ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

یو پی میں جرمنی اور بیلجیم کی ٹیسٹنگ کٹ سے ہو رہی ہے کورونا کی جانچ

  • Share this:
یو پی میں جرمنی اور بیلجیم کی ٹیسٹنگ کٹ سے ہو رہی ہے کورونا کی جانچ

یو پی میں کورونا پازیٹیو مریضوں کی بڑھتی تعداد کو دیکھتے ہوئے  یو گی حکومت نے پوری ریاست میں ’’ ریپڈ ٹیسٹ ‘‘ کرانے کا فیصلہ کیا ہے ۔اس کے لئے جرمنی اور بیلجیم سے منگائی گئی  ’’ ریپڈ اینٹی جین ڈی ٹیکشن کٹ ‘‘ کا  استعمال کیا جا رہا ہے۔ کورونا کی جانچ میں تیزی لانے اور اس کی رپورٹ کو زیادہ پر اعتماد بنانے کے کئے جرمنی اور بیلجیم سے خصوصی ریپڈ ٹیسٹ کٹ منگائی گئی ہے۔ ریپڈ ٹیسٹ کے ذریعے صرف نصف  گھنٹے میں کورونا کے مشتبہ مریض کی رپورٹ آ جائے گی۔  فی الحال حکومت نے ریاست کے پانچ اضلاع میں یہ خصوصی کٹ فراہم کرائی ہے۔ اس میں  الہ آباد  کے لئے  پانچ ہزار ریپڈ ٹیسٹ  بھی شامل ہے۔

الہ آباد کے چیف میڈیکل  افسر ڈاکٹر جی ۔سی۔ واجپائی کا کہنا ہے کہ ریپڈ ٹیسٹ سے  نصف  گھنٹے کے اندر رپورٹ آنے سے کورونا کے مشتبہ مریضوں کی شناخت میں تیزی آ جائے گی۔ ان کا کہنا ہے کہ اس وقت کمیونٹی  سطح پر کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنا بہت ضروری  ہے۔ ڈاکٹر واجپائی کا کہنا ہے کہ جس مشتبہ  مریض کی جانچ نگیٹیو آئے گی۔ اس کی جانچ دو بارہ لیب میں بھی کرائی جائے گی۔ تاکہ جانچ کے معاملے میں شک کی کوئی گنجائش نہ رہ جائے۔


یو پی میں کورونا پازیٹیو کی بڑھتی ہوئی تعداد کے بارے میں ڈاکٹر  جی ایس واجبائی کا کہنا ہے کہ مریضوں کی تعداد میں اضافہ ضرور ہو رہا ہے  لیکن حالات پوری طرح سے قابو میں ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ کورونا پازیٹیوں میں ۷۰ فیصد مریض صحت یاب ہو کر گھر جا رہے ہیں۔ ڈاکٹر واجپائی کا کہنا ہے کہ جدید ترین ریپڈ ٹیسٹ کٹ آ جانے سے ایک وقت میں زیادہ سے زیادہ افراد کی ٹیسٹنگ میں کافی  مدد ملے گی۔


اس بارے میں محکمہ صحت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ ریاست میں ٹیسٹنگ کی تعداد اور  بڑھائی جا رہی ہے ۔صرف الہ آباد میں اب تک پندرہ ہزار سے زیادہ افراد کی ٹیسٹنگ کی جا چکی ہے ۔ پانچ ہزار نئی ٹیسٹنگ کٹ آ جانے کی وجہ سے اس کی تعداد میں کئی گنا اضافہ ہو جائے گ ۔ الہ آباد میں مختلف سر کاری محکموں میں کورونا وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے۔ محکمہ پولیس میں اب تک  ۱۳؍ افراد کورونا پازیٹیو پائے گئے ہیں۔ جن لوگوں میں کورونا پازیٹیوں پایا گیا ان میں الہ آباد میں   ایس ایس پی رہے  انیرودھ پنکج بھی شامل ہیں۔ اگرچہ ایس ایس پی  انیرودھ پنکج اب صحت یاب قرار دے  دئے گئے ہیں لیکن پولیس اہل کاروں  کو در پیش کورونا کے خطرات دن بہ دن سنگین ہوتے جا رہے ہیں۔

یو گی حکومت  کی کوشش ہے کہ ٹیسٹنگ کی تعداد بڑھا کر کورونا کے پھیلتے خطرات  پر قابو پا یا جائے  ۔محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ فی الحال یو پی میں کورونا کے کمیونٹی ٹرانسمیشن  کا کوئی  خطرہ نہیں ہے لیکن صورت حال کو قابو میں رکھنے کے لئے زیادہ چوکس رہنے کی ضرورت ہے۔
First published: Jun 25, 2020 11:12 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading