کرناٹک : یہاں مسلمانوں نے قائم کی نئی مثال، حکومت کے تعاون کے بغیر ہی اٹھایا وقف املاک کے تحفظ کا بیڑہ

Jan 19, 2017 06:39 PM IST
1 of 9
  • وقف جائیدادوں کی ترقی کے لئےعام طورپر وقف ادارے حکومت یا وقف بورڈ کےمالی تعاون کا انتظار کرتے رہتے ہیں ، لیکن کرناٹک کے ایک شہر میں مسلمانوں نےاپنی مدد آپ کرتے ہوئے وقف جائیدادوں کے تحفظ اورترقی کا بیڑا اٹھایا ہے۔

    وقف جائیدادوں کی ترقی کے لئےعام طورپر وقف ادارے حکومت یا وقف بورڈ کےمالی تعاون کا انتظار کرتے رہتے ہیں ، لیکن کرناٹک کے ایک شہر میں مسلمانوں نےاپنی مدد آپ کرتے ہوئے وقف جائیدادوں کے تحفظ اورترقی کا بیڑا اٹھایا ہے۔

  • بنگلوروکے قریب واقع کولارگولڈ فیلڈ سونے کی کان کے لیےمشہورہے۔ اس شہرمیں مسلمانوں کی قابل لحاظ آبادی موجودہے۔

    بنگلوروکے قریب واقع کولارگولڈ فیلڈ سونے کی کان کے لیےمشہورہے۔ اس شہرمیں مسلمانوں کی قابل لحاظ آبادی موجودہے۔

  • یہاں مساجد، درگاہ، عیدگاہ اوراسکول سمیت وقف کی 30 سے زائد بڑی جائیدادیں  ہیں۔

    یہاں مساجد، درگاہ، عیدگاہ اوراسکول سمیت وقف کی 30 سے زائد بڑی جائیدادیں ہیں۔

  • شہرمیں موجودعید گاہ کی حصاربندی کےبعد یہاں کےلوگ راحت محسوس کررہے ہیں ،کیونکہ حصاربندی سےقبل یہ عیدگاہ غیرقانونی سرگرمیوں کا مرکزبن چکا تھا۔

    شہرمیں موجودعید گاہ کی حصاربندی کےبعد یہاں کےلوگ راحت محسوس کررہے ہیں ،کیونکہ حصاربندی سےقبل یہ عیدگاہ غیرقانونی سرگرمیوں کا مرکزبن چکا تھا۔

  •  اسی طرح شہرکا قدیم اردواسکول بھی ناجائزقبضوں کا شکارہوا تھا ، لیکن مقامی لوگوں میں جب شعور بیدار ہوا ، توصاحب خیرافراد کے مالی تعاون سے یہاں وقف جائیدادوں کی حفاظت اوراُن کی ترقی کا کام شروع ہوا۔

    اسی طرح شہرکا قدیم اردواسکول بھی ناجائزقبضوں کا شکارہوا تھا ، لیکن مقامی لوگوں میں جب شعور بیدار ہوا ، توصاحب خیرافراد کے مالی تعاون سے یہاں وقف جائیدادوں کی حفاظت اوراُن کی ترقی کا کام شروع ہوا۔

  •  جن علاقوں میں مساجد نہ تھیں ، وہاں مسجدوں کی تعمیر عمل میں آئی۔ وقف کی تمام عمارتوں کو پختہ بنانےکا کام بھی شروع ہوچکاہے۔

    جن علاقوں میں مساجد نہ تھیں ، وہاں مسجدوں کی تعمیر عمل میں آئی۔ وقف کی تمام عمارتوں کو پختہ بنانےکا کام بھی شروع ہوچکاہے۔

  • کے جی ایف کےمسلمانوں کا کہناہے کہ حکومت اوروقف بورڈ کے تعاون کےبغیراب تک کئی ترقیاتی کام انجام دئے جاچکے ہیں۔ لیکن اب وقت آگیا ہے کہ حکومت اوروقف بورڈ بھی اپنی ذمہ داریوں کونبھائے۔ تاکہ شہرمیں وقف املاک پرمزید ترقیاتی کام انجام دئےجاسکیں۔

    کے جی ایف کےمسلمانوں کا کہناہے کہ حکومت اوروقف بورڈ کے تعاون کےبغیراب تک کئی ترقیاتی کام انجام دئے جاچکے ہیں۔ لیکن اب وقت آگیا ہے کہ حکومت اوروقف بورڈ بھی اپنی ذمہ داریوں کونبھائے۔ تاکہ شہرمیں وقف املاک پرمزید ترقیاتی کام انجام دئےجاسکیں۔

  • سماجی کارکن محمد انورکے مطابق کے جی ایف کے مسلمانوں نےوقف کے تئیں اپنی بیداری کاثبوت دیا ہے۔ چند سالوں کی کوشش کے بعد وقف کی آمدنی میں تقریبا25 فیصد کا اضافہ ہوگیا ہے۔

    سماجی کارکن محمد انورکے مطابق کے جی ایف کے مسلمانوں نےوقف کے تئیں اپنی بیداری کاثبوت دیا ہے۔ چند سالوں کی کوشش کے بعد وقف کی آمدنی میں تقریبا25 فیصد کا اضافہ ہوگیا ہے۔

  •  اتنا ہی نہیں وقف کی کئی جائیدادوں کو ناجائز قبضوں سےبچا یا گیا ہے۔

    اتنا ہی نہیں وقف کی کئی جائیدادوں کو ناجائز قبضوں سےبچا یا گیا ہے۔

  • بنگلوروکے قریب واقع کولارگولڈ فیلڈ سونے کی کان کے لیےمشہورہے۔ اس شہرمیں مسلمانوں کی قابل لحاظ آبادی موجودہے۔
  • یہاں مساجد، درگاہ، عیدگاہ اوراسکول سمیت وقف کی 30 سے زائد بڑی جائیدادیں  ہیں۔
  • شہرمیں موجودعید گاہ کی حصاربندی کےبعد یہاں کےلوگ راحت محسوس کررہے ہیں ،کیونکہ حصاربندی سےقبل یہ عیدگاہ غیرقانونی سرگرمیوں کا مرکزبن چکا تھا۔
  •  اسی طرح شہرکا قدیم اردواسکول بھی ناجائزقبضوں کا شکارہوا تھا ، لیکن مقامی لوگوں میں جب شعور بیدار ہوا ، توصاحب خیرافراد کے مالی تعاون سے یہاں وقف جائیدادوں کی حفاظت اوراُن کی ترقی کا کام شروع ہوا۔
  •  جن علاقوں میں مساجد نہ تھیں ، وہاں مسجدوں کی تعمیر عمل میں آئی۔ وقف کی تمام عمارتوں کو پختہ بنانےکا کام بھی شروع ہوچکاہے۔
  • کے جی ایف کےمسلمانوں کا کہناہے کہ حکومت اوروقف بورڈ کے تعاون کےبغیراب تک کئی ترقیاتی کام انجام دئے جاچکے ہیں۔ لیکن اب وقت آگیا ہے کہ حکومت اوروقف بورڈ بھی اپنی ذمہ داریوں کونبھائے۔ تاکہ شہرمیں وقف املاک پرمزید ترقیاتی کام انجام دئےجاسکیں۔
  • سماجی کارکن محمد انورکے مطابق کے جی ایف کے مسلمانوں نےوقف کے تئیں اپنی بیداری کاثبوت دیا ہے۔ چند سالوں کی کوشش کے بعد وقف کی آمدنی میں تقریبا25 فیصد کا اضافہ ہوگیا ہے۔
  •  اتنا ہی نہیں وقف کی کئی جائیدادوں کو ناجائز قبضوں سےبچا یا گیا ہے۔

تازہ ترین تصاویر