ہوم » نیوز » عالمی منظر

ٹرمپ کی اس صلاح پرdettol اور lysol بنانے والی کمپنی کا انتباہ، کہا۔ یہ نہ پئیں صحت کیلئے خطرناک، ہوسکتی ہے موت

کمپنی نے لوگوں سے کہا، " مہربانی کرکے انہیں نہ پئیں، یہ صحت کیلئے کافی خطرناک ہیں، ان سے موت بھی ہوسکتی ہے"۔ ریکٹ بینکسر (Reckitt Benckiser-RBGLY) نے کہا کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے بیان کے بعد سوشل میڈیا پر گمراہ کن خبروں کو پھیلایا جارہا ہے۔ یہ سبھی غلط ہے۔

  • Share this:
ٹرمپ کی اس صلاح پرdettol اور lysol بنانے والی کمپنی کا انتباہ، کہا۔ یہ نہ پئیں صحت کیلئے خطرناک، ہوسکتی ہے موت
کمپنی نے لوگوں سے کہا، " مہربانی کرکے انہیں نہ پئیں، یہ صحت کیلئے کافی خطرناک ہیں، ان سے موت بھی ہوسکتی ہے"۔ ریکٹ بینکسر (Reckitt Benckiser-RBGLY) نے کہا کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے بیان کے بعد سوشل میڈیا پر گمراہ کن خبروں کو پھیلایا جارہا ہے۔ یہ سبھی غلط ہے۔

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے ایک بیان کو لیکر امریکہ میں ہنگامہ مچ گیا ہے۔ در اصل ٹرمپ نے اس پر تحقیق ہونی چاہئے کہ کوروناوائرس کا علاج الٹراوائلیٹ لائٹ یا جراثیم مارنے والی اشیا کو جسم میں انجیکٹ کرنے سے ہوسکتا ہے۔ ٹرمپ نے ڈیٹول ، لائیزول یا پھر بلیچ جیسی جراثیم کو ختم کرنے والی اشیا کے ذریعے کورونا وائرس کے علاج کی بات کہی تھی۔ انسانی پھیپھڑوں میں موجود کورونا وائرس کو مارنے بات کہی تھی۔   ٹرمپ کے اٹپٹے بیان کے بعد پبلک ہیلتھ ڈپارٹمینٹ کو اس بارے میں ایک ایڈوائزری جاری کرکے لوگوں کو بتانا پڑا ہے کہ اس سے وائرس ٹھیک نہیں ہورہا ہے۔


وہیں ڈیٹول(dettol)  اور لائیزول (lysol ) بنانےوالی کمپنی ریکٹ بینکسر (Reckitt Benckiser-RBGLY) جمعے کی دیر شام ایک بیان جای کرکے لوگوں سے کہاکہ ایسی کوئی تحقیق سامنے نہیں آئی ہے جس میں یہ دعویٰ کیا گیا ہو کہ ان کے پروڈکٹ کوروناوائرس کے علاج میں مددگار ہیں۔ کمپنی نے لوگوں سے کہا، " مہربانی کرکے انہیں نہ پئیں، یہ صحت کیلئے کافی خطرناک ہیں، ان سے موت بھی ہوسکتی ہے"۔  ریکٹ بینکسر (Reckitt Benckiser-RBGLY) نے کہا کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے بیان کے بعد سوشل میڈیا پر گمراہ کن خبروں کو پھیلایا جارہا ہے۔ یہ سبھی غلط ہے۔


قابل غور ہے کہ این وائی ڈیلی نیوز (nydailynews)کے مطابق ڈونالڈ ٹرمپ کی صلاح کے بعد نیویارک مں جراثیم کو مارنے والی اشیا کے پینے کے 30  سے یادہ معاملے سامنے آئے ہیں۔ شہر کے ہیلتھ ڈپارٹمینٹ کے تحت آنے والے  (Poison Control Center) کے پاس اس طرح کے معاملات کی گزشتہ 18گھنٹوں میں 30 سے زیادہ کالس آئی ہیں۔ حالانکہ ان میں سے کسی بھی نہ ےو موت ہوئی ہ ہی کسی کو اسپتال(hospital admit) میں داخل کرنے کی ضرورت پڑی ہے۔ ان میں سے زیادہ تر معاملے گھر کی صاف۔صفائی کیلئے استعمال کئے جانے کیلئے استعمال کئے جانے والا (lysol ) کے استعمال سے جڑے ہیں۔


دراصل امریکی صڈر ڈونالڈ ٹرمپ (Donald Trump) کے جراثیم کو مارنے والی یا پھر الٹراوائلیٹ شعاؤں سے کوروناوائرس (Coronavirus) کے علاج کی صلاح کے بعد نیو یارک (New York) میں گزشتہ 18گھنٹوں میں 30  ایسے معاملے سامنے آئے ہیں جس میں لوگوں نے مبینہ طور پر بلیچ (bleach)یا پھر گھر میں صاف۔صفائی کیلئے استعمال کئے جانے والا ڈیٹول (dettol) یا لائیزول( lysol cleaner) پی لیا۔ ادھر تنقید کے بعد ٹرمپ نے کہا ہے کہ انہوں نے یہ سبھی باتیں مذاق میں کہی تھیں۔

ٹرمپ نے دی صفائی۔۔
وہیں ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ یہ سبھی سنجہدہ باتیں نہیں تھیں وہ صرف صحافیوں سے مذاق کررہے تھے۔ جمعے کو جب ٹرمپ سے ان کے تبصرے کے بارے میں پوچھا گیا تو اہوں نے کہا "میں آپ جیسے صحافیوں سے مذاق میں سوال پوچھ رہا تھا بس یہ دیکھنے کیلئے کہ کیا ہوتا ہے"۔ ٹرمپ نے کہا کہ وہ ایسے جراثیم مارنے والی اشیا کے بارے میں پوچھ رہے تھے جسے محفوظ طرقے سے لوگ اپنے ہاتھوں پر لگا سکیں۔ امریکی نیوز ایجنسی ویب سائٹ دا ہل نے ٹرپ کے حوالے سے کہا لیکن یہ ضرور وائرس کا خاتمہ کرتا ہے اور یہ ہاتھوں پر وائرس کو مار سکتا ہے اور یہ چیزوں کو بہت بہتر بنائے گا۔ یہ صحافیوں سے (Sarcastic question) کے طور پر پوچھا گیا تھا۔
First published: Apr 25, 2020 04:41 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading