ہوم » نیوز » عالمی منظر

ڈیلٹا ویریئنٹ سے بچنے کیلئے نہ دیں ویکسین کی بوسٹر ڈوز، جانئے آخر ڈبلیو ایچ او نے ایسا کیوں کہا؟

Covid-19 Booster Dose: ڈبلیو ایچ او نے کہا کہ زیادہ آمدنی والے ممالک نے مئی میں ہر 100 لوگوں میں تقریبا 50 ڈوز دئے ہیں جبکہ نمبر اس کا دوگنا ہے ۔ وہیں کم انکم والے ممالک میں سپلائی کی کمی کی وجہ سے یہ شرح 100 لوگوں میں صرف ڈیڑھ ڈوز ہی ہے ۔

  • Share this:
ڈیلٹا ویریئنٹ سے بچنے کیلئے نہ دیں ویکسین کی بوسٹر ڈوز، جانئے آخر ڈبلیو ایچ او نے ایسا کیوں کہا؟
ڈیلٹا ویریئنٹ سے بچنے کیلئے نہ دیں ویکسین کی بوسٹر ڈوز، جانئے آخر ڈبلیو ایچ او نے ایسا کیوں کہا؟ ۔ علامتی تصویر ۔

جنیوا : عالمی صحت تنظیم کے سربراہ نے کورونا ٹیکوں کی بوسٹر ڈوز دئے جانے کو ملتوی کرنے کی اپیل کی ہے ۔ ڈبلیو ایچ او نے ایسا اس لئے کہا ہے کہ ان ممالک میں بھی لوگوں کو ٹیکے کی پہلی ڈوز دی جاسکے ، جہاں کم لوگوں کو اب تک ٹیکے لگائے گئے ہیں ۔ ڈبلیو ایچ او کے ڈائریکٹر جنرل نے یہ اپیل زیادہ تر امیر ممالک سے کی جو ٹیکہ کاری کی تعداد کے اعتبار سے ترقی پذیر ممالک سے کافی آگے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ایسے ممالک کم از کم ستمبر کے آخر تک بوسٹر ڈوز دئے جانے سے گریز کریں ۔


ڈبلیو ایچ او افسران نے کہا کہ سائنس میں ابھی یہ بات ثابت نہیں ہوئی ہے کہ ٹیکے کی دو ڈوز لے چکے لوگوں کو بوسٹر ڈوز دینا کورونا وائرس انفیکشن کے پھیلاو کو روکنے میں موثر ہوگا ۔ ڈبلیو ایچ او نے بار بار امیر ممالک سے اپیل کی کہ وہ ترقی پذیر ممالک تک ٹیکوں کی رسائی میں بہتری کیلئے مزید قدم اٹھائیں ۔


انہوں نے بدھ کو کہا کہ اسی کے مطابق ڈبلیو ایچ او اب تک بوسٹر ڈوز دئے جانے پر روک کی اپیل کررہا ہے ۔ جب تک ستمبر کے آخر تک ہر ملک میں کم سے کم دس فیصد آبادی کو ٹیکہ نہ لگ جائے ۔


انہوں نے کہا کہ میں اپنے لوگوں کو ڈیلٹا ویریئنٹ سے بچانے کیلئے سبھی سرکاروں کی تشویش کو سمجھتا ہوں ، لیکن یہ قبول نہیں کرسکتے کہ کچھ ملک پہلے سے ہی ویکسین کی عالمی سپلائی کا زیادہ استعمال کرلیں ۔

ڈبلیو ایچ او نے کہا کہ زیادہ آمدنی والے ممالک نے مئی میں ہر 100 لوگوں میں تقریبا 50 ڈوز دئے ہیں جبکہ نمبر اس کا دوگنا ہے ۔ وہیں کم انکم والے ممالک میں سپلائی کی کمی کی وجہ سے یہ شرح 100 لوگوں میں صرف ڈیڑھ ڈوز ہی ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Aug 04, 2021 11:25 PM IST