ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

دھنونتری رتھ: گجرات میں کورونا کے خلاف ایک کامیاب آلہ

ابتدائی مرحلے میں 50 دھنونتری رتھ کو پہلے سے طے شدہ جگہوں پر 2 گھنٹے کے لئے رکھا گیا تھا اور ہر رتھ ایک دن میں 4 مقامات کا احاطہ کرتا ہے۔

  • Share this:
دھنونتری رتھ: گجرات میں کورونا کے خلاف ایک کامیاب آلہ
ابتدائی مرحلے میں 50 دھنونتری رتھ کو پہلے سے طے شدہ جگہوں پر 2 گھنٹے کے لئے رکھا گیا تھا اور ہر رتھ ایک دن میں 4 مقامات کا احاطہ کرتا ہے۔

نئی دہلی۔ حکومت گجرات نے کورونا وبا سے نمٹنے کے لئے اے ایم سی کے علاقے میں دھنونتری رتھ کا آغاز کیا ہے۔ ہر ایک رتھ ڈاکٹروں ، پیرا میڈیکل اسٹاف اور فارماسسٹ سے لیس ہے۔ ابتدائی مرحلے میں 50 دھنونتری رتھ کو پہلے سے طے شدہ جگہوں پر 2 گھنٹے کے لئے رکھا گیا تھا اور ہر رتھ ایک دن میں 4 مقامات کا احاطہ کرتا ہے۔ اس طرح ، ابتدائی طور پر اے ایم سی کے 14 کنٹینمنٹ وارڈز کے 200 مختلف مقامات کا احاطہ کیا گیا۔ لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے اس سروس سے فائدہ اٹھانا شروع کر دیا ہے۔ اس کامیابی کو دیکھتے ہوئے دھنونتری رتھوں کی تعداد بڑھا کر 84 رتھ کردی گئی جن میں بڑے پیمانے پر طبی خدمات فراہم کرنے کے لئے 336 مقامات کا احاطہ کیا گیا ہے۔


جب بھی کوئی مریض دھنونتری رتھ کا دورہ کرتا ہے تو تھرمل گن کے ذریعہ اس کے جسم کے درجہ حرارت ناپا جاتا ہے۔ مریضوں کی تاریخ ڈاکٹروں کے ذریعہ لی جاتی ہے اور 40 سال سے اوپر کی عمر کے کسی بھی شخص کا ذیابیطس ٹیسٹ لیا جاتا ہے تاکہ پروموبڈ کیسوں سے بچا جاسکے۔


آکسیمیٹرز کا بھی استعمال کیا جاتا ہے تاکہ کسی مریض کی شکایت پر مریض کی آکسیجن کی سطح کی جانچ کی جا سکے۔ ہر مریض کو ضرورت کے مطابق پیراسیٹامول ، سیٹیریزین ، ایزیٹرومائسن جیسی دوائیں مہیا کی جاتی ہیں۔ "شام شام نی وتی" اور ہومیوپیتھی دوائیں جیسی "آیوش" دوائیں ہر مریض کی قوت مدافعت کو بڑھانے کے لئے لازمی طور پر دی جاتی ہیں۔


17 مئی 2020 تک ، 10٪ مریض بخار میں مبتلا پائے گئے ، 32٪ مریض سردی اور کھانسی میں مبتلا پائے گئے جبکہ 0.6٪ مریضوں کو سانس کی ٹریک انفیکشن کی شکایت ہے۔ دھنونتری رتھوں کی طرف سے ادویات فرہم کئے جانے اور طبی عملہ کی مانیٹرنگ کی وجہ سے 26 مئی کی صورتحال کافی حوصلہ افزا رہی ۔ بخار کے معاملات میں دو فیصد کی کمی دیکھی گئی تو وہیں سردی و زکام کے کیسوں میں 16 فیصد تک کی کمی دیکھی گئی ۔ آج تک 71000 افراد نے دھنونتری رتھس سے فائدہ اٹھایا ہے ۔ اس کے نتیجے میں کچھ ہی دنوں میں ایس وی پی اسپتال اور سول اسپتال میں کورونا مریضوں کی او پی ڈی کم ہوگئی ہے ۔
First published: May 28, 2020 01:18 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading