ہوم » نیوز » امراوتی

این آرسی معاملہ: مولانا ارشدمدنی کی ہدایت پرجمعیۃعلماء آسام کے وفد نے پرتیک ہزیلا کومیمورنڈم سونپا

صدرجمعیۃعلما آسام مولانا مشتاق عنفرنےجمعیۃعلماء آسام کی ایک ٹیم کے ساتھ این آرسی اسٹیٹ کوآرڈینیٹر پرتیک ہزیلا سے ملاقات کرکے میمورنڈم سونپا ہے۔

  • Share this:
این آرسی معاملہ: مولانا ارشدمدنی کی ہدایت پرجمعیۃعلماء آسام کے وفد نے پرتیک ہزیلا کومیمورنڈم سونپا
صدرجمعیۃعلما آسام مولانا مشتاق عنفرنےجمعیۃعلماء آسام کی ایک ٹیم کے ساتھ این آرسی اسٹیٹ کوآرڈینیٹر پرتیک ہزیلا سے ملاقات کرکے میمورنڈم سونپا ہے۔

نئی دہلی: این آرسی سے چالیس لاکھ افراد کونکال کرباہرکئےجانے پرجہاں دہلی میں سیاست گرم ہے، وہی آسام کے لوگوں میں خوف وہراس کا ماحول قائم ہے۔ اسی دوران صدرجمعیۃعلماء ہند مولانا سید ارشدمدنی کی ہدایت پرصدرجمعیۃعلما آسام مولانا مشتاق عنفرنےجمعیۃعلماء آسام کی ایک ٹیم کے ساتھ این آرسی اسٹیٹ کوآرڈینیٹر پرتیک ہزیلا سے ملاقات کی ہے۔


ملاقات کے دوران ان کی توجہ 40 لوگوں کی پریشانی کی طرف مبذول کرائی۔ وہیں انہیں ایک میمورنڈم سونپا، جس میں کہا گیا ہے کہ 30 جولائی کو جاری شدہ این آرسی میں جن لوگوں کو شامل نہیں کیاگیا ہے، انہیں فردا فردا بذریعہ خط یہ بتایا جائےکہ ان کا نام کس وجہ سےشامل نہیں ہوا۔ دوسرے یہ کہ آبجکشن آف کلیم کےعمل کےدوران لوگ جودستاویزات جمع کرائےانہیں اس کی رسیددی جائے۔


جمعیۃعلما آسام  نے یہ بھی مطالبہ کیا ہے کہ جب سماعت تصدیق کا عمل شروع ہو تومقررہ تاریخ سے کم ازکم 10 روز قبل تمام متاثرین کو اس کی اطلاع دی جائے اور اس کے بعد ہی سماعت کا آغاز ہو کیونکہ این آرسی کی تیاری کے دوران اسی خامی کی وجہ سے بہت سے لوگ مقررہ تاریخ پر اپنی شہریت کی تصدیق کے لئے حکام کے پاس نہیں پہنچ سکے۔


یہ مطالبہ بھی کیا گیا کہ آن لائن نوٹس نہ کی جائے کیونکہ ایک بڑی آبادی غیر تعلیم یافتہ اور انٹر نیٹ سے دور ہے اس بات پر بھی زوردیا گیا کہ ہر سماعت کی ویڈیوگرافی کرائی جائے تاکہ کسی بھی طرح کی خامی اور جانبداری کا امکان نہ رہ جائے اور اگر ضرورت پڑے تو تصدیق کے لئے اس ویڈیوکو ثبوت کے طور پر پیش کیا جاسکے۔
First published: Aug 06, 2018 08:52 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading