کام نہیں آئی عمران خان کی چاپلوسی ، سعودی عرب اور یو اے ای کے لیڈروں نے کشمیر پر اختیار کی خاموشی

جموں و کشمیر سے آرٹیکل 370 ہٹائے جانے کے بعد سے پاکستان بوکھلایا ہوا ہے ۔ تمام تر کوششوں کے باوجود کوئی بھی ملک اس معاملہ پر پاکستان کا ساتھ دینے کیلئے تیار نہیں ہے ۔

Sep 05, 2019 02:02 PM IST | Updated on: Sep 05, 2019 02:02 PM IST
کام نہیں آئی عمران خان کی چاپلوسی ، سعودی عرب اور یو اے ای کے لیڈروں نے کشمیر پر اختیار کی خاموشی

کشمیر کے معاملہ پر سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے لیڈروں نے اختیار کی خاموشی

جموں و کشمیر سے آرٹیکل 370 ہٹائے جانے کے بعد سے پاکستان بوکھلایا ہوا ہے ۔ تمام تر کوششوں کے باوجود کوئی بھی ملک اس معاملہ پر پاکستان کا ساتھ دینے کیلئے تیار نہیں ہے ۔ پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے وزرائے خارجہ کے ساتھ کشمیر کے معاملہ پر بدھ کو تبادلہ خیال کیا ، لیکن ان وزرائے خارجہ نے ایک مرتبہ بھی کشمیر پر کوئی بیان جاری نہیں کیا ۔

سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل بن احمد الجبیر اور متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ شیخ عبد اللہ بن زیاد بن سلطان النہیان اسلام آباد پہنچے ہیں ۔ پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ان کا استقبال کیا ۔

Loading...

خان نے کہا کہ سعودی عرب اور یو اے ای پوری دنیا کو کشمیر پر لئے گئے ہندوستان کے حالیہ فیصلہ کو پلٹنے کیلئے نئی دہلی سے درخواست کرنے میں اپنا رول ادا کریں ۔ عمران خان کے آفس سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ دونوں ممالک موجودہ چیلنجز کا حل نکالنے ، کشیدگی کو کم کرنے اور امن اور سیکورٹی کے ماحول کو بڑھانے میں مدد کرنے میں تعاون کریں گے ۔ دونوں وزرا ئے خارجہ نے پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے وزارت خارجہ میں ملاقات کی اور تفصیلی بات چیت کی ، جنہوں نے انہیں کشمیر کی تازہ صورتحال کے بارے میں بتایا ۔

دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ پاکستان کے فوجی سربراہ قمر جاوید باجوہ سے بھی ملاقات کرسکتے ہیں ۔ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے وزرائے خارجہ کا یہ دورہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کشمیر کے معاملہ پر جاری کشیدگی کے درمیان ہورہا ہے ۔

Loading...