پولیس تحویل میں ہلاک شمشیر کے رشتہ داروں نے حصول انصاف کیلئے شروع کی بھوک ہڑتال

Jan 20, 2017 08:00 AM IST
1 of 6
  • پربھنی میں پولیس تحویل کے دوران شمشیر خان کی ہلاکت کا معاملہ طول پکڑتا جارہا ہے ۔ جہاں ایک طرف خاطی پولیس اہلکاروں کے خلاف قتل کے مقدمہ کے  مطالبہ نے شدت اختیار کرلیا ہے ، وہیںاب شمشیر کے رشتہ داروں نے بھی حصول انصاف کیلئے بھوک ہڑتال شروع کردی ہے ۔

    پربھنی میں پولیس تحویل کے دوران شمشیر خان کی ہلاکت کا معاملہ طول پکڑتا جارہا ہے ۔ جہاں ایک طرف خاطی پولیس اہلکاروں کے خلاف قتل کے مقدمہ کے مطالبہ نے شدت اختیار کرلیا ہے ، وہیںاب شمشیر کے رشتہ داروں نے بھی حصول انصاف کیلئے بھوک ہڑتال شروع کردی ہے ۔

  •  مہلوک شمشیر خان کے رشتہ دار اسپتال میں بھوک ہڑتال پر بیٹھے ہیں ۔ خیال رہے کہ شمشیر خان 25 دسمبر کو پربھنی کےنانل پیٹ پولیس اسٹیشن میں موت ہوگئی تھی ۔

    مہلوک شمشیر خان کے رشتہ دار اسپتال میں بھوک ہڑتال پر بیٹھے ہیں ۔ خیال رہے کہ شمشیر خان 25 دسمبر کو پربھنی کےنانل پیٹ پولیس اسٹیشن میں موت ہوگئی تھی ۔

  • پولیس انتظامیہ نے اس معاملہ میں اب تک نانل پیٹ پولیس اسٹیشن کے پولیس انسپکٹر اور تین پولیس اہلکاروں کو معطل کیا ہے ۔

    پولیس انتظامیہ نے اس معاملہ میں اب تک نانل پیٹ پولیس اسٹیشن کے پولیس انسپکٹر اور تین پولیس اہلکاروں کو معطل کیا ہے ۔

  • ادھر مظاہرین کے حق میں قانونی لڑائی لڑنے والے وکیلوں کا کہنا ہے کہ پولیس اس معاملہ میں خاطی پولیس اہلکاروں کو بچانے کی کوشش کررہی ہے ۔

    ادھر مظاہرین کے حق میں قانونی لڑائی لڑنے والے وکیلوں کا کہنا ہے کہ پولیس اس معاملہ میں خاطی پولیس اہلکاروں کو بچانے کی کوشش کررہی ہے ۔

  • ادھر پولیس بھی اب سمجھابجھا کر بھوک ہڑتال ختم کرنے کی کوششوں میں جٹ گئی ہے ۔

    ادھر پولیس بھی اب سمجھابجھا کر بھوک ہڑتال ختم کرنے کی کوششوں میں جٹ گئی ہے ۔

  • ا س سلسلہ میں پولیس نے تحریری طورپر ایک مکتوب بھی مہلوک کے رشتہ داروں کو دیا ہے ، جس میں انہیں یہ یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ خاطی پولیس اہلکاروں کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کیا جائے گا۔

    ا س سلسلہ میں پولیس نے تحریری طورپر ایک مکتوب بھی مہلوک کے رشتہ داروں کو دیا ہے ، جس میں انہیں یہ یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ خاطی پولیس اہلکاروں کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کیا جائے گا۔

  •  مہلوک شمشیر خان کے رشتہ دار اسپتال میں بھوک ہڑتال پر بیٹھے ہیں ۔ خیال رہے کہ شمشیر خان 25 دسمبر کو پربھنی کےنانل پیٹ پولیس اسٹیشن میں موت ہوگئی تھی ۔
  • پولیس انتظامیہ نے اس معاملہ میں اب تک نانل پیٹ پولیس اسٹیشن کے پولیس انسپکٹر اور تین پولیس اہلکاروں کو معطل کیا ہے ۔
  • ادھر مظاہرین کے حق میں قانونی لڑائی لڑنے والے وکیلوں کا کہنا ہے کہ پولیس اس معاملہ میں خاطی پولیس اہلکاروں کو بچانے کی کوشش کررہی ہے ۔
  • ادھر پولیس بھی اب سمجھابجھا کر بھوک ہڑتال ختم کرنے کی کوششوں میں جٹ گئی ہے ۔
  • ا س سلسلہ میں پولیس نے تحریری طورپر ایک مکتوب بھی مہلوک کے رشتہ داروں کو دیا ہے ، جس میں انہیں یہ یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ خاطی پولیس اہلکاروں کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کیا جائے گا۔

تازہ ترین تصاویر