ہندو مذہب کے جتنے بھی دہشت گرد پکڑے گئے، سبھی آرایس ایس کے کارکنان: دگوجے سنگھ

مدھیہ پردیش کے سابق وزیراعلیٰ دگوجے سنگھ نے ایک بار پھر آرایس ایس پر نشانہ سادھا ہے۔ د گوجے سنگھ نے کہا کہ جتنے بھی ہندو مذہب کے دہشت گرد پکڑے گئے ہیں وہ سب آرایس ایس کے کارکن رہے ہیں۔

Jun 18, 2018 08:26 PM IST | Updated on: Jun 18, 2018 08:28 PM IST
ہندو مذہب کے جتنے بھی دہشت گرد پکڑے گئے، سبھی آرایس ایس کے کارکنان: دگوجے سنگھ

مدھیہ پردیش کے سابق وزیراعلیٰ دگوجے سنگھ نے ایک بار پھر آرایس ایس پر نشانہ سادھا ہے۔ د گوجے سنگھ نے کہا کہ جتنے بھی ہندو مذہب کے دہشت گرد پکڑے گئے ہیں وہ سب آرایس ایس کے کارکن رہے ہیں۔

مدھیہ پردیش میں ایکتا یاترا پر نکلے دگوجے سنگھ نے جھابوا میں کہا کہ مہاتما گاندھی کا قتل کرنے والے ناتھورام گوڈسے بھی آرایس ایس کا حصہ تھے۔ انہوں نے کہا یہ نظریہ نفرت پھیلاتی ہے۔ نفرت تشدد کی طرف لے جاتی ہے اور تشدد دہشت گردی کی طرف لے جاتی ہے۔

Loading...

اس سے قبل بھی دگوجے سنگھ آرایس ایس پر تنقید کرچکے ہیں۔ گزشتہ دنوں ساگر میں انہوں نے کہا کہ میں نے ہندو دہشت گردی نہیں، بلکہ سنگھی دہشت گرد کی بات کہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے کئی معاملے اٹھائے جس میں سزا بھی ہوئی ہے۔ ہندو لفظ کا ذکر ویدوں اور پرانوں میں بھی نہیں ہے۔

دگوجے سنگھ نے یہ بھی کہا تھا کہ لوگ مجھ پر الزام لگاتے ہیں کہ میں مسلم پرست ہوں اور ہندو مخالف ہوں۔ میں پوچھنا چاہتا ہوں کہ ایک بی جے پی لیڈر ایسا بتادیں، جس نےنرمدا، اونکاریشور اور گووردھن پریکرما کی ہو یا اکادشی کا برت رکھا ہو۔ انہوں نے کہا کہ میں نے جتنے مذہبی سفر کئے اور ہندو مذہب پر عمل کیا، اتنا بی جے پی کے ایک بھی لیڈر نے نہیں کی ہے۔

Loading...