ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

بنگلورو میں کووڈ 19مریضوں کے لیے بستروں کی فراہمی کا گھوٹالہ ، بستروں کے بدلے لی جارہی ہے کثیر رقم

مقامی حکام نے کہا کہ دو ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے اور دیگر سے مریضوں سے پیسے کے عوض بستروں کے الاٹمنٹ میں دھوکہ دہی / بے ضابطگیی کے الزام میں پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔ اس معاملے کی تحقیقات کے لئے بنگلورو کی سٹی کرائم برانچ یا سی سی بی مزید کارروئی کی جائے گی۔

  • Share this:
بنگلورو میں کووڈ 19مریضوں کے لیے بستروں کی فراہمی کا گھوٹالہ ، بستروں کے بدلے لی جارہی ہے کثیر رقم
بنگلورو میں کووڈ 19مریضوں کے لیے بستروں کی فراہمی کا گھوٹالہ ، بستروں کے بدلے لی جارہی ہے کثیر رقم

بنگلورو : بنگلور میں کووڈ۔19 کے مریضوں کو بستروں کے الاٹمنٹ میں مبینہ دھاندلی کے الزام میں پولیس نے دو افراد کو گرفتار کیا ہے اور مقدمہ درج کیا ہے۔ حکام نے گزشتہ روز کو بتایا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی رکن پارلیمنٹ تیجسوی سوریہ (Tejasvi Surya) نے شہری عہدیداروں کے مابین نجی ایجنٹوں کے ایک مشتبہ گٹھ جوڑ کی نشاندہی کی ہے۔ سوریہ نے الزام لگایا کہ انفارمیشن اینڈ ٹکنالوجی مرکز میں بی جے پی کے زیر انتظام بلدیاتی ادارہ بروہت بنگلورو مہانگرا پالیکے (Bruhat Bengaluru Mahanagara Palike ) میں کچھ عہدیدار قرنطینہ میں وقت گذارنے کے نام پر اسپتال کے بیڈ بکس کروانے کی باتیں کررہے تھے۔ اس کے بعد وہ لوگ ضرورت سے زیادہ قیمت پر مریضوں کو فروخت کررہے ہیں۔


تیس سالہ رکن پارلیمنٹ کے الزام نے بی جے پی حکومت میں ہلچل مچا دی، جس نے الزامات کی تحقیقات کا حکم جاری کردیا ہے۔ یہ معلومات ایسے وقت میں سامنے آئیں ہیں، جب کرناٹک میں بھی بیشتر ہندوستان کی طرح کووڈ۔19 کی دوسری مہلک لہر جاری ہے۔ جس سے ملک میں انفیکشن کیسوں میں بڑے پیمانے پر اضافے ہوا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ہسپتالوں کے بیڈوں اور صحت کی دیکھ بھال کے شعبے پر زبردست زور پڑا ہے۔ وہیں آکسیجن کی مانگ بھی بے حد بڑ گئی ہے۔


منگل کو کرناٹک میں 44631 نئے کیسز اور 292 اموات ہوئیں، جس سے ریاست میں انفیکشن کی تعداد اور اموات بالترتیب 16,90,934 اور 16,538 ہوگئیں۔ صرف بنگلورو میں ہی تازہ ترین واقعات (20870 انفیکشن) اور اموات (132 اموات) ہیں۔


مقامی حکام نے کہا کہ دو ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے اور دیگر سے مریضوں سے پیسے کے عوض بستروں کی الاٹمنٹ میں دھوکہ دہی / بے ضابطگیی کے الزام میں پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔ اس معاملے کی تحقیقات کے لئے بنگلور کی سٹی کرائم برانچ یا سی سی بی مزید کارروئی کی جائے گی۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 05, 2021 12:20 PM IST