ہوم » نیوز » عالمی منظر

پاکستان میں دوگنا تیزی سے بڑھ رہا ہے کورونا وائرس، انفیکشن سے متاثر افراد کی تعداد 250 کے پار

پاکستان کا سب سے زیادہ متاثرصوبہ میں کووڈ ۔19 کے زیادہ تر معاملات ایران سے واپس آنے والے زائرین سے جڑےہیں جبکہ آدھا درجن سے بھی کم واقعات مقامی انفیکشن کے ہیں۔ اسلام آباد میں 4جبکہ سندھ میں 9 اور خیبر۔ختون میں 3نئے معاملے درج کئے گئے ہیں۔

  • Share this:
پاکستان میں دوگنا تیزی سے بڑھ رہا ہے کورونا وائرس، انفیکشن سے متاثر افراد کی تعداد 250 کے پار
پاکستان کا سب سے زیادہ متاثرصوبہ میں کووڈ ۔19 کے زیادہ تر معاملات ایران سے واپس آنے والے زائرین سے جڑےہیں جبکہ آدھا درجن سے بھی کم واقعات مقامی انفیکشن کے ہیں۔ اسلام آباد میں 4جبکہ سندھ میں 9 اور خیبر۔ختون میں 3نئے معاملے درج کئے گئے ہیں۔

اسلام آباد: پاکستان (Pakistan) سے سندھ اسلام آباد (Islamabad) اور خیبر۔پختون صوبوں میں کورونا وائرس (Coronavirus) سے انفیکشن کے نئے کیس سامنے آنے کے بعد متاثرہ افراد کی تعداد 250 ہوگئی ہے۔ ان میں سے زیادہ تر معاملات ایران (Iran) سے آنے والے زائرین سے متعلق ہیں۔ پاکستان میں کورونا وائرس ہندستان کی نسبت دوگناتیزی سے بڑھ رہا ہے۔ گزشتہ 4 دنوں میں مختلف ریاستوں سے 200 معاملے سامنے آئے۔


پاکستان کا سب سے زیادہ متاثرصوبہ میں کووڈ ۔19 کے زیادہ تر معاملات ایران سے واپس آنے والے زائرین سے جڑےہیں جبکہ آدھا درجن سے بھی کم واقعات مقامی انفیکشن کے ہیں۔ اسلام آباد میں 4جبکہ سندھ میں 9 اور خیبر۔ختون میں 3نئے معاملے درج کئے گئے ہیں۔

'دا ایکسپریس ٹربیون' کی خبر کے مطابق 181 معاملوں کے ساتھ پاکستان کا سندھ سب سے زیادہ متاثرہ صوبہ ہے۔ وہیں پنجاب میں 26، خیبر۔پختون میں 19، اسلام آباد میں 8، گلگت۔بلتستان میں 3 معاملے سامنے آئے ہیں۔ بلوچستان نے کل 16 معاملے بتائے ہیں۔ وہیں اس کے برعکس  وفاقی حکومت نے متاثرہ 15 افراد کی تعداد 15 بتائی ہے۔

دوسری طرف ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ حکومت کورونا وائرس کی جانچ کے لئے مناسب اقدامات نہیں کررہی ہے۔ اگر ہمیں جانچ کٹ فراہم نہی کرائی گئی تو وہ ایمرجنسی وارڈ میں خدمات بند کردیں گے۔ اسی دوران گرینڈ ہیلتھ الائنس (جی ایچ اے) کے صدر سلمان حسیب نے کہا کہ بیمار شخص کو نازک حالت ہونے پر ہی  اسپتال جائیں۔ جونیئر ڈاکٹروں کے نمائندے حسیب نے یہ بھی کہا کہ اگر انہیں کٹ (کورونا سے متعلق بچاؤ) نہیں دیا گیا تو وہ ایمرجنسی وارڈ میں خدمات بھی بند کردیں گے۔

First published: Mar 19, 2020 11:43 AM IST