ہوم » نیوز » عالمی منظر

کورونا وائرس سے نہیں، لاک ڈاون میں اس وائرس سے کی وجہ سے ہوں گی 14 لاکھ زیادہ موتیں

ایک نئی تحقیق کے مطابق، کورونا کے پیش نظر پوری دنیا میں لگائے گئے لاک ڈاون کی وجہ سے ٹی بی سے ہونے والی موتیں بڑھ سکتی ہیں۔

  • Share this:
کورونا وائرس سے نہیں، لاک ڈاون میں اس وائرس سے کی وجہ سے ہوں گی 14 لاکھ زیادہ موتیں
ایک نئی تحقیق کے مطابق، کورونا کے پیش نظر پوری دنیا میں لگائے گئے لاک ڈاون کی وجہ سے ٹی بی سے ہونے والی موتیں بڑھ سکتی ہیں۔

کورونا وائرس  (Coronavirus)  کی وجہ سے دنیا بھر کے کئی ملکوں میں لاک ڈاون (lockdown) نافذ ہے۔ کورونا کے انفیکشن سے بچنے کے لئے لاک ڈاون تو لگا دیا گیا ہے لیکن اب لاک ڈاون کی وجہ سے دوسری بیماریوں کا خطرہ اور اس سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ سکتی ہے۔ ایک نئی تحقیق کے مطابق، کورونا کے پیش نظر پوری دنیا میں لگائے گئے لاک ڈاون کی وجہ سے ٹی بی سے ہونے والی موتیں بڑھ سکتی ہیں۔ تحقیق کے مطابق، 2025 تک ٹی بی سے چودہ لاکھ موتیں زیادہ ہو سکتی ہیں۔




ٹی بی کے انفیکشن میں وائرس کا حملہ انفیکشن کے شکار شخص کے پھیپھڑوں پر ہوتا ہے۔ اس بیماری کا علاج زیادہ تر جگہوں پر ہوتا ہے۔ لیکن اس کے باوجود ہر سال تقریبا ایک کروڑ لوگ ٹی بی کے انفیکشن کا شکار ہوتے ہیں۔ عالمی صحت تنظیم کے اعداد وشمار کے مطابق، صرف 2018 میں ٹی بی کی وجہ سے پوری دنیا میں پندرہ لاکھ لوگ مارے گئے تھے۔ اس میں تقریبا دو لاکھ بچے شامل تھے۔


ٹی بی کی بیماری میں موثر علاج موجود ہے۔ پھر بھی ہر سال لاکھوں لوگ مر رہے ہیں۔ ماہرین بتاتے ہیں کہ ٹی بی کے علاج میں بھی ٹیسٹنگ اور جلد از جلد علاج شروع کرنے کا رول اہم ہوتا ہے۔ ماہرین بتا رہے ہیں کہ کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا بھر میں لاک ڈاون لگایا گیا ہے۔ ٹی بی کی بیماری کے نئے ماڈل میں سماجی دوری کی وجہ سے ٹی بی کی بیماری مہلک ہو کر واپس لوٹ سکتی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسا اس لئے ہو گا کہ صحت عملے سماجی دوری کے ضوابط پر عملدرآمد کی وجہ سے انفیکشن سے دو چار مریضوں کا ٹیسٹ نہیں کر پائیں گے اور مریض کو وقت پر علاج نہیں مل پائے گا۔ ایسی صورت میں ٹی بی کی بیماری مہلک ثابت ہو گی اور اس سے لوگوں کی موت ہو گی۔

 

 
First published: May 06, 2020 05:09 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading