உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Covid-19: کورونا کے بڑھتے معاملات نے پھر بڑھائی تشویش، کیا آنے والی ہے نئی لہر؟ ہیلتھ ایکسپرٹس نے کہی یہ بات

    Covid-19: کورونا کے بڑھتے معاملات نے پھر بڑھائی تشویش، کیا آنے والی ہے نئی لہر؟ ہیلتھ ایکسپرٹ نے کہی یہ بات

    Covid-19: کورونا کے بڑھتے معاملات نے پھر بڑھائی تشویش، کیا آنے والی ہے نئی لہر؟ ہیلتھ ایکسپرٹ نے کہی یہ بات

    Covid-19 in India: وزارت صحت کی جانب سے دی گئی جانکاری کے مطابق بدھ کو ملک بھر میں 19 ہزار سے زائد معاملات سامنے آئے، جب کہ اس وائرس سے 53 لوگوں کی موت ہوئی ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | New Delhi | New Delhi
    • Share this:
      نئی دہلی : کچھ مہینوں کی راحت کے بعد ایک بار پھر ملک میں کورونا کے بڑھتے ہوئے معاملات نے تشویش میں اضافہ کر دیا ہے۔ وزارت صحت کی جانب سے دی گئی جانکاری کے مطابق بدھ کو ملک بھر میں 19 ہزار سے زائد معاملات سامنے آئے، جب کہ اس وائرس سے 53 لوگوں کی موت ہوئی ۔ حالانکہ کورونا وائرس کے بڑھتے کیسز پر ماہرین کا کہنا ہے کہ پریشان ہونے کی کوئی بات نہیں ہے، کیونکہ زیادہ تر کیسز میں کورونا کی ہلکی علامات نظر آرہی ہیں ۔

      دہلی کے اپولو اسپتال کے سینئر پلمونولاجسٹ ڈاکٹر نکھل مودی نے جمعرات کو کہا کہ کورونا کے کیسز میں اضافہ ضرور ہو رہا ہے، لیکن یہ راحت کی بات ہے کہ زیادہ تر لوگوں میں اس وائرس کی ہلکی علامات ہی ہیں۔ ڈاکٹر مودی نے کہا کہ کورونا وائرس ایک مرتبہ پھر رفتار پکڑ رہا ہے۔ کل دہلی میں 2000 سے زیادہ کیسز رپورٹ ہوئے تھے، لیکن ان میں سے زیادہ تر مریضوں میں بہت ہلکی علامات موجود ہیں ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: مدھیہ پردیش میں بھی نیشنل ہیرالڈ کی جائیداد کی ہوگی جانچ، سرکار نے دیا حکم


      کامریڈیٹیز والے لوگوں کے لئے رسک کے بارے میں ڈاکٹر مودی نے کہا کہ ذیابیطس اور دیگر مسائل کے ساتھ 80 سے 90 سال کی عمر کے مریض ہمیں رپورٹ کر رہے ہیں، لیکن ان سب میں ہلکی علامات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کا مطلب یہ نہیں کہ کورونا وائرس سے ہمیں بے فکر ہوجانا چاہئے ، بحران ابھی بھی برقرار ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: مونکی پاکس کی وجہ سے سفر کرنےکولےکرہورہی ہےپریشانی؟ یہ ہے وضاحت!


      وہیں دوسری جانب دہلی کے سر گنگا رام اسپتال کے سینئر کنسلٹنٹ ڈاکٹر دھیرین گپتا نے کورونا وائرس کے بارے میں کہا کہ جو لوگ اپنے ٹیسٹ وقت پر نہیں کرواتے ہیں اور کووِڈ کے رہنما اصولوں پر عمل نہیں کرتے ہیں ، انہیں اس وائرس سے پریشانی ہو سکتی ہے۔ ڈاکٹر گپتا نے کہا کہ لوگ پہلے کورونا سے بچنے کیلئے صحیح رہنما اصولوں پر عمل نہیں کرتے ہیں اور جب وہ مصیبت میں پڑتے ہیں تب جاکر ٹیسٹ کرواتے ہیں ۔

      ڈاکٹر نے کہا کہ کورونا کے کیسز میں گراوٹ آئی تھی، لیکن ایک مرتبہ پھر وائرس نے رفتار پکڑ لی ہے اور اس کے پیچھے سب سے بڑی وجہ لوگوں کی لاپروائی اور ماسک نہیں پہننا ہے۔ ایکسپرٹ نے کہا کہ کورونا کی وجہ سے کچھ اموات بھی ہوئی ہیں، لیکن زیادہ تر کی موت کووڈ انفیکشن کی بجائے کامریڈیڈیٹی کی وجہ سے ہوئی ہے۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: