ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بھیڑ اور ہجوم والے مقامات پر نہیں پھیلے گا کورونا وائرس جامعہ ملیہ اسلامیہ نے ایجاد کی تکنیک

جامعہ ملیہ اسلامیہ (Jamia Millia Islamia) کے مکینیکل انجینئرنگ کے شعبہ کے محققین نے "دور دراز مقامات میں کورونا وائرس وبا (Covid-19 pandemic) کی روک تھام کے لئے شمسی توانائی سے چلنے والے سیلف جنریٹنگ ڈس انفیکشن سسٹم" تیار کیا ہے۔

  • Share this:
بھیڑ اور ہجوم والے مقامات پر نہیں پھیلے گا کورونا وائرس جامعہ ملیہ اسلامیہ نے ایجاد کی تکنیک
بھیڑ اور ہجوم والے مقامات پر نہیں پھیلے گا کورونا وائرس

جامعہ ملیہ اسلامیہ (Jamia Millia Islamia) کے مکینیکل انجینئرنگ کے شعبہ کے محققین نے "دور دراز مقامات میں کورونا وائرس وبا (Covid-19 pandemic) کی روک تھام کے لئے شمسی توانائی سے چلنے والے سیلف جنریٹنگ ڈس انفیکشن سسٹم" تیار کیا ہے۔ اس ایجاد کی تفصیلات پیٹنٹ آفس ، حکومت ہند کے آفیشل جرنل میں شائع ہوئی ہے۔ مکینیکل انجینئرنگ کے ایچ او ڈی پروفیسر محمد عمران خان اور ڈاکٹر اسامہ خان ، اسسٹنٹ پروفیسر (کنٹریکٹ) ، شعبہ مکینیکل انجینئرنگ ، جامعہ ملیہ اسلامیہ نے مشترکہ طور پر شمسی توانائی سے چلنے والے اس ڈس انفیکشن سسٹم کو ایجاد کیا ہے ۔

اس ایجاد کا بنیادی مقصد شمسی توانائی سے چلنے والے ڈس انفیکشن سسٹم کی بہتر فراہمی ہے تاکہ بڑے اجتماعات ، عوامی اور دور دراز مقامات پر کووڈ -19 یا اسی طرح کی بیماریوں سے بچا و ممکن ہو سکے۔ اس میں شمسی آلات (پی وی ماڈیولز ، چارج ریگولیٹر ، انورٹر اور بیٹری سسٹم) اور ایک دوسرے کے ساتھ مربوط الیکٹرولائٹک ڈس انفیکٹینٹ جنریٹر شامل ہے ، جس کے ذریعے ایک جراثیم کُش دھند پیدا ہوتی ہے جو انسان پر ہونے والے کسی بھی نقصان دہ انفیکشن یا بیکٹیریا کو ختم کردیتی ہے۔



یہ ایجاد بڑے پیمانے پر جمع ہونے والی تمام بیرونی ایپلی کیشنز کے لئے انتہائی موزوں ہے ، پورے سیٹ اپ کے لئے صرف ایک چھوٹا سا علاقہ درکار ہوتا ہے ،اس میں آسان (کوئی وائرنگ سسٹم نہیں) اس کی سب سے اچھی بات یہ ہے کہ یہ ماحول دوست ، قابل تجدید توانائی پر کام کرتا ہے ،بیکٹیریا اور وائرس کے خاتمے کے لئے بہترین چیز ہے۔


ڈس انفیکشن سسٹم بنیادی طور پر دور دراز یا عوامی مقامات جیسے بینک ، مالز ، اسپتالوں ، شادی ہالوں ، پارٹی ہالوں ، ہوائی اڈوں ، یونیورسٹیوں ، اسکولوں ، مندروں ، کالجوں اور وغیرہ کے لئے بنایا گیا ہے جہاں کیمیائیوں کی نقل و حمل اور بجلی کی دستیابی ایک مسئلہ ہے۔
Published by: sana Naeem
First published: Dec 04, 2020 07:58 PM IST