ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

دس جون سے بھوپال میں مکمل طور پر Unlock، حکومت نے ٹیکہ لگاؤ دکان کھلواؤ کا دیا نعرہ

راجدھانی بھوپال میں بھی تاجروں کے مسلسل احتجاج کے بعد دس جون سے بھوپال کے بازار کو مکمل طور پر کھولنے کا فیصلہ تو کیاگیا لیکن ساتھ ہی حکومت نے ٹیکہ لگاؤ دکان کھلواؤ کا نعرہ دیا ۔

  • Share this:

مدھیہ پردیش میں کورونا ریکوری ریٹ کی شرح 99 فیصد سے اوپر پہنچنے کے بعد سبھی شہروں میں بازار کو کھولنے کو لیکر حکومت پر دباؤ بڑھنے لگا ہے ۔ راجدھانی بھوپال میں بھی تاجروں کے مسلسل احتجاج کے بعد اسمارٹ سٹی آفس میں تاجروں اور وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن کی میٹنگ کے بعد دس جون سے بھوپال کے بازار کو مکمل طور پر کھولنے کا فیصلہ تو کیاگیا لیکن اسی کے ساتھ حکومت کی جانب سے دکان کھولنے کو لیکر دکانداروں اور دکانوں میں کام کرنے والے ملازمین کی ٹیکہ کاری کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔ اس کے لئے حکومت کے ذریعہ ٹیکہ لگواؤ دکان کھلواؤ کا نعرہ دیا گیا ہے ۔

مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن کی صدارت میں اسمارٹ سٹی میں منعقدہ میٹنگ میں افسران کے ساتھ تاجروں نے بھی شرکت کی اور بازار کوکھولنے کو لیکر حکومت کی گائیڈ لائن پر عمل کرنے کی رضا مندی دی گئی ۔ بھوپال بیوپاری سنگھ کے سکریٹری امیش کمار کہتے ہیں کہ حکومت کی جانب سے کورونا قہر کم ہونے کے بعد دکانوں کو کھولنے کی جزوی احازت تو دی گئی ہے لیکن سبھی دکاندار اس سے خوش نہیں ہے ۔ اس فیصلہ سے صرافہ ،کپڑا،برتن اور دوسرے دکانداروں کو دکان کھولنے کی اجازت نہیں دی گئی تھی ۔ اب حکومت نے کورونا ٹیکہ لگوانے کے ساتھ دکان کھولنے کی اجازت دیدی ہے۔ ہم حکومت کے فیصلہ کا استقبال کرتے ہیں ۔


مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن وشواس سارنگ کہتے ہیں کہ حکومت کی نظر عوام کی صحت کے ساتھ تجارت پر بھی ہے ۔ اب کورونا پر بہت حد تک کنٹرول کر لیاگیا ہے ۔دس جون سے بھوپال کوپوری طرح سے ان لاک کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے لیکن اس کے لئے دکانداروں اور اس میں کام کرنے والوں کو صد فیصد ٹیکہ کاری کرنے کو کہا گیا ہے ۔ ٹیکہ لگواؤ دکان کھلواؤ کا نعرہ دیا گیا ہے۔ اسی کے ساتھ اب سنیچر کے لاک ڈاؤں کو ختم کرنے کا فیصلہ کیاگیا ہے۔ اب بھوپال میں صرف اتوار کے دن کا لاک ڈاؤن رہے گا۔اسی کے ساتھ ہمیں یہ بھی نہیں بھولنا ہے کہ ابھی کورونا ختم نہیں ہوا ہے بلکہ کم ہوا اور ہمیں پہلے سے زیادہ احتیاط کرنا ہے تاکہ زندگی کو خوشگوار بنایا جا سکے۔

Published by: Sana Naeem
First published: Jun 08, 2021 12:46 PM IST