شریفہ شیخ نے ایم اے انگلش میں پانچ گولڈ میڈل حاصل کر لڑکیوں کے لئے پیش کی ایک شاندارمثال

Apr 25, 2017 06:24 PM IST
1 of 7
  • کرناٹک کے ڈانڈیلی کی طالبہ شریفہ شیخ نے کرناٹکا یو نیورسٹی دھارواڑ سے ایم اے انگلش میں نمایاں کامیابی حاصل کرنے کے بعد پانچ گولڈ میڈل حاصل کرکے لڑکیوں کے تعلیمی میدان میں بڑھتے قدم کی  ایک بڑی مثال پیش کی  ہے ۔ شریفہ نے انتہائی محنت اور لگن کے ساتھ تعلیم حاصل کرتے ہوئے یہ بڑا کارنامہ ہاسٹل میں رہ کر پڑھائی کرتے ہوئےانجام دیا ہے ۔ شریفہ ایک اچھی ٹیچر بن کر قوم کے بچوں کا مستقبل سنوارنا چاہتی ہے۔

    کرناٹک کے ڈانڈیلی کی طالبہ شریفہ شیخ نے کرناٹکا یو نیورسٹی دھارواڑ سے ایم اے انگلش میں نمایاں کامیابی حاصل کرنے کے بعد پانچ گولڈ میڈل حاصل کرکے لڑکیوں کے تعلیمی میدان میں بڑھتے قدم کی ایک بڑی مثال پیش کی ہے ۔ شریفہ نے انتہائی محنت اور لگن کے ساتھ تعلیم حاصل کرتے ہوئے یہ بڑا کارنامہ ہاسٹل میں رہ کر پڑھائی کرتے ہوئےانجام دیا ہے ۔ شریفہ ایک اچھی ٹیچر بن کر قوم کے بچوں کا مستقبل سنوارنا چاہتی ہے۔

  • لڑکیا ں جب گھر سے دوررہتی ہیں توعموما یہ خیال کیا جاتا ہے کہ وہ اپنی پڑھائی اورتعلیم کو لیکر آزاد رہتی ہیں ۔ بالخصوص  ہاسٹل میں رہنے والی لڑکیوں کے والدین کو یہ شکایت ہمیشہ رہتی ہے۔

    لڑکیا ں جب گھر سے دوررہتی ہیں توعموما یہ خیال کیا جاتا ہے کہ وہ اپنی پڑھائی اورتعلیم کو لیکر آزاد رہتی ہیں ۔ بالخصوص ہاسٹل میں رہنے والی لڑکیوں کے والدین کو یہ شکایت ہمیشہ رہتی ہے۔

  •  لیکن شریفہ شیخ نے دسویں کے بعد پی یو سی اور ڈگری سمیت ماسٹر ڈگری کے لیے ہاسٹل میں رہ کر پڑھائی کی ہے۔

    لیکن شریفہ شیخ نے دسویں کے بعد پی یو سی اور ڈگری سمیت ماسٹر ڈگری کے لیے ہاسٹل میں رہ کر پڑھائی کی ہے۔

  •  کرناٹک کے ڈانڈیلی کی طالبہ شریفہ شیخ نے ایم اے انگلش  میں کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ سے ٹاپ کر کے  یو نیورسٹی سطح کے پانچ گولڈ میڈل حاصل کر کے قوم کا نام  روشن کیا ہے۔

    کرناٹک کے ڈانڈیلی کی طالبہ شریفہ شیخ نے ایم اے انگلش میں کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ سے ٹاپ کر کے یو نیورسٹی سطح کے پانچ گولڈ میڈل حاصل کر کے قوم کا نام روشن کیا ہے۔

  •  دوسری جانب  شریفہ نے اپنی مسلسل محنت سے یہ ثابت کیا ہے کہ لڑکیاں اگر یکسوئی دکھاتی ہیں تو وہ کسی بھی ناممکن  کو ممکن بنا سکتی ہیں۔

    دوسری جانب شریفہ نے اپنی مسلسل محنت سے یہ ثابت کیا ہے کہ لڑکیاں اگر یکسوئی دکھاتی ہیں تو وہ کسی بھی ناممکن کو ممکن بنا سکتی ہیں۔

  • شریفہ شیخ کے خاندان کا کوئی بڑا تابناک تعلیمی پس منظر تو نہیں ہے لیکن والدین کی فکر نے شریفہ کو یہ حوصلہ بخشا ۔ شریفہ کی اس کامیابی پر ان کے والدین اور اساتذہ سمیت رشتہ دار کافی خوشی کا اظہار کر رہے ہیں ۔ شریفہ اب بھٹکل  انجمن میں بی ایڈ کی  تعلیم حاصل کر رہی ہیں۔

    شریفہ شیخ کے خاندان کا کوئی بڑا تابناک تعلیمی پس منظر تو نہیں ہے لیکن والدین کی فکر نے شریفہ کو یہ حوصلہ بخشا ۔ شریفہ کی اس کامیابی پر ان کے والدین اور اساتذہ سمیت رشتہ دار کافی خوشی کا اظہار کر رہے ہیں ۔ شریفہ اب بھٹکل انجمن میں بی ایڈ کی تعلیم حاصل کر رہی ہیں۔

  •  ماضی میں اپنی استانیوں سے متاثر ہو کر ٹیچر بننے کا خواب دیکھنے والی شریفہ کوامید ہے کہ  وہ مستقبل میں ایک بہترین  ٹیچر بن کر طلبہ و طالبات کے لئے مثال قائم کریں گی ۔ نظم و ضبط کی بے انتہا پابندی کر کے شریفہ نے جو کارنامہ انجام دیا ہے اس سلسلے کو وہ مستقبل میں بھی برقرار رکھنا چاہتی ہیں۔

    ماضی میں اپنی استانیوں سے متاثر ہو کر ٹیچر بننے کا خواب دیکھنے والی شریفہ کوامید ہے کہ وہ مستقبل میں ایک بہترین ٹیچر بن کر طلبہ و طالبات کے لئے مثال قائم کریں گی ۔ نظم و ضبط کی بے انتہا پابندی کر کے شریفہ نے جو کارنامہ انجام دیا ہے اس سلسلے کو وہ مستقبل میں بھی برقرار رکھنا چاہتی ہیں۔

  • لڑکیا ں جب گھر سے دوررہتی ہیں توعموما یہ خیال کیا جاتا ہے کہ وہ اپنی پڑھائی اورتعلیم کو لیکر آزاد رہتی ہیں ۔ بالخصوص  ہاسٹل میں رہنے والی لڑکیوں کے والدین کو یہ شکایت ہمیشہ رہتی ہے۔
  •  لیکن شریفہ شیخ نے دسویں کے بعد پی یو سی اور ڈگری سمیت ماسٹر ڈگری کے لیے ہاسٹل میں رہ کر پڑھائی کی ہے۔
  •  کرناٹک کے ڈانڈیلی کی طالبہ شریفہ شیخ نے ایم اے انگلش  میں کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ سے ٹاپ کر کے  یو نیورسٹی سطح کے پانچ گولڈ میڈل حاصل کر کے قوم کا نام  روشن کیا ہے۔
  •  دوسری جانب  شریفہ نے اپنی مسلسل محنت سے یہ ثابت کیا ہے کہ لڑکیاں اگر یکسوئی دکھاتی ہیں تو وہ کسی بھی ناممکن  کو ممکن بنا سکتی ہیں۔
  • شریفہ شیخ کے خاندان کا کوئی بڑا تابناک تعلیمی پس منظر تو نہیں ہے لیکن والدین کی فکر نے شریفہ کو یہ حوصلہ بخشا ۔ شریفہ کی اس کامیابی پر ان کے والدین اور اساتذہ سمیت رشتہ دار کافی خوشی کا اظہار کر رہے ہیں ۔ شریفہ اب بھٹکل  انجمن میں بی ایڈ کی  تعلیم حاصل کر رہی ہیں۔
  •  ماضی میں اپنی استانیوں سے متاثر ہو کر ٹیچر بننے کا خواب دیکھنے والی شریفہ کوامید ہے کہ  وہ مستقبل میں ایک بہترین  ٹیچر بن کر طلبہ و طالبات کے لئے مثال قائم کریں گی ۔ نظم و ضبط کی بے انتہا پابندی کر کے شریفہ نے جو کارنامہ انجام دیا ہے اس سلسلے کو وہ مستقبل میں بھی برقرار رکھنا چاہتی ہیں۔

تازہ ترین تصاویر