقید کی زد پر ہیں ۔ اس مرتبہ وہ اپنے شاہی اخراجات کی وجہ سے تنقید کے شکار ہیں۔ کچھ دنوں قبل دنیا کی سب سے مہنگی پینٹنگ خریدنے پر تنقید کا شکار ہوئے ولی عہد کے بارے اب ایک اور سنسنی خیز دعوی کیا گیا ہے ۔ امریکی اخبار نیویارک ٹائمس نے دعوی کیا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے دنیا کا مہنگا ترین گھر خریدا ہے۔

  • اخبار کی رپورٹ کے مطابق چیٹیو لوئس فرانس کے ایک سابق لارڈ کی رہائش گاہ ہے جو وسیع رقبے کی حامل ہے اور اس میں 57 ایکڑ رقبے پر محیط ایک پارک بھی شامل ہے۔

    اخبار کی رپورٹ کے مطابق چیٹیو لوئس فرانس کے ایک سابق لارڈ کی رہائش گاہ ہے جو وسیع رقبے کی حامل ہے اور اس میں 57 ایکڑ رقبے پر محیط ایک پارک بھی شامل ہے۔

  •  اسے سا ل 2015ء میں کسی نامعلوم شخصیت نے 30 کروڑ ڈالر (33 ارب 10 کروڑ روپے) میں خریدا تھا ۔

    اسے سا ل 2015ء میں کسی نامعلوم شخصیت نے 30 کروڑ ڈالر (33 ارب 10 کروڑ روپے) میں خریدا تھا ۔

  • معروف امریکی جریدے فوربس نے اسے دنیا کی مہنگی ترین رہائش گاہ قرار دیا تھا۔

    معروف امریکی جریدے فوربس نے اسے دنیا کی مہنگی ترین رہائش گاہ قرار دیا تھا۔

  •  اس گھر میں وسیع رقبے کا فش ایکوائریم، سنیما گھر اور زیر زمین نائٹ کلب بھی موجود ہے۔

    اس گھر میں وسیع رقبے کا فش ایکوائریم، سنیما گھر اور زیر زمین نائٹ کلب بھی موجود ہے۔

  • نیویارک ٹائمز کے مطابق اس رہائش گاہ کو فرانس اور لکسمبرگ سے تعلق رکھنے والی آٹھ کمپنیوں کی سرمایہ کاری کے ذریعے خریدا گیا تاہم خریدار کا نام پوشیدہ رکھا گیا تھا۔

    نیویارک ٹائمز کے مطابق اس رہائش گاہ کو فرانس اور لکسمبرگ سے تعلق رکھنے والی آٹھ کمپنیوں کی سرمایہ کاری کے ذریعے خریدا گیا تاہم خریدار کا نام پوشیدہ رکھا گیا تھا۔

  • اب نیویارک ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں سعودی شاہی خاندان کے قریبی ذرائع کےحوالے سے دعوی کیا ہے کہ اس رہائش گاہ کو خریدنے والی تمام سرمایہ کار کمپنیاں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی ایک مدر فرم کی ملکیت ہیں۔

    اب نیویارک ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں سعودی شاہی خاندان کے قریبی ذرائع کےحوالے سے دعوی کیا ہے کہ اس رہائش گاہ کو خریدنے والی تمام سرمایہ کار کمپنیاں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی ایک مدر فرم کی ملکیت ہیں۔

  • اخبار نے یہ بھی دعوی کیا ہے کہ سعودی شاہی خاندان کے مشیر نے اس بات کی تصدیق کردی ہے۔

    اخبار نے یہ بھی دعوی کیا ہے کہ سعودی شاہی خاندان کے مشیر نے اس بات کی تصدیق کردی ہے۔

  • محمد بن سلمان نے 30 کروڑ ڈالر کی خطیر رقم سے فرانس میں یہ خرید گھر رکھا ہے۔

    محمد بن سلمان نے 30 کروڑ ڈالر کی خطیر رقم سے فرانس میں یہ خرید گھر رکھا ہے۔

  • واضح رہے کہ اکتوبر میں جاری ہونے والے پیراڈائز پیپر لیکس میں انکشاف ہوا تھا کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے روسی ٹائیکون کی ملکیت 440 فٹ طویل لگژری بحری جہاز 45 کروڑ پاؤنڈ میں خریدا ہے۔

    واضح رہے کہ اکتوبر میں جاری ہونے والے پیراڈائز پیپر لیکس میں انکشاف ہوا تھا کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے روسی ٹائیکون کی ملکیت 440 فٹ طویل لگژری بحری جہاز 45 کروڑ پاؤنڈ میں خریدا ہے۔

  • جبکہ نومبر میں یہ راز افشاں ہوا کہ لیونارڈو ڈاؤنچی کی ایک معروف پینٹنگ 450 ملین ڈالر میں خریدنے والا کوئی اور نہیں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان ہیں۔

    جبکہ نومبر میں یہ راز افشاں ہوا کہ لیونارڈو ڈاؤنچی کی ایک معروف پینٹنگ 450 ملین ڈالر میں خریدنے والا کوئی اور نہیں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان ہیں۔

  • قابل ذکر ہے کہسعودی عرب میں اس وقت کرپشن کے خلاف مہم جاری ہے، سعودی شاہ اور ولی عہد کے ایما پر 200 سے زائد افراد کو گرفتار کرکے ان کے خلاف تحقیقات جاری ہیں۔

    قابل ذکر ہے کہسعودی عرب میں اس وقت کرپشن کے خلاف مہم جاری ہے، سعودی شاہ اور ولی عہد کے ایما پر 200 سے زائد افراد کو گرفتار کرکے ان کے خلاف تحقیقات جاری ہیں۔

  •  ان میں سعودی شہزادے، سابق وزرا، بزنس ٹائیکون کے سربراہان اور کاروباری شخصیات شامل ہیں جو فی الوقت نظر بند ہیں۔

    ان میں سعودی شہزادے، سابق وزرا، بزنس ٹائیکون کے سربراہان اور کاروباری شخصیات شامل ہیں جو فی الوقت نظر بند ہیں۔

  • آخری اطلاعات کے مطابق ان سے پلی بارگین کے ذریعے سعودی حکومت اربوں روپے وصول کرکے انہیں رہا کردے گی۔

    آخری اطلاعات کے مطابق ان سے پلی بارگین کے ذریعے سعودی حکومت اربوں روپے وصول کرکے انہیں رہا کردے گی۔

  •  تاہم اس مہم کے دوران محمد بن سلمان کے مہنگے ترین اثاثے ظاہر ہونا خود اس مہم پر ایک سوالیہ نشان ہے۔

    تاہم اس مہم کے دوران محمد بن سلمان کے مہنگے ترین اثاثے ظاہر ہونا خود اس مہم پر ایک سوالیہ نشان ہے۔

  • اخبار کی رپورٹ کے مطابق چیٹیو لوئس فرانس کے ایک سابق لارڈ کی رہائش گاہ ہے جو وسیع رقبے کی حامل ہے اور اس میں 57 ایکڑ رقبے پر محیط ایک پارک بھی شامل ہے۔
  •  اسے سا ل 2015ء میں کسی نامعلوم شخصیت نے 30 کروڑ ڈالر (33 ارب 10 کروڑ روپے) میں خریدا تھا ۔
  • معروف امریکی جریدے فوربس نے اسے دنیا کی مہنگی ترین رہائش گاہ قرار دیا تھا۔
  •  اس گھر میں وسیع رقبے کا فش ایکوائریم، سنیما گھر اور زیر زمین نائٹ کلب بھی موجود ہے۔
  • نیویارک ٹائمز کے مطابق اس رہائش گاہ کو فرانس اور لکسمبرگ سے تعلق رکھنے والی آٹھ کمپنیوں کی سرمایہ کاری کے ذریعے خریدا گیا تاہم خریدار کا نام پوشیدہ رکھا گیا تھا۔
  • اب نیویارک ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں سعودی شاہی خاندان کے قریبی ذرائع کےحوالے سے دعوی کیا ہے کہ اس رہائش گاہ کو خریدنے والی تمام سرمایہ کار کمپنیاں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی ایک مدر فرم کی ملکیت ہیں۔
  • اخبار نے یہ بھی دعوی کیا ہے کہ سعودی شاہی خاندان کے مشیر نے اس بات کی تصدیق کردی ہے۔
  • محمد بن سلمان نے 30 کروڑ ڈالر کی خطیر رقم سے فرانس میں یہ خرید گھر رکھا ہے۔
  • واضح رہے کہ اکتوبر میں جاری ہونے والے پیراڈائز پیپر لیکس میں انکشاف ہوا تھا کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے روسی ٹائیکون کی ملکیت 440 فٹ طویل لگژری بحری جہاز 45 کروڑ پاؤنڈ میں خریدا ہے۔
  • جبکہ نومبر میں یہ راز افشاں ہوا کہ لیونارڈو ڈاؤنچی کی ایک معروف پینٹنگ 450 ملین ڈالر میں خریدنے والا کوئی اور نہیں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان ہیں۔
  • قابل ذکر ہے کہسعودی عرب میں اس وقت کرپشن کے خلاف مہم جاری ہے، سعودی شاہ اور ولی عہد کے ایما پر 200 سے زائد افراد کو گرفتار کرکے ان کے خلاف تحقیقات جاری ہیں۔
  •  ان میں سعودی شہزادے، سابق وزرا، بزنس ٹائیکون کے سربراہان اور کاروباری شخصیات شامل ہیں جو فی الوقت نظر بند ہیں۔
  • آخری اطلاعات کے مطابق ان سے پلی بارگین کے ذریعے سعودی حکومت اربوں روپے وصول کرکے انہیں رہا کردے گی۔
  •  تاہم اس مہم کے دوران محمد بن سلمان کے مہنگے ترین اثاثے ظاہر ہونا خود اس مہم پر ایک سوالیہ نشان ہے۔

تازہ ترین تصاویر