ممبئی کے مکیش میل میں جانے سے کیوں ڈرتے ہیں لوگ؟

Mar 05, 2018 06:14 PM IST
1 of 5
  •  ممبئی۔158سال پرانی ممبئی مکیش میل کے بارے میں کہا جاتا ہیکہ یہاں بھوت۔پریت (آتمائیں(رہتی ہیں۔یہ ہارر فلموں کی شوٹنگ کیلئے مشہور جگہ ہے لیکن کچھ فلمی کلاکار بھوتوں کے ڈر سے اس میل میں شوٹنگ کرنے نہیں آتے ہیں۔

    ممبئی۔158سال پرانی ممبئی مکیش میل کے بارے میں کہا جاتا ہیکہ یہاں بھوت۔پریت (آتمائیں(رہتی ہیں۔یہ ہارر فلموں کی شوٹنگ کیلئے مشہور جگہ ہے لیکن کچھ فلمی کلاکار بھوتوں کے ڈر سے اس میل میں شوٹنگ کرنے نہیں آتے ہیں۔

  •  مکیش میل کی تعمیر سال 1852 میں ہوئی تھی۔دس ایکڑ کی زمین پر بنے اس میل میں کبھی کپڑے بنا کرتے تھے۔سال 1970 میں مکیش میل شاٹ سرکٹ کی وجہ سے پہلی مرتبہ آگ میں جھلس گیا تھا لیکن دو سال بعد  پھر سے اسی طرح چلنے لگا۔تقریباً ایک دہائی بعد دوبارہ یہ میل آگ کی زد میں آیا تو وہ اتنی خطرناک تھی کہ مکیش میل کا تقریبا ہر کونا  جل کر راکھ ہو گیا۔مکیش میل اب کھنڈر نظر آتا ہے۔

    مکیش میل کی تعمیر سال 1852 میں ہوئی تھی۔دس ایکڑ کی زمین پر بنے اس میل میں کبھی کپڑے بنا کرتے تھے۔سال 1970 میں مکیش میل شاٹ سرکٹ کی وجہ سے پہلی مرتبہ آگ میں جھلس گیا تھا لیکن دو سال بعد پھر سے اسی طرح چلنے لگا۔تقریباً ایک دہائی بعد دوبارہ یہ میل آگ کی زد میں آیا تو وہ اتنی خطرناک تھی کہ مکیش میل کا تقریبا ہر کونا جل کر راکھ ہو گیا۔مکیش میل اب کھنڈر نظر آتا ہے۔

  •  سال 1984 سے مکیش میل کو فلموں کی شوٹنگ کیلئے دیا جانے لگا۔میل کھنڈر بن چکا تھا اس لئے ہارر فلموں کی شوٹنگ ہونے لگی۔مکیش میل جنوبی ممبئی کولابا میں این اے ساونت پر واقع ہے۔چرچ گیٹ ریلوے اسٹیشن سے ٹیکسی سے 15منٹ میں یہاں پہنچا جا سکتا ہے۔یہ ممبئی کے شوروغل سے دور سمندر کے کنارے پر واقع ہے۔میل میں ہر وقت سناٹا پسرا رہتا ہے۔میل کا کیمپس مکمل طور پر کھنڈر نظر آتا ہے۔

    سال 1984 سے مکیش میل کو فلموں کی شوٹنگ کیلئے دیا جانے لگا۔میل کھنڈر بن چکا تھا اس لئے ہارر فلموں کی شوٹنگ ہونے لگی۔مکیش میل جنوبی ممبئی کولابا میں این اے ساونت پر واقع ہے۔چرچ گیٹ ریلوے اسٹیشن سے ٹیکسی سے 15منٹ میں یہاں پہنچا جا سکتا ہے۔یہ ممبئی کے شوروغل سے دور سمندر کے کنارے پر واقع ہے۔میل میں ہر وقت سناٹا پسرا رہتا ہے۔میل کا کیمپس مکمل طور پر کھنڈر نظر آتا ہے۔

  •  مکیش میل میں رات میں شوٹنگ کرنے والوں میں ایک نوجوان ڈائریکٹررینسل ڈسلوا بتاتے ہیں کہ  "میل میں چمنی کے پاس پیپل کا ایک پیڑ ہے۔کہا جاتا ہیکہ وہاں بھوت۔پریت رہتے ہیں۔'ایک کھلاڑی ایک حسینہ'فلم کی شوٹنگ کے وقت فردین خان نے کہا کہ یونٹ کا کوئی بھی شخص اگر اکیلے چمنی کے پاس جائیگا تو وہ اسے دس ہزار روپئے نقد دیں گے لیکن کوئی وہاں جانے کی ہمت نہیں کر سکا۔

    مکیش میل میں رات میں شوٹنگ کرنے والوں میں ایک نوجوان ڈائریکٹررینسل ڈسلوا بتاتے ہیں کہ "میل میں چمنی کے پاس پیپل کا ایک پیڑ ہے۔کہا جاتا ہیکہ وہاں بھوت۔پریت رہتے ہیں۔'ایک کھلاڑی ایک حسینہ'فلم کی شوٹنگ کے وقت فردین خان نے کہا کہ یونٹ کا کوئی بھی شخص اگر اکیلے چمنی کے پاس جائیگا تو وہ اسے دس ہزار روپئے نقد دیں گے لیکن کوئی وہاں جانے کی ہمت نہیں کر سکا۔

  • مکیش میل کے مالک وکاس اگروال اب اس جگہ پر ریسیڈینسیل کم کمرشیل کامپلیکس بنانے جا رہے ہیں۔اس کے علاوہ وکاس اگروال مکیش میل کو توڑ کر ایک فائو اسٹار ہوٹل بنانے کے بارے میں بھی سوچ رہے ہیں۔

    مکیش میل کے مالک وکاس اگروال اب اس جگہ پر ریسیڈینسیل کم کمرشیل کامپلیکس بنانے جا رہے ہیں۔اس کے علاوہ وکاس اگروال مکیش میل کو توڑ کر ایک فائو اسٹار ہوٹل بنانے کے بارے میں بھی سوچ رہے ہیں۔

  •  مکیش میل کی تعمیر سال 1852 میں ہوئی تھی۔دس ایکڑ کی زمین پر بنے اس میل میں کبھی کپڑے بنا کرتے تھے۔سال 1970 میں مکیش میل شاٹ سرکٹ کی وجہ سے پہلی مرتبہ آگ میں جھلس گیا تھا لیکن دو سال بعد  پھر سے اسی طرح چلنے لگا۔تقریباً ایک دہائی بعد دوبارہ یہ میل آگ کی زد میں آیا تو وہ اتنی خطرناک تھی کہ مکیش میل کا تقریبا ہر کونا  جل کر راکھ ہو گیا۔مکیش میل اب کھنڈر نظر آتا ہے۔
  •  سال 1984 سے مکیش میل کو فلموں کی شوٹنگ کیلئے دیا جانے لگا۔میل کھنڈر بن چکا تھا اس لئے ہارر فلموں کی شوٹنگ ہونے لگی۔مکیش میل جنوبی ممبئی کولابا میں این اے ساونت پر واقع ہے۔چرچ گیٹ ریلوے اسٹیشن سے ٹیکسی سے 15منٹ میں یہاں پہنچا جا سکتا ہے۔یہ ممبئی کے شوروغل سے دور سمندر کے کنارے پر واقع ہے۔میل میں ہر وقت سناٹا پسرا رہتا ہے۔میل کا کیمپس مکمل طور پر کھنڈر نظر آتا ہے۔
  •  مکیش میل میں رات میں شوٹنگ کرنے والوں میں ایک نوجوان ڈائریکٹررینسل ڈسلوا بتاتے ہیں کہ  "میل میں چمنی کے پاس پیپل کا ایک پیڑ ہے۔کہا جاتا ہیکہ وہاں بھوت۔پریت رہتے ہیں۔'ایک کھلاڑی ایک حسینہ'فلم کی شوٹنگ کے وقت فردین خان نے کہا کہ یونٹ کا کوئی بھی شخص اگر اکیلے چمنی کے پاس جائیگا تو وہ اسے دس ہزار روپئے نقد دیں گے لیکن کوئی وہاں جانے کی ہمت نہیں کر سکا۔
  • مکیش میل کے مالک وکاس اگروال اب اس جگہ پر ریسیڈینسیل کم کمرشیل کامپلیکس بنانے جا رہے ہیں۔اس کے علاوہ وکاس اگروال مکیش میل کو توڑ کر ایک فائو اسٹار ہوٹل بنانے کے بارے میں بھی سوچ رہے ہیں۔

تازہ ترین تصاویر