Live Results Assembly Elections 2018

پڑھیں : پریس کانفرنس کے دوران سپریم کورٹ کے چار سینئروں ججوں کی 9 اہم باتیں 

Jan 12, 2018 05:38 PM IST
1 of 10
  •  ہندوستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ سپریم کورٹ کے چار ججوں نے پریس کانفرنس کی اور ججوں کی تقرری کے معاملہ میں حکومت اور جوڈیشیل کے درمیان ٹکراو پر انہوں نے اپنی بات رکھی ۔ یہ پریس کانفرنس جسٹس جے چلامیشور کے گھر پر منعقد کی گئی ۔ ان کے ساتھ دیگر تین جج جسٹس رنجن گوگوئی ، جسٹس مدن بی لوکر اور جسٹس کورین جوزیف بھی موجود تھے ۔

    ہندوستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ سپریم کورٹ کے چار ججوں نے پریس کانفرنس کی اور ججوں کی تقرری کے معاملہ میں حکومت اور جوڈیشیل کے درمیان ٹکراو پر انہوں نے اپنی بات رکھی ۔ یہ پریس کانفرنس جسٹس جے چلامیشور کے گھر پر منعقد کی گئی ۔ ان کے ساتھ دیگر تین جج جسٹس رنجن گوگوئی ، جسٹس مدن بی لوکر اور جسٹس کورین جوزیف بھی موجود تھے ۔

  • یہ ملک کی تاریخ میں ایک غیر معمولی واقعہ ہے ، یہ آئین ہند کی تاریخ میں بھی ایک غیر معمولی واقعہ ہے۔

    یہ ملک کی تاریخ میں ایک غیر معمولی واقعہ ہے ، یہ آئین ہند کی تاریخ میں بھی ایک غیر معمولی واقعہ ہے۔

  •  آزاد عدالتی نظام بہتر جمہوریت کی بنیاد ہوتی ہے ، اس کے بغیر جمہوریت محفوظ نہیں رہ سکتی ۔

    آزاد عدالتی نظام بہتر جمہوریت کی بنیاد ہوتی ہے ، اس کے بغیر جمہوریت محفوظ نہیں رہ سکتی ۔

  • سپریم کورٹ کی انتظامیہ کام نہیں کررہی ہے ، گزشتہ کچھ مہینوں میں کئی ایسی باتیں ہوئی ہیں۔

    سپریم کورٹ کی انتظامیہ کام نہیں کررہی ہے ، گزشتہ کچھ مہینوں میں کئی ایسی باتیں ہوئی ہیں۔

  • ہمارے سامنے اور کوئی گنجائش بچی نہیں تھی کہ ہم براہ راست ملک سے روبرو ہوں ۔

    ہمارے سامنے اور کوئی گنجائش بچی نہیں تھی کہ ہم براہ راست ملک سے روبرو ہوں ۔

  • اس معاملہ کو لے کر ہم نے آج صبح سی جے آئی سے ملاقات کی ، لیکن انہیں سمجھانے میں کامیاب نہیں ہوپائے ۔

    اس معاملہ کو لے کر ہم نے آج صبح سی جے آئی سے ملاقات کی ، لیکن انہیں سمجھانے میں کامیاب نہیں ہوپائے ۔

  • ہم چاروں اس بات کو لے کر مطمئن تھے کہ جمہوریت کو زندہ رکھنے کیلئے ایک غیر جانبدار جج اور شفاف عدالتی نظام کی ضرورت ہے۔

    ہم چاروں اس بات کو لے کر مطمئن تھے کہ جمہوریت کو زندہ رکھنے کیلئے ایک غیر جانبدار جج اور شفاف عدالتی نظام کی ضرورت ہے۔

  • ہم نے ملک میں بہت سے دانشور افراد دیکھے ہیں ، لیکن ہم نہیں چاہتے کہ 20 سال بعد دانشور افرد ہم سے اس بارے میں کہیں کہ ہم چاروں نے اپنا ضمیر بیچ دیا۔

    ہم نے ملک میں بہت سے دانشور افراد دیکھے ہیں ، لیکن ہم نہیں چاہتے کہ 20 سال بعد دانشور افرد ہم سے اس بارے میں کہیں کہ ہم چاروں نے اپنا ضمیر بیچ دیا۔

  • یہ ہماری ذمہ داری تھی کہ ہم ملک کو اس بارے میں بتائیں اور ہم نے ایسا ہی کیاہے۔

    یہ ہماری ذمہ داری تھی کہ ہم ملک کو اس بارے میں بتائیں اور ہم نے ایسا ہی کیاہے۔

  • ہم مواخذے کی کارروائی لگانے والے نہیں ہوتے (جب پوچھا گیا کہ کیا چیف جسٹس کے خلاف مواخذے کی کارروائی کی جانی چاہئے )۔

    ہم مواخذے کی کارروائی لگانے والے نہیں ہوتے (جب پوچھا گیا کہ کیا چیف جسٹس کے خلاف مواخذے کی کارروائی کی جانی چاہئے )۔

  • یہ ملک کی تاریخ میں ایک غیر معمولی واقعہ ہے ، یہ آئین ہند کی تاریخ میں بھی ایک غیر معمولی واقعہ ہے۔
  •  آزاد عدالتی نظام بہتر جمہوریت کی بنیاد ہوتی ہے ، اس کے بغیر جمہوریت محفوظ نہیں رہ سکتی ۔
  • سپریم کورٹ کی انتظامیہ کام نہیں کررہی ہے ، گزشتہ کچھ مہینوں میں کئی ایسی باتیں ہوئی ہیں۔
  • ہمارے سامنے اور کوئی گنجائش بچی نہیں تھی کہ ہم براہ راست ملک سے روبرو ہوں ۔
  • اس معاملہ کو لے کر ہم نے آج صبح سی جے آئی سے ملاقات کی ، لیکن انہیں سمجھانے میں کامیاب نہیں ہوپائے ۔
  • ہم چاروں اس بات کو لے کر مطمئن تھے کہ جمہوریت کو زندہ رکھنے کیلئے ایک غیر جانبدار جج اور شفاف عدالتی نظام کی ضرورت ہے۔
  • ہم نے ملک میں بہت سے دانشور افراد دیکھے ہیں ، لیکن ہم نہیں چاہتے کہ 20 سال بعد دانشور افرد ہم سے اس بارے میں کہیں کہ ہم چاروں نے اپنا ضمیر بیچ دیا۔
  • یہ ہماری ذمہ داری تھی کہ ہم ملک کو اس بارے میں بتائیں اور ہم نے ایسا ہی کیاہے۔
  • ہم مواخذے کی کارروائی لگانے والے نہیں ہوتے (جب پوچھا گیا کہ کیا چیف جسٹس کے خلاف مواخذے کی کارروائی کی جانی چاہئے )۔

تازہ ترین تصاویر