گیارہویں جماعت کی طالبہ سے لیا وہاٹس ایپ نمبر اور پھر فحش میسیج بھیجنے لگا پرنسپل ، گرفتار

چھتیس گڑھ میں ضلع کوریا کے جھگراکھانڈ پولیس نے ایک اسکولی طالبہ کے موبائل پر فحش میسج بھیجنے والے سرکاری اسکول کے ایک پرنسپل کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا ہے۔

Feb 10, 2019 05:47 PM IST | Updated on: Feb 10, 2019 05:49 PM IST
گیارہویں جماعت کی طالبہ سے لیا وہاٹس ایپ نمبر اور پھر فحش میسیج بھیجنے لگا پرنسپل ، گرفتار

علامتی تصویر

چھتیس گڑھ میں ضلع کوریا کے جھگراکھانڈ پولیس نے ایک اسکولی طالبہ کے موبائل پر فحش میسج بھیجنے والے سرکاری اسکول کے ایک پرنسپل کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا ہے۔پولیس سپرنٹنڈنٹ وویک شکلا نے آج بتایا کہ ملزم پرنسپل کے خلاف سرکاری اسکول میں پڑھنے والی طالبہ نے دو دن پہلے فحش میسج بھیجنے کی شکایت درج کرائی تھی۔ اس معاملے کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے پولیس نے پرنسپل گھنشیام سنگھ چندیل کو فوری طورپر حراست میں لیکر جانچ شروع کردی تھی۔

مسٹر شکلا نے بتایا کہ ملزم پرنسپل نے اپنے ہی اسکول میں پڑھنے والی گیارہویں کلاس کی طالبہ سے اس کا وہاٹس ایپ نمبر مانگا اور اس کے بعد پرنسپل نے رومانس کے سبق کے ساتھ فحش میسج بھیجنا شروع کردیا ۔ طالبہ نے جب اس کا جواب نہیں دیا ، تو پرنسپل گھنشیام سنگھ نے اس کے نمبر پر کال کئے۔ اس سے پریشان ہوکر طالبہ نے ساری بات اپنے گھر والوں کو بتایا دی۔

اس کے بعدطالبہ کے رشتہ دار جھگراکھانڈ تھانہ پہنچے اور اسکول کے پرنسپل کے خلاف شکایت درج کرائی۔ پولیس نے متاثرہ طالبہ کی شکایت درج کرکے معاملے کی جانچ کی اور شکایت درست ملنے پر پرنسپل کو گرفتار کرکے ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

Loading...

یہ بھی پڑھیں : عاشق کے ساتھ بستر پر بیٹھی تھی حاملہ ماں ، چار سال کے بیٹے نے کیا ایسا کام کہ جان کر اڑ جائیں گے ہوش

 

Loading...