ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ٹیچر نے اپنی کار کو ایمبولینس میں کیا تبدیل، اب تک 45 افراد کو مفت میں پہنچایا اسپتال

اس ٹیچر نے اب تک تقریبا 45 کورونا مریضوں کو اسپتال میں داخل کرایا ہے۔کورونا وبا کے اس دور میں مریض کو بروقت ایمبولینس کی دستیاب ایک بڑا چیلنج بن گیا ہے۔

  • Share this:
ٹیچر نے اپنی کار کو ایمبولینس میں کیا تبدیل، اب تک 45 افراد کو مفت میں پہنچایا اسپتال
اس ٹیچر نے اب تک تقریبا 45 کورونا مریضوں کو اسپتال میں داخل کرایا ہے۔کورونا وبا کے اس دور میں مریض کو بروقت ایمبولینس کی دستیاب ایک بڑا چیلنج بن گیا ہے۔

کوروناکے اس خوفناک دور میں جہاں کورونا متاثرین کو بہت سی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے وہیں تھانے شہر سے تعلق رکھنے والے ایک ٹیچر اپنی کار کو ایمبولینس کی شکل دی ہے۔ وہ ضرورت مند اور کورونا مریضوں کو اپنی خدمات فراہم کررہے ہیں۔ اس ٹیچر نے اب تک تقریبا 45 کورونا مریضوں کو اسپتال میں داخل کرایا ہے۔کورونا وبا کے اس دور میں مریض کو بروقت ایمبولینس کی دستیاب ایک بڑا چیلنج بن گیا ہے۔ گھنٹوں انتظار کے بعد بھی ایمبولینس دستیاب نہیں ہے۔ مریض کی مجبوری کے پیش نظر ایمبولینس ڈرائیور ایک سے دو کلو کلومیٹر کے فاصلے تک بھی من مانی قیمت وصول کررہے ہیں۔ کورونا مریضوں کو آٹو رکشا والے یا دیگرمریض کو اسپتال لے جانےسے ہچکچاتے ہیں۔ یہ حال دیکھ کر تھانےکے لوکما نیہ نگر کے رہائشی ونے سنگھ نے اپنی ذاتی کار کو ایمبولینس میں تبدیل کردیا ہے جن مریضوں کو آکسیجن کی ضرورت نہیں ہوتی ہے وہ انہیں اپنی کار کے ذریعہ مفت ہسپتال لے جا رہے ہیں۔

شیو شانتی پرستھان کے صدر اور ٹیچر ونئے سنگھ نے اپنی گاڑی کے اندر پلاسٹک پارٹیشن لگایا ہے اور چہرے کے ماسک اور سینیٹائزر کا انتظام کیا ہے۔ سنگھ 'بیماروں کی خدمت ، خدا کی خدمت' کے مقصد کے ساتھ اپنے کام میں مصروف ہیں۔ اس کام میں انہیں دھننجے سنگھ جیسے نوجوان کا سا تھ ملا ہے۔ جیسے ہی فون پر خبر ملتی ہے ، پی پی ای کٹ پہن کر ونئے سنگھ مریض کے پاس پہنچ جاتے ہیں اور بغیر کسی فیس کے اسپتال پہنچا دیتے ہیں۔


25 اپریل سے سنگھ نے اس کام کو اپنا مشن بنایا ہے اور اب تک 45 افراد کو اسپتال پہنچا چکے ہیں۔ صرف یہی نہیں اسپتال میں مریضوں کو بیڈ سے لے کر ان کی دوا اور مریضوں کو بستر فراہم کرنے اور کھانے کا انتظام کرتے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ بیمارکی خدمت خدا کی خدمت ہے۔  انہوں نے اپنی کار پر اپنا فون نمبر لکھ دیا ہے۔ گون آنے کے بعد پی پی ای کٹ پہن کر ونئے سنگھ مریض کے پاس پہنچ جاتے ہیں اور ان کو اسپتال پہنچا دیتے ہیں۔ونئے سنگھ کورونا انفکشن کے آغاز سے ہی مریضوں اورمزدوروں کی خدمت کر رہے ہیں۔


فوڈ پیکٹ تقسیم کرنے کے علاوہ تمام لوگوں کو راشن کٹ تقسیم کرنے پولیس ، نرسیں اور دیگر ہیلتھ ورکرس ماسک ، سینیٹائزر ، کھانا ، پانی کا انتظام بھی کر رہے ہیں۔ وہ چھت پوجا اور گنیش وسرجن کے بعد تالاب کے آس پاس کی گندگی اور کچرے کو صاف کرنے کا کام بھی کر تے ہیں۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 09, 2021 08:19 AM IST