چھتیس گڑھ اسمبلی انتخابات: پہلے مرحلے کی 18سیٹوں پر اب تک 40 فیصد ووٹنگ

دوپہر ایک بجے تک اوسطا تقریباً 40فیصد سے زیادہ ووٹنگ ہوچکی ہے

Nov 12, 2018 08:48 AM IST | Updated on: Nov 12, 2018 02:50 PM IST
چھتیس گڑھ اسمبلی انتخابات: پہلے مرحلے کی 18سیٹوں پر اب تک 40 فیصد ووٹنگ

چھتیس گڑھ میں سکیورٹی کے پختہ انتظامات کے درمیان پہلے مرحلےکی نکسلی متاثر 18اسمبلی سیٹوں پر ووٹنگ جاری ہے۔ دوپہر ایک بجے تک اوسطا تقریباً 40فیصد سے زیادہ ووٹنگ ہوچکی ہے۔ ریاستی الیکشن افسر کے دفتر سے موصول اطلاع کے مطابق بیجاپور میں 25فیصد،نارائن پور میں 26،موہلا مان پور 52 ،کونٹا33دنتے واڑا میں 40،کھیراگڑھ میں 45اور کھجی میں 53فیصد ووٹنگ ہوچکی ہے۔نکسلیوں کے بائیکاٹ کی اپیل کے باوجود کئی علاقوں میں ووٹروں نے ووٹنگ کے تئیں بے حد جوش کا مظاہرہ کیا۔

ریاست کے چیف الیکشن افسر سبرت ساہو نے بتایا کہ پہلے مرحلے کی 18سیٹوں میں سے 10 بہت زیادہ حساس سیٹوں میں موہلامان پور،انتاگڑھ،بھانوپرتاپ پور،کانکیر ،کیش کال،کونڈا گاؤں،نارائن پور،دنتے واڑا ،بیجاپور اور کونٹا میں سکیورٹی وجوہات سے ووٹنگ صبح سات بجے سے شروع ہوگئی تھی اور تین بجے ووٹنگ کا عمل ختم ہوجائے گا۔

انہوں نے بتایا کہ اس مرحلے کی آٹھ سیٹوں کھیراگڑھ ،ڈوگرگڑھ ،ڈوگرگاؤں ،راج آنند گاؤں ،کھجی،بستر ،جگدل پور اور چترکوٹ میں ووٹنگ صبح آٹھ بجے سے شروع ہوئی اور شام پانچ بجے تک چلے گی۔کانکیر میں کل نکسلیوں کے سکیورٹی دستوں کو نشانہ بنانے اور بیجاپور ضلع میں ہوئی مڈبھیڑ اور کچھ علاقوں میں ڈرون کیمروں میں نکسلیوں کی قید ہوئی تصویروں کے پیش نظر جدید ہتھیاروں سے لیس سکیورٹی اہلکاروں کے دستےچپے چپے پر تعیانت کئے گئے ہیں۔

Loading...

پہلے مرحلے کی 18 سیٹوں کے لئے 192 امیدوار میدان میں ہیں۔ قابل غور ہے کہ پہلے مرحلہ میں کل 31 لاکھ 80 ہزار 14 ووٹر شامل ہیں۔ چھتیس گڑھ اسملی انتخابات کے پہلے مرحلہ میں کل ووٹرز میں سے 16 لاکھ 22 ہزار 492 خواتین، 15 لاکھ 57 ہزار 435 مرد اور 87 دیگر جنس کے ووٹر شامل ہیں۔ اس میں بستر سمبھاگ میں 1190 اور راج ناندگاوں میں 221 ووٹنگ سینٹر ہیں۔

نیوز ایجنسی یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ

Loading...