ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر میں کورونا وائرس: 11 معاملات مثبت، 5124 افراد نگرانی میں

بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ 326 نمونوں کو ٹیسٹنگ کے لئے بھیج دیا گیا ہے جن میں سے 294 کو منفی پایا گیا ہے اور 25 مارچ 2020 تک 21 رپورٹ آنے باقی ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 26, 2020 08:57 AM IST
  • Share this:
جموں وکشمیر میں کورونا وائرس: 11 معاملات مثبت، 5124 افراد نگرانی میں
بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ 326 نمونوں کو ٹیسٹنگ کے لئے بھیج دیا گیا ہے جن میں سے 294 کو منفی پایا گیا ہے اور 25 مارچ 2020 تک 21 رپورٹ آنے باقی ہیں۔

سری نگر۔ حکومت نے کہا ہے کہ جموں کشمیر میں 5124 مسافروں اور مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہوئے افراد کو زیر نگرانی رکھا گیا ہے اور اب تک 11 معاملات مثبت پائے گئے ہیں۔ کورونا وائرس ( کووڈ 19 ) سے متعلق روزانہ بلیٹن کے مطابق 3061 افراد کو گھروں میں کورنٹائن میں رکھا گیا ہے جبکہ 80 افراد کو ہسپتالوں میں کورنٹائن کیا گیا ہے۔ 1477 افراد کو گھروں میں نگرانی پر رکھا گیا ہے جبکہ 506 افراد نے 18 روزہ نگرانی مدت پوری کر لی ہے۔


بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ 326 نمونوں کو ٹیسٹنگ کے لئے بھیج دیا گیا ہے جن میں سے 294 کو منفی پایا گیا ہے اور 25 مارچ 2020 تک 21 رپورٹ آنے باقی ہیں۔ ایڈوائیزری میں لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ وزیر اعظم کی ہدایات پر سختی سے عمل کریں جنہوں نے کورونا وائرس کی وبا پر قابو پانے کے لئے پورے ملک میں اگلے 21 دنوں کے لئے مکمل لاک ڈائوں کرنے کی ہدایت دی ہے۔ اس تناظر میں لوگوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ اپنے گھروں میں ہی رہیں اور حکومت کی طرف سے لاگو کئے گئے لاک ڈائوں کو سنجیدگی کے ساتھ لیں اور کہا گیا ہے کہ کچھ لوگوں کی لاپرواہی کی وجہ سے بہت سارے لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔




مختلف ممالک کے تجربات کو مدِ نظر رکھتے ہوئے سماجی دوریوں اور دیگر اقدامات کی عمل آوری پر زور دیا گیا ہے تاکہ کووڈ 19 کے پھیلائو کو روکا جا سکے ۔ ایڈوائیزری میں کہا گیا ہے کہ لوگ کسی بھی مدد کے لئے قومی ہیلپ لائن نمبر 1075 پر رابطہ قائم کر سکتے ہیں۔ اس ٹول فری نمبر پر کورونا وائرس سے متعلق کوئی بھی جانکاری حاصل کی جا سکتی ہے۔

سماجی دوریوں کے اقدامات کی عمل آوری کے حوالے سے ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ کووڈ 19 اور متاثرہ لوگوں سے بچائو کے لئے سماجی دوری برقرار رکھنا ضروری ہے ۔ دیگر اقدامات میں بھیڑ بھاڑ سے دور رہنا، بڑے بڑے اجتماعات سے اجتناب کرنا اور 6 فٹ سے 2 میٹر تک دوری برقرار رکھنا جیسے اقدامات شامل ہیں۔
تاہم ایڈوائزری میں لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ گھبرائیں نہیں اور اپنی صحت کا خیال رکھنے کے ساتھ ساتھ دیگرلوگوں کے تحفظ کو بھی یقینی بنائیں۔ عوام سے مزید کہا گیا ہے کہ وہ غیر ضروری سفر سے پرہیز کریں اور عوامی ٹرانسپورٹ کا استعمال نہ کریں۔
First published: Mar 26, 2020 08:57 AM IST