உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی ہر صورت حال سے نمٹنے کیلئے تیار، Omicron Variant سے گھبرانے کی ضرورت نہیں: اروند کیجریوال

    وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج ڈیجیٹل پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ کورانا اومیکرون کا نیا ورژن ملک میں داخل ہو گیا ہے۔ کئی جگہوں سے خبریں آرہی ہیں کہ وہاں اومیکرون کے مریض پائے گئے۔ دہلی کے اندر بھی مریض پائے گئے۔ لیکن میں آپ سب کو بتانا چاہتا ہوں کہ گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔

    وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج ڈیجیٹل پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ کورانا اومیکرون کا نیا ورژن ملک میں داخل ہو گیا ہے۔ کئی جگہوں سے خبریں آرہی ہیں کہ وہاں اومیکرون کے مریض پائے گئے۔ دہلی کے اندر بھی مریض پائے گئے۔ لیکن میں آپ سب کو بتانا چاہتا ہوں کہ گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔

    وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج ڈیجیٹل پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ کورانا اومیکرون کا نیا ورژن ملک میں داخل ہو گیا ہے۔ کئی جگہوں سے خبریں آرہی ہیں کہ وہاں اومیکرون کے مریض پائے گئے۔ دہلی کے اندر بھی مریض پائے گئے۔ لیکن میں آپ سب کو بتانا چاہتا ہوں کہ گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔

    • Share this:
    کیجریوال حکومت کورونا کے نئے قسم سے نمٹنے کے لیے پوری طرح سے تیار ہے۔  وزیر اعلی اروند کیجریوال نے دہلی کے لوگوں کو یقین دلایا کہ اومیکرون ویرینٹ سے گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ میں اس پر مسلسل نظر رکھے ہوئے ہوں۔  میں نے گزشتہ ہفتے ایک جائزہ اجلاس منعقد کرکے تیاریوں کا جائزہ لیا۔ ہم نے مناسب مقدار میں آکسیجن، بستر، ادویات اور آلات کا انتظام کیا ہے۔ پریشان نہ ہوں، سماجی دوری پر عمل کریں اور گھر سے باہر نکلیں تو ماسک ضرور پہنیں۔
    وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج ڈیجیٹل پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ کورانا اومیکرون کا نیا ورژن ملک میں داخل ہو گیا ہے۔ کئی جگہوں سے خبریں آرہی ہیں کہ وہاں اومیکرون کے مریض پائے گئے۔ دہلی کے اندر بھی مریض پائے گئے۔ لیکن میں آپ سب کو بتانا چاہتا ہوں کہ گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ میں اس کی مسلسل نگرانی کر رہا ہوں۔  میں نے پچھلے ہفتے بھی ہر چیز پر ایک جائزہ میٹنگ کی تھی۔ آکسیجن ہے، بستر ہے، ادویات ہے، سامان ہے، جو بھی ضرورت ہو گی، مناسب مقدار میں فراہم کریں گے۔ پریشان نہ ہوں، بس اپنا کام کرتے رہیں۔ سماجی دوری پر عمل کریں، ماسک پہننا نہ بھولیں۔ ماسک سب سے اہم ہے۔ گھر سے باہر نکلیں تو ماسک ضرور پہنیں۔

    وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے گزشتہ ہفتے کورونا کی ممکنہ لہر سے نمٹنے کے لیے متعلقہ محکموں کے ساتھ ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کر کے تیاریوں کا جائزہ لیا۔ دہلی حکومت کی تیاری 64-65 ہزار بستروں کی تیاری ہے۔ اس وقت دہلی حکومت پہلے ہی 30 ہزار آکسیجن بیڈ تیار کر چکی ہے جس میں 10 ہزار آئی سی یو بیڈ ہیں۔ اس کے علاوہ دہلی حکومت فروری تک مزید 6800 آئی سی یو بیڈ تیار کرے گی۔ ساتھ ہی ایسے انتظامات کیے گئے ہیں کہ اگر ضرورت پڑی تو دہلی کے ہر وارڈ میں دو ہفتے کے نوٹس پر 100-100 آکسیجن بیڈ تیار کیے جائیں گے۔  اس کے علاوہ 32 اقسام کی ادویات کو دو ماہ کے لیے بفر اسٹاک کے آرڈرز دیے گئے ہیں، تاکہ ادویات کی قلت نہ ہو۔ دہلی حکومت نے 442 ایم ٹی آکسیجن ذخیرہ کرنے کی اضافی صلاحیت پیدا کی ہے اور دہلی میں 121 ایم ٹی آکسیجن کی پیداوار بھی شروع ہو گئی ہے۔ آکسیجن کے انتظام کے لیے تمام ٹینکوں میں ٹیلی میٹری ڈیوائسز لگانے کی ہدایات دی گئی ہیں، تاکہ دستیاب آکسیجن کی معلومات حقیقی وقت پر مل سکیں۔ اس کے علاوہ کیجریوال حکومت نے دو بوتلنگ پلانٹ لگائے ہیں۔  اس کی مدد سے اب دہلی میں روزانہ 2900 سلنڈر بھرے جا سکتے ہیں۔
    ماہر ڈاکٹروں، نرسوں اور میڈیکل کے طلباء کو خصوصی تربیت دی گئی ہے
    کورونا کی ممکنہ لہر کے پیش نظر افرادی قوت کی کمی سے بچنے کے لیے کیجریوال حکومت نے ماہر ڈاکٹروں کے ساتھ طبی طلباء، نرسوں اور پیرا میڈیکل اسٹاف کو کووڈ مینجمنٹ کی خصوصی تربیت دی ہے۔ کیجریوال حکومت نے کل 15370 ڈاکٹروں، نرسوں، طبی طلباء اور پیرا میڈیکس کو تربیت دی ہے، جس میں 4673 ڈاکٹر، 1707 میڈیکل طلباء، 6265 نرسیں اور 2726 پیرا میڈیکس شامل ہیں۔  انہیں آکسیجن تھراپی، کوویڈ مینجمنٹ، پیڈیاٹرک وارڈ کووڈ مینجمنٹ کی تربیت دی گئی ہے۔

    ضرورت پڑنے پر پانچ ہزار ہیلتھ اسسٹنٹ بھی مدد کریں گے
    کورونا کی ممکنہ لہر کو مدنظر رکھتے ہوئے کیجریوال حکومت نے پانچ ہزار ہیلتھ اسسٹنٹ تیار کیے ہیں۔ ضرورت پڑنے پر حکومت ان ہیلتھ اسسٹنٹس کی مدد بھی لے سکے گی۔ صحت کے معاونین کو نرسنگ، پیرا میڈیکس، ہوم کیئر، بلڈ پریشر کی پیمائش، ویکسی نیشن اور دیگر بنیادی تربیت دی گئی ہے۔ صحت کے معاونین ضرورت پڑنے پر ڈاکٹروں اور نرسوں کے معاون کے طور پر کام کریں گے اور خود کوئی فیصلہ نہیں کریں گے۔ ان کی مدد سے ڈاکٹر زیادہ مستعدی سے کام کر سکیں گے اور مریض بھی ان کی اچھی طرح دیکھ بھال کر سکیں گے۔

    آکسیجن ٹینک میں ٹیلی میٹری ڈیوائس لگائی جا رہی ہے
    وزیر اعلی اروند کیجریوال کی ہدایت پر تمام چھوٹے اور بڑے آکسیجن ٹینکوں میں ٹیلی میٹری کا سامان نصب کیا جا رہا ہے۔ تاکہ آکسیجن کی دستیابی کا حقیقی ڈیٹا دستیاب ہو۔ اس ڈیوائس کی تنصیب سے ڈیش بورڈ پر آکسیجن کا ریئل ٹائم ڈیٹا دستیاب ہوگا۔ اس سے حکام کو آکسیجن کی سپلائی چین کو مضبوط بنانے کے ساتھ ساتھ آکسیجن کی حالت کا پتہ لگانے میں مدد ملے گی۔

    قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: