جب بی جے پی رکن اسمبلی کو جوتوں سے پیٹنے لگے پارٹی کے رکن پارلیمنٹ، جانیں کیا ہے معاملہ؟

سماجوادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو نے بی جے پی رکن پارلیمنٹ اور رکن اسمبلی میں جوتم پیزار پر طنز کیا ہے

Mar 07, 2019 11:02 AM IST | Updated on: Mar 07, 2019 11:06 AM IST
جب بی جے پی رکن اسمبلی کو جوتوں سے پیٹنے لگے پارٹی کے رکن پارلیمنٹ، جانیں کیا ہے معاملہ؟

رکن پارلیمنٹ شرد ترپاٹھی نے کریڈٹ لینے کے چکر میں اپنی ہی پارٹی کے رکن اسمبلی کو جوتا نکال کر مارا

اترپردیش کے سنت کبیر نگر ضلع میں مانیٹرنگ ویجلینس کمیٹی کی میٹنگ میں یوگی حکومت کے انچارج وزیر آشوتوش ٹنڈن کے سامنے مہنداول کے رکن اسمبلی اور مقامی رکن پارلیمنٹ شرد ترپاٹھی آپس میں بھڑ گئے۔ رکن پارلیمنٹ شرد ترپاٹھی نے مہنداول کے رکن اسمبلی راکیش سنگھ بگھیل کو میٹنگ میں جوتوں سے جم کر پیٹا۔ جس وقت یہ واقعہ ہوا، موقع پر انچارج وزیر بھی موجود تھے۔ یہ معاملہ کوتوالی علاقہ کے کلکٹریٹ دفتر کا ہے۔

رکن پارلیمنٹ شرد ترپاٹھی نے کریڈٹ لینے کے چکر میں اپنی ہی پارٹی کے رکن اسمبلی کو جوتا نکال کر مارا۔ رکن پارلیمنٹ نے رکن اسمبلی کی جم کر پٹائی کی۔ رکن اسمبلی کے حامیوں نے کلکٹر دفتر کو گھیر لیا ہے اور حامیوں کا کہنا ہے کہ وہ بدلہ لے کر رہیں گے۔ حامیوں نے شرد ترپاٹھی کو کلکٹر کے کمرے میں بند کر دیا ہے۔ اعلیٰ پولیس افسران جائے حادثہ پر پہنچ گئے ہیں۔ دونوں فریقوں کے درمیان بھاری کشیدگی ہے۔

Loading...

وہیں، سماجوادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو نے بی جے پی رکن پارلیمنٹ اور رکن اسمبلی میں جوتم پیزار پر طنز کیا ہے۔ انہوں نے ٹویٹ میں لکھا کہ ’’ آج اترپردیش میں دنیا کی سب سے منظم سیاسی پارٹی کا دعوی کرنے والی بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ اور رکن اسمبلی جی کے درمیان جوتوں کا تبادلہ ہوا۔ یہ آنے والے انتخابات میں اپنی شکست سے خوفزدہ بی جے پی کی مایوسی ہے۔ سچ تو یہ ہے کہ لوک سبھا الیکشن لڑنے کے لئے بی جے پی کو امیدوار ہی نہیں مل رہے ہیں‘‘۔

اترپردیش بی جے پی کے صدر مہیندر ناتھ پانڈے نے کہا ہے کہ ’’ ہم نے اس واقعہ کا نوٹس لیا ہے اور دونوں کو لکھنئو طلب کیا گیا ہے۔ سخت تادیبی کارروائی کی جائے گی‘‘۔

Loading...