کشمیر میں برفباری سے نظام زندگی مفلوج، بیرون دنیا سے رابطہ منقطع، ریل سروس معطل

Jan 16, 2017 01:58 PM IST
1 of 10
  • وادی کشمیر میں پیر کی علی الصبح برف باری کا تازہ سلسلہ شروع ہوا جس کے باعث معمولات زندگی بری طرح سے متاثر ہوگئے ہیں۔ برف باری کے باعث وادی کو زمینی راستے سے بیرون دنیا سے جوڑنے والی 300 کلو میٹر طویل سری نگر۔ جموں قومی شاہراہ گاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند ہوگئی ہے۔ اس کے علاوہ سری نگر کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر فضائی سروس اور ریل سروس متاثر ہوگئی ہے۔ تا دم تحریر وادی کے سبھی علاقوں میں برف باری کا سلسلہ جاری تھا۔

    وادی کشمیر میں پیر کی علی الصبح برف باری کا تازہ سلسلہ شروع ہوا جس کے باعث معمولات زندگی بری طرح سے متاثر ہوگئے ہیں۔ برف باری کے باعث وادی کو زمینی راستے سے بیرون دنیا سے جوڑنے والی 300 کلو میٹر طویل سری نگر۔ جموں قومی شاہراہ گاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند ہوگئی ہے۔ اس کے علاوہ سری نگر کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر فضائی سروس اور ریل سروس متاثر ہوگئی ہے۔ تا دم تحریر وادی کے سبھی علاقوں میں برف باری کا سلسلہ جاری تھا۔

  • برف باری کے باعث سڑکوں پر گاڑیوں اور راہگیروں کی نقل وحرکت جبکہ بجلی کی ترسیل اور ڈش ٹی وی سروس متاثر ہورہی ہے۔ پیر کی صبح جب اہلیان وادی نیند سے اٹھے تو کھلے میدانی، مکانوں و عمارتوں کی چھتوں اور درختوں نے برف کی سفید چادر اوڑھ لی تھی۔ برف باری کے پیش نظر بیشتر لوگوں نے اپنے گھروں میں ہی رہنے کو ترجیح دی۔

    برف باری کے باعث سڑکوں پر گاڑیوں اور راہگیروں کی نقل وحرکت جبکہ بجلی کی ترسیل اور ڈش ٹی وی سروس متاثر ہورہی ہے۔ پیر کی صبح جب اہلیان وادی نیند سے اٹھے تو کھلے میدانی، مکانوں و عمارتوں کی چھتوں اور درختوں نے برف کی سفید چادر اوڑھ لی تھی۔ برف باری کے پیش نظر بیشتر لوگوں نے اپنے گھروں میں ہی رہنے کو ترجیح دی۔

  • تاہم سخت سردی کے باوجود نوجوانوں اور بچوں کو موسم سرما کی اس دوسری بھاری برف باری کا مزہ لیتے ہوئے دیکھا گیا۔ نوجوانوں اور بچوں کو ’سنو مین‘ بنانے اور ایک دوسرے پر برف پھینکنے میں مصروف دیکھا گیا۔

    تاہم سخت سردی کے باوجود نوجوانوں اور بچوں کو موسم سرما کی اس دوسری بھاری برف باری کا مزہ لیتے ہوئے دیکھا گیا۔ نوجوانوں اور بچوں کو ’سنو مین‘ بنانے اور ایک دوسرے پر برف پھینکنے میں مصروف دیکھا گیا۔

  • محکمہ موسمیات نے وادی کشمیر میں اگلے 48 گھنٹوں کے دوران بڑے پیمانے پر بارش یا برف باری کی پیشن گوئی کی ہے۔ وادی کے تمام بالائی علاقوں اور مشہور سیاحتی مقامات بشمول گلمرگ، پہل گام، سونہ مرگ، یوسمرگ اور دودھ پتھری سے بھی شدید برف باری کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ دوسری جانب بھاری برف باری کے پیش نظر سری نگر جموں قومی شاہراہ کوگاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند کردیا گیا ہے۔

    محکمہ موسمیات نے وادی کشمیر میں اگلے 48 گھنٹوں کے دوران بڑے پیمانے پر بارش یا برف باری کی پیشن گوئی کی ہے۔ وادی کے تمام بالائی علاقوں اور مشہور سیاحتی مقامات بشمول گلمرگ، پہل گام، سونہ مرگ، یوسمرگ اور دودھ پتھری سے بھی شدید برف باری کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ دوسری جانب بھاری برف باری کے پیش نظر سری نگر جموں قومی شاہراہ کوگاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند کردیا گیا ہے۔

  • ایک ٹریفک پولیس عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا کہ ’شاہراہ کے مختلف مقامات بشمول جواہر ٹنل، قاضی گنڈ، بانہال، شیطان نالہ اور پٹنی ٹاپ پر درمیانہ سے بھاری درجے کی برف باری ہوئی ہے جس کے پیش نظر ہمیں شاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت بند کرنا پڑی‘۔ انہوں نے بتایا کہ آخری اطلاعات ملنے تک برف باری کا سلسلہ جاری تھا اور شاہراہ پر آج گاڑیوں کو چلنے کی اجازت دینے کے امکانات بہت ہی کم ہیں۔

    ایک ٹریفک پولیس عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا کہ ’شاہراہ کے مختلف مقامات بشمول جواہر ٹنل، قاضی گنڈ، بانہال، شیطان نالہ اور پٹنی ٹاپ پر درمیانہ سے بھاری درجے کی برف باری ہوئی ہے جس کے پیش نظر ہمیں شاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت بند کرنا پڑی‘۔ انہوں نے بتایا کہ آخری اطلاعات ملنے تک برف باری کا سلسلہ جاری تھا اور شاہراہ پر آج گاڑیوں کو چلنے کی اجازت دینے کے امکانات بہت ہی کم ہیں۔

  • مذکورہ عہدیدار نے بتایا ’شاہراہ کی دیکھ ریکھ کے لئے ذمہ دار بارڈر روڑس آرگنائزیشن (بی آر او) نے برف ہٹانے کے لئے اپنی جدید مشینری اور افرادی قوت کو کام پر لگا دیا ہے۔ لیکن جاری برف باری اور مٹی کے تودے گرآنے کے خطرے کے باعث بی آر او اہلکاروں کا کام متاثر ہورہا ہے‘۔ برف باری کے باعث سری نگر کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر فضائی ٹریفک بھی متاثر ہوگیا ہے۔

    مذکورہ عہدیدار نے بتایا ’شاہراہ کی دیکھ ریکھ کے لئے ذمہ دار بارڈر روڑس آرگنائزیشن (بی آر او) نے برف ہٹانے کے لئے اپنی جدید مشینری اور افرادی قوت کو کام پر لگا دیا ہے۔ لیکن جاری برف باری اور مٹی کے تودے گرآنے کے خطرے کے باعث بی آر او اہلکاروں کا کام متاثر ہورہا ہے‘۔ برف باری کے باعث سری نگر کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر فضائی ٹریفک بھی متاثر ہوگیا ہے۔

  • ہوائی اڈے کے ایک عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا ’ائرپورٹ پر برف باری کا سلسلہ جاری ہے جس کے باعث تاحال کوئی بھی پرواز آپریٹ نہیں کرسکی ہے‘۔ انہوں نے بتایا کہ رن وے پر برف جمع ہے جبکہ روشنی بھی بہت ہی کم ہے۔

    ہوائی اڈے کے ایک عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا ’ائرپورٹ پر برف باری کا سلسلہ جاری ہے جس کے باعث تاحال کوئی بھی پرواز آپریٹ نہیں کرسکی ہے‘۔ انہوں نے بتایا کہ رن وے پر برف جمع ہے جبکہ روشنی بھی بہت ہی کم ہے۔

  • ریلوے کے ایک عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا ’تازہ برف باری کی وجہ سے شمالی کشمیر کے بارہمولہ اور جموں خطہ کے بانہال کے درمیان کوئی بھی ٹرین نہیں چل سکی ہے‘۔ انہوں نے بتایا کہ ریلوے ٹریکوں پر سے برف ہٹانے کا کام شروع کیا گیا ہے ۔ مذکورہ عہدیدار نے بتایا ’ٹریکوں پر سے برف ہٹانے کا کام مکمل کئے جانے اور برف باری رکنے کے بعد ہی ٹرین سروس بحال کی جائے گی‘۔

    ریلوے کے ایک عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا ’تازہ برف باری کی وجہ سے شمالی کشمیر کے بارہمولہ اور جموں خطہ کے بانہال کے درمیان کوئی بھی ٹرین نہیں چل سکی ہے‘۔ انہوں نے بتایا کہ ریلوے ٹریکوں پر سے برف ہٹانے کا کام شروع کیا گیا ہے ۔ مذکورہ عہدیدار نے بتایا ’ٹریکوں پر سے برف ہٹانے کا کام مکمل کئے جانے اور برف باری رکنے کے بعد ہی ٹرین سروس بحال کی جائے گی‘۔

  • دریں اثنا کشمیر یونیورسٹی نے وادی میں شدید برف باری کے پیش نظر پیر اور منگل کو لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کردیے ہیں۔ کشمیر یونیورسٹی کے ایک ترجمان نے بتایا کہ یونیورسٹی انتظامیہ نے شدید برف باری کے پیش نظر پیر اور منگل کو لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

    دریں اثنا کشمیر یونیورسٹی نے وادی میں شدید برف باری کے پیش نظر پیر اور منگل کو لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کردیے ہیں۔ کشمیر یونیورسٹی کے ایک ترجمان نے بتایا کہ یونیورسٹی انتظامیہ نے شدید برف باری کے پیش نظر پیر اور منگل کو لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

  • انہوں نے بتایا کہ ملتوی شدہ پرچوں کی نئی تاریخوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔ یہ گذشتہ دو ہفتوں میں دوسری دفعہ ہے کہ جب کشمیر یونیورسٹی کو برف باری کے باعث امتحانات ملتوی کرنا پڑے ہیں۔

    انہوں نے بتایا کہ ملتوی شدہ پرچوں کی نئی تاریخوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔ یہ گذشتہ دو ہفتوں میں دوسری دفعہ ہے کہ جب کشمیر یونیورسٹی کو برف باری کے باعث امتحانات ملتوی کرنا پڑے ہیں۔

  • برف باری کے باعث سڑکوں پر گاڑیوں اور راہگیروں کی نقل وحرکت جبکہ بجلی کی ترسیل اور ڈش ٹی وی سروس متاثر ہورہی ہے۔ پیر کی صبح جب اہلیان وادی نیند سے اٹھے تو کھلے میدانی، مکانوں و عمارتوں کی چھتوں اور درختوں نے برف کی سفید چادر اوڑھ لی تھی۔ برف باری کے پیش نظر بیشتر لوگوں نے اپنے گھروں میں ہی رہنے کو ترجیح دی۔
  • تاہم سخت سردی کے باوجود نوجوانوں اور بچوں کو موسم سرما کی اس دوسری بھاری برف باری کا مزہ لیتے ہوئے دیکھا گیا۔ نوجوانوں اور بچوں کو ’سنو مین‘ بنانے اور ایک دوسرے پر برف پھینکنے میں مصروف دیکھا گیا۔
  • محکمہ موسمیات نے وادی کشمیر میں اگلے 48 گھنٹوں کے دوران بڑے پیمانے پر بارش یا برف باری کی پیشن گوئی کی ہے۔ وادی کے تمام بالائی علاقوں اور مشہور سیاحتی مقامات بشمول گلمرگ، پہل گام، سونہ مرگ، یوسمرگ اور دودھ پتھری سے بھی شدید برف باری کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ دوسری جانب بھاری برف باری کے پیش نظر سری نگر جموں قومی شاہراہ کوگاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند کردیا گیا ہے۔
  • ایک ٹریفک پولیس عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا کہ ’شاہراہ کے مختلف مقامات بشمول جواہر ٹنل، قاضی گنڈ، بانہال، شیطان نالہ اور پٹنی ٹاپ پر درمیانہ سے بھاری درجے کی برف باری ہوئی ہے جس کے پیش نظر ہمیں شاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت بند کرنا پڑی‘۔ انہوں نے بتایا کہ آخری اطلاعات ملنے تک برف باری کا سلسلہ جاری تھا اور شاہراہ پر آج گاڑیوں کو چلنے کی اجازت دینے کے امکانات بہت ہی کم ہیں۔
  • مذکورہ عہدیدار نے بتایا ’شاہراہ کی دیکھ ریکھ کے لئے ذمہ دار بارڈر روڑس آرگنائزیشن (بی آر او) نے برف ہٹانے کے لئے اپنی جدید مشینری اور افرادی قوت کو کام پر لگا دیا ہے۔ لیکن جاری برف باری اور مٹی کے تودے گرآنے کے خطرے کے باعث بی آر او اہلکاروں کا کام متاثر ہورہا ہے‘۔ برف باری کے باعث سری نگر کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر فضائی ٹریفک بھی متاثر ہوگیا ہے۔
  • ہوائی اڈے کے ایک عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا ’ائرپورٹ پر برف باری کا سلسلہ جاری ہے جس کے باعث تاحال کوئی بھی پرواز آپریٹ نہیں کرسکی ہے‘۔ انہوں نے بتایا کہ رن وے پر برف جمع ہے جبکہ روشنی بھی بہت ہی کم ہے۔
  • ریلوے کے ایک عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا ’تازہ برف باری کی وجہ سے شمالی کشمیر کے بارہمولہ اور جموں خطہ کے بانہال کے درمیان کوئی بھی ٹرین نہیں چل سکی ہے‘۔ انہوں نے بتایا کہ ریلوے ٹریکوں پر سے برف ہٹانے کا کام شروع کیا گیا ہے ۔ مذکورہ عہدیدار نے بتایا ’ٹریکوں پر سے برف ہٹانے کا کام مکمل کئے جانے اور برف باری رکنے کے بعد ہی ٹرین سروس بحال کی جائے گی‘۔
  • دریں اثنا کشمیر یونیورسٹی نے وادی میں شدید برف باری کے پیش نظر پیر اور منگل کو لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کردیے ہیں۔ کشمیر یونیورسٹی کے ایک ترجمان نے بتایا کہ یونیورسٹی انتظامیہ نے شدید برف باری کے پیش نظر پیر اور منگل کو لئے جانے والے تمام امتحانات ملتوی کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔
  • انہوں نے بتایا کہ ملتوی شدہ پرچوں کی نئی تاریخوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔ یہ گذشتہ دو ہفتوں میں دوسری دفعہ ہے کہ جب کشمیر یونیورسٹی کو برف باری کے باعث امتحانات ملتوی کرنا پڑے ہیں۔

تازہ ترین تصاویر