مدھیہ پردیش : کنہیا کمار اور جگنیش میوانی پر پھینکی گئی سیاہی ، ہندو سینا کا کارکن گرفتار

مدھیہ پردیش اسمبلی انتخابات سے پہلے جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) طلبہ یونین کے سابق صدر کنہیا کمار اور گجرات کے آزاد ممبر اسمبلی جگنیش میواني پر آج یہاں سیاہی پھینکی گئی۔

Nov 19, 2018 07:38 PM IST | Updated on: Nov 19, 2018 07:38 PM IST
مدھیہ پردیش : کنہیا کمار اور جگنیش میوانی پر پھینکی گئی سیاہی ، ہندو سینا کا کارکن گرفتار

کنہیا کمار ۔ فائل فوٹو ۔

مدھیہ پردیش اسمبلی انتخابات سے پہلے جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) طلبہ یونین کے سابق صدر کنہیا کمار اور گجرات کے آزاد ممبر اسمبلی جگنیش میواني پر آج یہاں سیاہی پھینکی گئی۔ آئین بچاؤ منچ کی جانب سے چیمبر آف کامرس میں آج طلبہ لیڈر کنہیا کمار اور جگنیش میواني کا پروگرام تھا۔ پروگرام کے مقام پر پہنچنے سے پہلے ہی ہندو سینا کے لوگوں نے پنڈال پر پہنچ کر نعرے بازی شروع کر دی۔ ہنگامے کی اطلاع ملنے کے بعد موقع پر پہنچی پولیس نے 20 سے زائد کارکنوں کو گاڑی میں بٹھا کر اپنے ساتھ لے گئی۔

اس کے بعد جب کنہیا کمار اور جگنیش میواني کار سے اتر رہے تھے ، اسی وقت نزدیک ہی میں موجود ہندو سینا کے کارکن منوج پال نے انہیں نشانہ بناتے ہوئے سیاہی پھینک دی۔ حملہ آور نے کنہیا کے پیٹ میں مبینہ طور پر مکے بھی مارے ۔ موقع پر موجود پولیس ٹیم نے حملہ آور کو فوری طورپر حراست میں لے لیا۔ حراست میں لئے گئے نوجوان سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔

دریں اثنا ایڈیشنل ایس پی (مغرب) ستیندر سنگھ تومر نے بتایا کہ کنہیا کمار اور جگنیش میواني پر سیاہی پھینکنے کے الزام میں ایک نوجوان کو حراست میں لیا گیا ہے۔ ابھی تک متعلقہ فریق نے رپورٹ درج نہیں کرائی ہے۔ اگر متعلقہ فریق رپورٹ درج کراتا ہے تو نوجوان کے خلاف کارروائی کی جائے گی، ورنہ اس کے خلاف کارروائی پولیس کرے گی۔

Loading...

Loading...