دنیا جس زبان کو سمجھے، اسی زبان میں سمجھانی ہوگی اپنی بات: نریندر مودی

ننورا (اجین)۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے آج ملک کی صدیوں پرانی وراثت کو دنیا بھر میں بہتر طریقے سے پہنچانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ دنیا جو زبان سمجھتی ہے، ہمیں اسی میں اپنی بات رکھنی ہوگی۔

May 14, 2016 03:33 PM IST | Updated on: May 14, 2016 03:34 PM IST
دنیا جس زبان کو سمجھے، اسی زبان میں سمجھانی ہوگی اپنی بات: نریندر مودی

ننورا (اجین)۔  وزیر اعظم نریندر مودی نے آج ملک کی صدیوں پرانی وراثت کو دنیا بھر میں بہتر طریقے سے پہنچانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ دنیا جو زبان سمجھتی ہے، ہمیں اسی میں اپنی بات رکھنی ہوگی۔ مسٹر مودی نے آج مدھیہ پردیش کے اجین میں چل رہے سهنستھ کے دوران منعقد بین الاقوامی مهاكمبھ کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنے ملک کی مناسب طریقے سے برانڈنگ نہیں کر پاتے ہیں۔ ہم نے اتنے بڑے اور منظم کمبھ کی شناخت صرف ناگا سادھو کے طور پربنا دی ہے، کیا ہم دنیا کو یہ نہیں بتا سکتے کہ ہمارے ملک کے لوگوں میں تنظیمی صلاحیت کتنی بڑی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہر بار کمبھ کے میلے میں كشپرا اور گنگا ندی کے کنارے ایک ملک کی آبادی جتنے لوگ جمع ہوتے ہیں، لیکن کیا ملک و بیرون ملک سے آنے والے ان لوگوں کو کوئی دعوت دیتا ہے۔ تقریبا 40 منٹ کے اپنے خطاب میں مسٹر مودی نے کہا کہ وہ دنیا کے بڑی-بڑی یونیورسٹیوں میں جا کر وہاں گزارش کرتے ہیں کہ وہاں کے ریسرچ اسکالرس کمبھ کے میلے کو’کیس-اسٹڈی‘ کے طور پر لیں، ہندوستان کا انتخاب بھی ملک و دنیا میں مینجمنٹ کے موضوع کے لوگوں کی تحقیق کے لئے کسی عجوبے سے کم نہیں ہے۔

اپنی اسی بات کو آگے بڑھاتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ دنیا یہی زبان سمجھتی ہے اور اس لئے ہمیں اسے اسی زبان میں اپنی بات سمجھاني ہوگی، تبھی صدیوں پرانی ہماری وراثت وہاں پہنچ سکتی ہے۔

Loading...

Loading...